اے کے یو۔ ای بی کی جانب سے ایس ایس سی اورایچ ایس ایس سی میں بہترین کارکردگی کا مظاہرہ کرنے والے طلبا کے لیے تقریب کا انعقاد – Chitral Express

صفحہ اول | تازہ ترین | اے کے یو۔ ای بی کی جانب سے ایس ایس سی اورایچ ایس ایس سی میں بہترین کارکردگی کا مظاہرہ کرنے والے طلبا کے لیے تقریب کا انعقاد

اے کے یو۔ ای بی کی جانب سے ایس ایس سی اورایچ ایس ایس سی میں بہترین کارکردگی کا مظاہرہ کرنے والے طلبا کے لیے تقریب کا انعقاد

گلگت(چترال ایکسپریس)آغا خان یونیورسٹی ایگزامینیشن بورڈ نے پاکستان بھر میں سیکنڈری اسکول سرٹیفیکیٹ )ایس ایس سی ( اور ہائیر سیکنڈری اسکول سرٹیفیکیٹ )ایچ ایس ایس سی( امتحانات میں بہترین کارکردگی کا مظاہرہ کرنے والے 146 طلبا کےاعزازمیں ہائی اچیورزایوارڈ کی تقریب منعقد کی۔ ایس ایس سی اورایچ ایس ایس سی میں بہترین مجموعی نمبرز،مضامین کے گروپس میں بہترین نمبرزاورمختلف انفرادی مضامین میں بہترین نمبرز حاصل کرنے پران طلبا میں 190 مختلف ایوارڈز تقسیم کیے گئے۔

ہائی اچیورز ایوارڈ کی تقریب  کی مہمان خصوصی اےکے یو کے ڈیپارٹمنٹ آف میڈیسن کی چیئر، ایسوسی ایٹ پروفیسر ڈاکٹر زینب صمد نے ملک میں تعلیم کے معیار میں بہتری کی کاوشوں پر اے کے یو ۔ای بی کا شکریہ ادا کیا۔انھوں نےاس موقعے پر بات کرتےہوئے کہا، “اے کے یو۔ای بی نے اس معاشرے اور ملک کی خدمت میں مصروف ہے۔ آج سے 25 سال قبل ہم نے روایتی انداز تعلیم اور روایتی امتحانی نظام کے تحت تعلیم حاصل کی ہےاورمجھے یاد ہے کہ اس وقت والدین امتحانی جانچ میں بے قاعدگیوں اورغیر شفافیت کے حوالے سے بے حد پریشان رہتے تھے۔ اے کےیو۔ای بی نے اس روایتی انداز کو تبدیل کردیا ہے۔ انھوں نے نہ صرف اس بے یقینی کا خاتمہ کیا ہے بلکہ انصاف، شفافیت اور جامعیت کو امتحانی نظام کا حصہ بنا دیا ہے ۔ اے کے یو ۔ای بی نے  معاشی ولسانی پس منظر، نسل یا صنف سے بالا تر ہو کر ہرطالب علم کو کامیابی کا ایک موقعہ فراہم کیا ہے۔”ا

اے کے یو۔ای بی نے ماہ مئی میں ایس ایس سی اور ایچ ایس ایس سی کے سالانہ امتحانات پاکستان کے 22 شہروں میں قائم 35 مراکز میں منعقد کیے۔ امتحانی مراکز میں نگرانی کے لیے جدید ترین ٹیکنالوجی استعمال کی گئی تاکہ نقل کا کوئی احتمال نہ رہے۔ اس مرحلے کے بعد تمام امتحانی پرچوں کی شفاف جانچ کے لیے ای مارکنگ کا جامع طریقہ کار استعمال کیا گیا۔ امتحانات کے نتائج کا اعلان 30 جولائی کو کیا گیا۔ ایس ایس سی میں کامیاب ہونے والے 21.5 فیصد طلبا نے A-1 گریڈ حاصل کیاجبکہ 52.3 فیصد طلبا نے A اور B گریڈ حاصل کیے۔ اسی انداز کی کامیابی کا مظاہرہ ایچ ایس ایس سی کے طلبا کی جانب سے بھی دیکھا گیا جن میں سے 19.0 فیصد طلبا نے A-1 گریڈ حاصل کیا جبکہ 58.1 فیصد طلبا نے A اور B گریڈ حاصل کیے۔

تقریب سے خطاب کرتے ہوئے اے کے یو۔ای بی کے ڈائریکٹر ڈاکٹر شہزاد جیوا نے کہا، ” ہمارے طلبا تنوع کا مظہر ہیں خواہ وہ صنف ہو، جغرافیائی تعلق ہو یا سماجی و معاشی خاندانی پس منظر ہو۔ان مختلف طلبا نے اے کے یو۔ای بی کے بہترین اور وسیع نظام کو یہاعتماد بخشا ہے کہ اے کے یو۔ای بی ایک ایسا امتحانی بورڈ ہے جو پاکستان کے تمام طلبا کے لیے قابل رسائی ہے۔”

اس خبر پر تبصرہ کریں۔ چترال ایکسپریس اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں
دوسروں کے ساتھ اشتراک کریں

یہ خبر بھی پڑھیں

تورکہو روڈ کی خستہ حالی ڈرائیور یونین کی طرف سے تین روز سے پایہ جام ہرتال

چترال(نمائندہ چترال ایکسپریس)تورکہو روڈ کی انتہائی خستہ حالی کی وجہ سے ڈرائیور برادری کا ہرتال تیسرے ...


دنیا بھر سے

error: مغذرت: چترال ایکسپریس میں شائع کسی بھی مواد کو کاپی کرنا ممنوع ہے۔