کریم اللہ – Chitral Express

کریم اللہ

فکرفردا۔۔۔۔ہائی ووٹنگ ٹرن آوٹ اور چترال کی سیاست

 چترال کی انتخابی تاریخ کا جائزہ لیا جائے تو پتہ چلتا ہے کہ ہر الیکشن میں یہاں پولنگ ٹرن آوٹ صوبے کے تمام اضلاع کے مقابلے میں سب سے زیادہ رہی ہے۔ 2013ء کے انتخابات میں چترال کا پولنگ ٹرن آوٹ کم وبیش 67 فیصد رہا جو کہ پاکستان میں ...

مزید پڑھئے

فکر فردا…..بزور بازو چترال بازار کو بند کرنا کیا کسی ساز ش کا حصہ تو نہیں ؟

22 جولائی 2018 ء بروز اتوار کو اچانک چترال بازار مکمل طور پر بند ہوتا ہے ، ہوٹل سے لے کر تندور تک ہر ایک دکان پر صبح سے شام تک تالا لگا کے رکھا جاتا ہے ، جس کی وجہ سے مسافروں ، سیاحوں اور سیاسی کارکنوں کو شدید ...

مزید پڑھئے

چترال کا سیاسی دنگل

……….تحریر: کریم اللہ…….. جوں جوں الیکشن کے دن قریب آتے جارہے ہیں مختلف سیاسی جماعتیں جلسے جلوسوں سے عوام کی ہمدردی سمیٹنے کی کوشش کررہے ہیں ۔ انتخابات کا اونٹ کس کروٹ بیٹھے گی اس کا فیصلہ تو 25جولائی کو ہوگا البتہ سیاسی پنڈٹ مختلف قسم کی پیشن گوئیوں میں ...

مزید پڑھئے

فکر فردا …..ایک آئیڈیل سرکاری سکول

خیبر پختونخواہ میں پاکستان تحریک انصاف کی حکومت کے آنے کے بعد تعلیمی شعبے میں کافی بہتری دیکھنے کو ملی ۔ ہزاروں کی تعداد میں نئے ٹیچرز خالصتا میرٹ کی بنیاد پر بھرتی ہوئے اور باونڈری وال، واش رومز، آبپاشی، بجلی اور کمپیوٹر لیب جیسی بنیادی ضروریات کی فراہمی اور ...

مزید پڑھئے

سی سی ڈی این کی کارکردگی

چترال کمیونٹی ڈویلپمنٹ نیٹ ورک یعنی سی سی ڈی این کا قیام 2009ء میں ہوا جو کہ 19 لوکل سپورٹ آرگنائزیشنز کا مجموعہ اور باضابطہ رجسٹرڈ ادارہ ہے ۔اس ادارے کے قیام کا مقصد سول سوسائیٹی کو متحرک کرنااور اداروں کے اشتراک و تعاون سے کمیونٹی کی ترقی ہے ۔خصوصا ...

مزید پڑھئے

فکر فردا ….اسماعیلی اکثریتی علاقوں کی سیاست!حقائق اور مفروضے

اس میں کوئی شک نہیں کہ اسماعیلی کمیونٹی ایک ہزار برس سے چترال میں رہائش پزیر ہے۔ اس کمیونٹی کی اکثریت اسی مٹی ہی کی پیداوار (بومکی ) لوگوں کی ہیں ۔ لیکن چترال کی تاریخ میں کئی مرتبہ ریاستی حکمرانوں کی جانب سے اور بعض اوقات اکثریتی کمیونٹی کے ...

مزید پڑھئے

فکر فردا۔۔۔۔لوٹکو ہ کی سیاست !حقائق اور مفروضے

ان دنوں سوشل میڈیا پر لوٹکوہ بالخصوص سابق ایم پی اے اور صوبائی وزیر سلیم خان کی سیاست پر تبصرے جاری ہے ۔ بعض لوگوں کے نزدیک لوٹکوہ کے عوام تاریخی طور پر علاقہ واریت اور مذہب کے نام پر ووٹ کاسٹ کرتے آرہے ہیں اور ان کے ہاں نظریہ ...

مزید پڑھئے

…فکرفردا…جشن ققلشٹ سے جشن چترال تک

 موسم بہار میں چترال میں منعقد ہونے والے دو کلینڈر ایونٹ یعنی جشن قاقلشٹ کے بعد جشن چترال اپنی تمام رنگارنگیوں کے ساتھ اختتام پزیر ہوا۔ چترال اپنی ثقافتی گوناگونی اورادب و ثقافت کی وجہ سے دنیا بھر میں مشہور ہے۔ المیہ یہ ہے کہ اہالیان چترال شرافت، سادہ لوحی ...

مزید پڑھئے

فکر فردا ۔۔۔۔۔۔۔لواری ٹنل اور مولانا عبدالاکبر چترالی

 لواری ٹنل چترالیوں کے لئے زندگی اور موت کی حیثیت رکھتی تھی ہر سال لواری کے خونخوار پہاڑی کو عبور کرتے ہوئے دسیوں افراد اپنی جانوں سے ہاتھ دھوتے آئے ہیں ۔ اس لئے مقامی زبان میں اسے روئے لیے یعنی لوگوں کا خون بھی کہا جاتا ہے۔ لواری ٹنل ...

مزید پڑھئے

.فکرفردا…..بجلی سیاست اور ایم این اے چترال

 گوکہ میں بذات خود ایم این اے چترال جناب افتخار الدین سمیت سارے سیاسی قایدیں کا ناقد رہا ہوں اور پبلک آفس ہولڈر ہوتے ہوئے ان کی پالیسیوں اور کارکردگی پر تنقید ہم سب کا جمہوری حق ہے، جو ہم استعمال کرتے آرہے ہیں ۔ میں یہ بھی مانتا ہوں ...

مزید پڑھئے
error: مغذرت: چترال ایکسپریس میں شائع کسی بھی مواد کو کاپی کرنا ممنوع ہے۔