تازہ ترین

ڈاکٹر امجد میں پارٹی کو لیڈ کرنے کی سیاسی بصرت نہیں تھی۔وقاص احمد ایڈوکیٹ

چترال(نمائندہ چترال ایکسپریس)ال پاکستان مسلم لیگ چترال کے رہنما وقاص احمد ایڈوکیٹ نے ڈاکٹر محمد امجد کی آل پاکستان مسلم لیگ کی چئیرمین شپ  سے استعفی دینے کے فیصلے کو سراہاتے ہوئےاپنےردعمل  کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہےکہ ڈاکٹر امجد میں پارٹی کو لیڈ کرنے کی سیاسی بصرت نہیں تھی انہوں نے کہا کہ میں پہلے بھی ڈاکٹر امجد کی استعفیٰ کا مطالبہ کیا تھاوقاص احمد ایڈوکیٹ نے کہا کہ نئے مرکزی کابینہ میں کسی چترالی کو شامل کیا جائے ورنہ ہم اختجاج پر مجبور ھونگے کیونکہ کہ اے پی ایم ایل کا سب سے زیادہ ووٹ بنک چترال میں ہیں اور مرکزی لیڈرشپ چترال پر توجہ نہ دینے کی وجہ سے مشرف کے چاہنے والے تیتر بیتر ہو چکے ہیں ان کو اب یکجا کرنا ایک چیلینج ہے اس لیے چترال کے اندر چوبیس یو سی میں ایک ایک دفتر کا ہونا لازمی ہے تاکہ ان لوگوں کو دوبارہ منظم کیا جاسکیں انہوں نے کہا چونکہ پاکستان میں تمام کابینہ dissolved کیا گیا ھے اس لیے چترال میں بھی نٸی کانینہ بنانے کی ضرورت ہے اورہمیشہ کی طرح باہر سے لوگوں کو لاکر پارٹی پر مسلط نھیں کیا جاے گزشتہ سالوں میں چترال میں باہر سے لوگوں کو مسلط کرنے پر پارٹی کا یہ حال ہوا ہے انہوں نے کہا کہ چترال میں مشرف کے شاہین سب سے زیادہ ہیں لیکن اپ ان کو منظم کرنا ہے انہوں نے عبوری چیرمین سے پرزور مطالبہ کیا کہ چترال میں ضلعی کابینہ ورکروں سے مشاورت کے بعد ورکرز جس کو چاہے ضلعی کابینہ میں شامل کریں ورکروں سے مشاورت کے بغیر ھم کسی کو ضلعی کابینہ میں تسلیم نھیں کرٸنگے اور ورکروں سے مشاورت نہ ہونے کی وجہ سے چترال میں ایک دوسرا گروپ اے پی ایم ایل حقیقی نام سے بننابنایا گیا جو ورکروں سےمشاورت نہ ہونے کی وجہ سے ہوا۔ ہم اے پی ایم ایل کے پرانے اور ناراض کارکنوں سے بھی رابط کرکے ان کو ہر ممکن منانے کی کوشش کرٸنگے اور ان کے راے کا احترام کیا جاےگا انہوں نے بھر پور مطالبہ کرتے ہوے کہا کہ مرکز میں اہم عہدے پر کسی چترالی کو شامل نہیں کیاگیا تو ہم ضلعے میں کسی عھدے کو قبول نہیں کرٸنگے موجودہ الیکشن میں بھی سب سے زیادہ ووٹ بھی چترال میں اے پی ایم ایل کو پڑے ہیں اور چترال کے لوگ مشرف  سے عقیدت رکھتے ہیں اُنھوں نے مزید کہا کہ چترال میں ضلعی کابینہ ورکروں کے کثرت راے سے بنایا جائے اس کے بعد یونین کونسل میں کانینہ سازی کی جائےاور اے پی ایم ایل کے لیے ممبر شب فارم بنائی جائے گی انھوں نے عبوری چیرمین سے مطالبہ کیا کہ چترال اور مستوج میں جلد از جلد اے پی ایم ایل کا دفتر بنایا جائے تاکہ پارٹی کے لیے کام جلد شروع ہو سکیں
اس خبر پر تبصرہ کریں۔ چترال ایکسپریس اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں
دوسروں کے ساتھ اشتراک کریں

متعلقہ خبریں/ مضامین

error: مغذرت: چترال ایکسپریس میں شائع کسی بھی مواد کو کاپی کرنا ممنوع ہے۔
إغلاق