تازہ ترین

چترال کے وکلاء برادری کاچیف جسٹس آف پاکستان کا چترال کے عوامی مسائل پر فوری کاروائی کاشکریہ۔چترالی عوام کو فوری طور پر ریلیف پہنچانے کی اپیل

چترال (نمائندہ چترال ایکسپریس) خیبر پختونخوا بار کو نسل کے رکن عبدالولی خان عابد ایڈوکیٹ، ڈسٹرکٹ بار ایسوسی ایشن چترال کے صدر خورشید حسین مغل ایڈوکیٹ ، جنرل سیکرٹری وقاص احمد ایڈوکیٹ، نے ڈسٹرکٹ بار کے دیگر ممبران شعیب احمد ایڈوکیٹ، تنزیل الرحمن ایڈوکیٹ اور آفتاب حسین ایڈوکیٹ کی معیت میں ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے چیف جسٹس آف پاکستان میاں ثاقب نثارکا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا ہے کہ گزشتہ دنوں دورہ چترال کے موقع پر ان کی خدمت میں پیش کردہ عوامی مسائل پر فوری کاروائی کرکے انہوں نے چترالی عوام کے دلوں کو امیدوں سے بھر دیا ہے جوکہ حکومتی اقدامات کی وجہ سے مایوسی کے دلدل میں پھس گئے تھے۔ انہوں نے چیف جسٹس سے مزید مطالبہ کیا کہ پسما ندگی سے دوچار چترالی عوام کو فوری طور پر ریلیف پہنچایا جائے کیونکہ متعدد ترقیاتی منصوبہ جات کی منسوخی اور تاخیر کی خبر سے چترال کے طول وعرض میں مایوسی کی لہر دوڑ گئی ہے۔ انہوں نے کہاکہ چترال میں نیشنل ہائی وے اتھارٹی کے شندور، گرم چشمہ ، کالاش ویلیز اور اویرٹو تریچ روڈ وں کو التوا میں ڈالنے ، منسٹر ی آف پٹرولیم کی طرف سے چترال ، دروش اور ایون میں ایل پی جی ٹینک کے ذریعے گیس کی فراہمی ، پیسکو کی طرف سے صارفین بجلی کو بغیر میٹر ریڈنگ کے بل بھیجنے کا سلسلہ ہر ماہ جاری رہنے ، دریائے چترال کو ملک کے دیگر حصوں میں دریائے کابل کا نام دینے پر عبدالولی خان عابد ایڈوکیٹ اور ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹرز ہسپتال میں آئی، آرتھوپیڈک، نیورولوجی، سائیکاٹری کے اسپیشلسٹ مقرر نہ کرنے اور ہسپتال میں ایم آر آئی اور سی ٹی اسکین سمیت لیبارٹری کی سہولیات کی عدم موجودگی کے بارے میں وقاص احمد ایڈوکیٹ نے چیف جسٹس کوان کے دورہ چترال دوران ڈسٹرکٹ بار روم میں آمد کے موقع پر درخواستیں پیش کی گئیں تھیں۔ چیف جسٹس نے درخواستوں پر کاروائی کرتے ہوئے تمام متعلقہ محکمہ جات کے سربراہان اور چیف سیکرٹری خیبر پختونخوا کو حکم دے دیا ہے کہ 11۔اکتوبر سے پہلے پہلے ان شکایات کے بارے میں اپنے جوابات سپریم کورٹ آف پاکستان کو پیش کریں۔ اس موقع پرموجود سماجی وسیاسی شخصیت سردار محمد خان نے بھی سول سوسائٹی کی طرف سے چیف جسٹس کا شکریہ ادا کیا اور عوامی مسائل کو اجاگر کرنے پر وکلاء اور صحافتی برداری کا کی کوششوں کو سراہتے ہوئے سول سوسائٹی کی طرف مکمل تعاون کا یقین دلایا۔
اس خبر پر تبصرہ کریں۔ چترال ایکسپریس اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں
دوسروں کے ساتھ اشتراک کریں

متعلقہ خبریں/ مضامین

error: مغذرت: چترال ایکسپریس میں شائع کسی بھی مواد کو کاپی کرنا ممنوع ہے۔
إغلاق