پاکستان کو 16 صوبوں میں تقسیم کرنا ھی بہت سے مسایل کا حل ھے – Chitral Express

Premier Chitrali Woolen Products

پاکستان کو 16 صوبوں میں تقسیم کرنا ھی بہت سے مسایل کا حل ھے

عنایت اللہ اسیر سماجی کارکن 03469103996………….

پاکستان کو 16 صوبوں میں تقسیم کرنا ھی بہت سے مسایل کا حل ھے ابادی جب 9 کروڑ تھی تب بھی پاکستان کے 5 صوبے تھے اور 12 کروڑ ھوا تب 4 صوبے اور اب 20 کروڑ ھے تو پھر بھی 4 صوبے کسی طرح سے قرین انصاف نہیں لہذہ پاکستان کو مذید 12 صوبے جغرافیای ذمینی حقایق اور ابادی کے بہتات کے لحاظ سے بنانا نہای ت لاذمی ھوگیا ھے تاکہ امن و امان ,صحت و تعلیم,تعمروترقی ,قانون و انصاف کی فراھمی بہتر طور پر سب کے قریب تر اور ان کے پہنچ پر فراھم ھو سکین اور ملازمتوں کے مواقع بھی 20 کروڑ کی ابادی کے مطابق فراھم ھو سکیں صوبہ وار نقشہ تقسیم بھی تین چار سال پہلے بھی پیش کیا تھا اب بھی عرض مکرر کے طور پر پھر پیش خدمت اس تجویز میں بہتری لای جاسکتی ھے 1 * صوبہ بلوچستان: صوبہ کویٹہ:اضلاع.1 کویٹہ2 .بہاول خان 3 .مستونگ . 4 زیارت 5 ھزارشھر 6 لورا لای 7 ھرنای 8 سبی 9 ڈھاڈر 10 ڈیرہ بگٹی 2 :صوبہ قلات: اضلاع: 1: قلات 2: نوشکی 3: انجیرہ 4: مسافرچاکال 5: خاران 6: یادگار چوکی 7: دالبدین 8: ھرماگای. 9 : سردار چاہ 10: قلعہ لدگشٹ 11: مشکی چاہ 12: امیر چاہ 13: سوراب14: ڈیرہ مراد جمالی 15: سوی 3 : صوبہ مکران اضلاع: 1: اواران 2: خصدار 3: نال 4: رستم شھر 5: اوتھل 6: ڈوریجی 7: لاکھڑہ 8: مالار9: جھل جھاو 10 : اور ماڑہ 11: مکولا 12: ہوشاب 13: تربت 14 : گوادر 15: پنجگور 16: پیر کنڈ 17 : مند 18: جیوانی 19 : لسبیلہ صوبہ سندھ کے انتظامی تقسیم 4 صوبے: 1:صوبہ کراچی غربی: اضلاع 1: 4 اضلاع کو 8 ضلع بنا کر کل ابادی اس صوبے کی ایک کروڑ 50 لاکھ 2 صوبہ شرقی کراچی اس کے 4 اضلاع کو بھی 8 اضلاع بناکر کل ابادی ایک کروڑ پچیس لاکھ 3: صوبہ حیدر اباد اضلاع: 1: حیدر اباد 2; ٹھٹھہ 3: بدین 4: مٹھی 5: عمر کوٹ 6: میر پور خاص 7: سانگھڑ 4: صوبہ لاڑکانہ اضلاع 1: لاڑکانہ 2: نواب شاہ 3: نوشھرہ فیروز 4: دادو. 5: خیر پور 6: شکار پور 7: جیکب اباد 8: گھوٹکی 9: مہیٹرو 10: میرساکرو 11: کشمور 12: سہیون شریف 13: مہینجو دڑو صوبہ پنجاب بہتر انتظامی تقسیم 4 1: صوبہ لاھور اضلاع 1: لاھور 2: گوجرانوالہ 3: شیخوپورہ 4: گجرات 5: جہلم 6: منڈی بہاود الدین 7: حافظ اباد 8: قصور 9: اوکاڑہ 10: ٹوبہ ٹیک سنگھ11: ساہیوال 12: بہاولنگر 13: وہاڑی 14: سیالکوٹ 2:صوبہ بہاولپور اضلاع 1: بہاولپور 2; رحیم یار خان 3: راجن پور. 4: مظفر گھڑ 5: ڈیرہ غازی خان 6: ملتان. 