پاکستان یو ایس ایلمنائی نیٹ ورک کے-پی  کا کوشٹ میں  ایک  پروگرام – Chitral Express

صفحہ اول | تازہ ترین | پاکستان یو ایس ایلمنائی نیٹ ورک کے-پی  کا کوشٹ میں  ایک  پروگرام
Premier Chitrali Woolen Products

پاکستان یو ایس ایلمنائی نیٹ ورک کے-پی  کا کوشٹ میں  ایک  پروگرام

چترال(نمائندہ چترال ایکسپریس)ہفتے کے روز دے بریلیئنس اسکول آف سٹیڈیس کوشٹ کے مقام پر پاکستان یو ایس ایلمنائی نیٹورک کے پی نے کوشٹ کے ایل -ایس -او ہارسو اور بی-ایس- ایس کے تعاون سے ” رورل اینٹراپرونیورشپ” کے عنوان پر ایک دن کے غیر رسمی پروگرام کا انعقاد کیا۔ پاکستان یو ایس ایلمنائی نیٹورک پاکستان میں ان نوجواں خواتین و حضرات کی تنظیم ہے جو کسی بھی اسکولرشپ پر آمریکہ جاچکے ہیں اور واپس آکر اپنے اپنے علاقے کی بحالی کیلئے کام کررہے ہیں۔ اس پروگرام کوIMG_8136 عطاءالرحمن نے اپنے ساتھی ایلمنائی عبدالواحد خان’ عظیم سرور’ اظہر صباح’ حما اکبر’رخسانہ حسینی’ رخشندہ شاکر  اور صوفیہ کے ساتھ مل کر کامیاب بنایا۔ پروگرام کا باقاعدہ آغاز تلاوت کلام پاک سے کیا گیا۔ بی ایس ایس کے لیکچریر جناب حیدر علی نے بی ایس ایس کو پروگرام کے انعقاد کیلئے منتخب کرنے پر سب کا شکریہ ادا کیا اور یہ یقین دہانی کی کہ مستقبل میں بھی بی ایس ایس ایسے اچھے پروگرام میں ہر قسم کی تعاون کرے گی۔ عطاء الرحمن نے  پروگرام کے مقاصد بیان کرتے ہوئے کہا کہ ہم نوجوانوں کو چترال جیسے پسماندہ علاقے میں رہتے ہوئے کاروبار اور انٹریپنئیرشپ کے بارے میں سوچنے کی دعوت دیتے ہیں۔ ہم کم تنخواہ میں نوکری تو کرنا چاہتے ہیں لیکن اپنا کوئی کاروبار نہیں کرتے اور چترال کے کاروباری نظام پر دوسرے لوگوں نے قبضہ کرلیا ہے۔ پروگرام میں آگے چل کے حاروسو کے ایک منیجر نے علاقے میں حارسو کے کردار کو اجاگر کیا اور بتایا کہ حارسو نے کوشٹ کے علاقے میں کئی انٹریپنئیرشپ اور چھوٹے کاروبار کا موقع فراہم کیا ہے۔

 بی ایس ایس کے استاد فیض الجلال نےIMG_8213 اس موقع پہ اسلام میں کاروبار کی اہمیت پر اپنے خیالات کا اظہار کیا اور کاروبار کو ہمارے پیغمبر حضرت محمد ؐ  کی زندگی اور ان کی تعلیمات کی روشنی میں بیان کیا۔ انہوں نے کہا کہ اگر امانت داری و دیانت داری سے کاروبار کیا جائے تو یہ ایک عبادت ہے۔

پوان کے ممبر حما اکبر نے مقامی’ قومی اور بین الاقوامی سطح پر کامیاب کاروباری لوگوں کی کہانیاں بیان کئے کہ کس طرح انہوں نے اپنی زندگی میں سخت محنت اور لگن سے کام کیا اور آج ہم سب کیلئے مشعلِ راہ بنے ہوئے ہیں۔ انہوں نے راہو چنار بونی میں عورتوں کی مارکیٹ کا مثال دیا اور اس کے ساتھ صدرالدین حاشوانی اور کے-ایف-سی کا بھی قصہ سنائی اور ان مثالوں کے زریعے یہ بتانے کی کوشش کی کہ یہ سب لوگ محنت و لگن سے ہی آج اس مقام تک پہنچے ہیں۔

اس کے بعد رخشندہ شاکر نے ایک اچھے کاروباری انسان بننے کیلئے جن خصوصیات کی ضرورت ہوتی ہے ان پہ روشنی ڈالی۔ جب سٹیچ سامعین کیلئے کھول دیا گیا تو وہاب صبائ نے  انٹریپنئیرشپ اور چترال میں اس کی کمی پر زور دیا۔ انہوں نے کچھ ان وجوہات پہ بات کی جن کی وجہ سے چترال میں لوگ کچھ نیا کرنے سے اتراتے ہیں اور اس میں کبھی کبھی ثقافت کا غلط اظہار’ برے ناموں سے پکارنا اور لوگوں کے تنقید آتے ہیں۔ بعد ازاں اورگینازیرس میں سے اظہر صباح نے “اونلائن اینٹراپرونیورشپ” پہ بات کرتے ہوئے چترال میں اس کی ایک اچھے مستقبل کی بات کی۔IMG_8113ان تمام سیشن میں حاضریں کو بھی شامل کیا گیا اور ان کے ساتھ ایک ایکٹیوٹی کی گئی جس میں چترال میں کاربار کے مواقع کی نشاندہی کی گئی اور دس منٹ میں کم سے کم ستر کاروبار کے اقسام سامنے آئے۔ اس اکٹوٹی کے بعد یوت ایکسچنج اینڈ اسٹیڈی (ییس) اسکالر عبدالواحد خان نے “سوشل اینٹراپرونیورشپ” کے بارے میں بات کی اور اس بات پہ زور دیا کہ کیسے ان تمام کاروباری اور اینٹراپرونیورشپ مواقع کو بروئے کار لاکر ہم چترال کے مثائل حل کرسکتے ہیں۔

آخر میں بی ایس ایس کے پرنسپل صاحب نے ارگنائزرز کا شکریہ ادا کیا اور اس پروگرام کی کامیابی پہ سب کو مبارکباد دیا اور کاروبار کی ضرورت پہ زور دیا۔  پاکستان یو ایس ایلمنائی نیٹورک  کے-پی پاکستان کی طرف سے عطائ الرحمن نے سب حاضرین اور بی ایس ایس کے تعاون پر ان کا شکریہ ادا کیا۔ پروگرام کے بعد چائے کے اوپر حاضرین نے اس عنوان پر مزید انفورمل گفتگو کیا اور اس رائے کا اظہار کیا کہ یہ پروگرام نوجوانوں اور کاروباری لوگوں کیلئے بہت فائدہ مند رہا۔

 

 

اس خبر پر تبصرہ کریں۔ چترال ایکسپریس اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں
دوسروں کے ساتھ اشتراک کریں
Qashqar Gemstone Testing Lab

یہ خبر بھی پڑھیں

ڈپٹی کمشنر چترال کے دفتر میں عوامی شکایات کی فوری ازالے کے لئے قائم کردہ کمپلنٹ ریڈرسل (سی آر سی ) کا افتتاح

چترال (نمائندہ چترال ایکسپریس) کمشنر ملاکنڈ ڈویژن سید مظہر الاسلام شاہ نے ڈپٹی کمشنر چترال ...

اترك تعليقاً