تازہ ترین

اسپیکر خیبر پختونخواہ اسمبلی مشتاق احمد غنی نے صوبائی سیکرٹریٹ میں چترال چمبر آف کامرس کی نئی کابینہ کے اراکین سے حلف لے لیا۔

پشاور(نمائندہ چترال ایکسپریس)چترال کے لوگ محب وطن پاکستانی ہیں جنہوں نے درپیش مصائب کا ہمیشہ ڈٹ کر مقابلہ کیا۔چترال قدرتی اور معدنی وسائل سے مالامال ہے ماضی میں علاقہ کو نظر انداز کیا جاتا رہا لیکن موجودہ حکومت چترال کی پسماندگی دور کرکے اسے ترقیاتی اضلاع کے مساوی مراعات فراہم کرنے کیلئے کوشاں ہے۔ان خیالات کا اظہار اسپیکر خیبر پختونخواہ اسمبلی مشتاق احمد غنی نے صوبائی سیکرٹریٹ میں چترال چمبر آف کامرس کی نئی کابینہ کے اراکین سے حلف لینے کی ایک تقریب میں کیا۔اُنہوں نے کہا کہ چترال میں جلد انڈسٹری لائزیشن کی شروعات ہوں گی۔لواری ٹنل سے چترال کے عوام کو ریلیف ملا اور علاقے کا ملک کے باقی حصوں سے رابطہ قائم ہوا۔اُنہوں نے کہا کہ چترال یونیورسٹی پر کام زور وشور سے جاری ہے یونیورسٹی ماڈل ایکٹ کو فاٹا اور پاٹا تک توسیع دیں گے جبکہ چترال یونیورسٹی کے وائس چانسلر کا جلد اعلان کیا جائے گا۔اسپیکر صوبائی اسمبلی نے کہا کہ سی پیک میں چترال کا اہم کردارہ وگا،چترال میں سیاحوں کیلئے مزید سہولیات فراہم کی جائیں گی تاکہ سیاحت کو فروغ دیا جاسکے۔جبکہ لوئر دیر سے چترال تک موٹروے کے ذریعے چترال کو دیگر علاقوں سے منسلک کیا جائے گا۔اُنہوں نے کہا کہ وہ صوبائی بجٹ اجلاس کے بعد چترال کا دورہ کریں گے اور وہاں پر یونیورسٹی اور ہسپتالوں کا جائزہ لیا جائے گا۔اُنہوں نے دریائے کابل کا نام دریائے چترال رکھنے کا عندیہ دیا اور قدرتی آفات کے نتیجے میں لوگوں کی تباہ ہونے والی اراضی کے معاوضے کی ادائیگی کے حوالے سے قانون سازی کرنے کی بھی یقین دہانی کی۔اسپیکر صوبائی اسمبلی نے کہا کہ وفاقی اور صوبائی حکومتیں چترال کی عوام کی مشکلات حل کرنے اور انہیں تمام تر سہولیات کی فراہمی کیلئے پر عزم ہیں۔

اس خبر پر تبصرہ کریں۔ چترال ایکسپریس اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں
دوسروں کے ساتھ اشتراک کریں

متعلقہ خبریں/ مضامین

error: مغذرت: چترال ایکسپریس میں شائع کسی بھی مواد کو کاپی کرنا ممنوع ہے۔
إغلاق