7: لیہ 8: بھکر 3: صوبہ فیصل اباد اضلاع 1: سرگودھا 2: جوھر اباد. 3:جھنگ 4: فیصل اباد 5: میاں والی 4: صوبہ پوٹھوہار اضلاع 1: راولپنڈی 2: گوجر خان 3: چکوال 4: اٹک 5: حسن ابدال اسلام اباد کو بلکل الگ دارلخلافہ بین الاقوامی شھر کے طور پر پر امن اور ھر لحاظ سے صاف ستھرہ اور پر سہولت مرکزی شھر کے طور پر اینی قانونی تحفظات کے ساتھ رکھا جایے صوبہ خیبر پختون خواہ کی بہترین انتظامی طور پر چار صوبون میں تقسیم” 1: صوبہ وزیرستان اور اس کے اضلاع: 1: کوہاٹ 2: بنوں 3: ڈیرہ اسماعیل خان 4: ٹانک اس مند ر جہ ذیل ایجنسیان شامل ھونگی کرم ایجنسی کوہاٹ ٹنل سے کوہاٹ کی جانب کے تمام علاقے پارہ چنار اور شمالی و جنوبی وزیرستان کے بلوچستان کے بونڈری تک کے تمام علاقے. 2: صوبہ پختون خوہ اضلاع 1: پشاور 2: چارسدہ 3: مردان 4: نوشھرہ 5: صوابی ایجنسیاں: خیبر ایجنسی اور کرم ایجنسی کے کوہاٹ ٹنل سے پشاور کی جانب کے تمام علاقے مھمند ایجنسی کے شیوا پہاڑی کے ٹاپ تک کا علاقہ اور ملاکنڈ ایجنسی کے ملاکنڈ کی پہاڑی سے نیچے درگی کی طرف کے تمام علاقے ملاکنڈ ٹاپ تک 3: صوبہ ھزارہ اضلاع 1: ھری پور 2: ایبٹ اباد 3: مانسہرہ 4: بٹا گرام 5: کالا ڈھاکہ 6: کوھستان 1 .7: کوھستان 2: 8: کوھستان 3 4: صوبہ کوھستان: اضلاع 1: سوات 2: بونیر 3: شانگلہ 4: دیر لویر 5: دیر اپر. 6 چترال 1 :7: چترال 2 ایجنسیز ملاکنڈ ایجینسی کے بٹ خیلہ کی طرف کے تمام علاقے,مھمند ایجنسی کے شیوا پہاڑی سے نواگی کی جانب کا پورا علاقہ اور پورا باجوڑ ایجنسی ھر لحاظ پاکستان کو انتظامی طور پر 16 صوبون میں تقسیم کرنا ملک خداداد پاکستان کے مفاد میں بہتر ین ھوگا ھر قسم کے علاھدگی پسند تحریکوں کے خاتمے کا سبب ھوگا اور خاصکر کراچی کی گنجان ابادی جو کی کروڑوں تک جا پہنچی ھے اور جنگل کی طرح پھیلتی جارھی ھے اس کو ایک ایک کروڑ کی ابادی میں تقسیم کرنے سے ھی مستقل امن قایم کرنا نہایت اسان ھوگا .

اس خبر پر تبصرہ کریں۔ چترال ایکسپریس اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں
دوسروں کے ساتھ اشتراک کریں

یہ خبر بھی پڑھیں

پاکستان زندہ باد فٹ بال ٹورنمنٹ کا فائنل جوٹی لشٹ فٹ بال کلب نے جیت لیا۔

چترال (نمائندہ چترال ایکسپریس)پاکستان زندہ باد فٹ بال ٹورنمنٹ کا فائنل ڈگری کالج فٹ بال ...


دنیا بھر سے

error: مغذرت: چترال ایکسپریس میں شائع کسی بھی مواد کو کاپی کرنا ممنوع ہے۔