محمد جاوید حیات – Chitral Express

محمد جاوید حیات

دھڑکنوں کی زبان…نمائندہ اگر مجھ سے تقریر لکھوائے تو یوں لکھونگا 

یہ نمائندگی عجیب مخمصہ ہے ۔۔ایک دیوانگی سا ۔۔کسی سے اس کا ضمیر مانگو ۔۔کسی سے اس کی پسند مانگو ۔۔کہو کہ میں تمہاری پسند ہو ۔۔اس کی آنکھوں کے سامنے مزید پردہ بننے کی کوشش کرو ۔۔کہو کہ میں اچھا ہوں ۔۔وہ دل میں مسکرائے ۔۔کہے ہمیں پتہ ہے ...

مزید پڑھئے

دھڑکنوں کی زبان …. تعلیم یافتہ لوگوں کے درمیان

مجھے ہمیشہ تعلیم یافتہ لوگوں کی تلاش رہتی ہے ۔۔جس کے پاس ڈگریاں ہوتی ہیں ان کے پاس درست رویہ نہیں ہوتا ۔۔ان سے ایسا ملنا ہوتا ہے کہ گویا آپ بادشاہ سلامت کے استان کو بوسہ مار رہے ہیں ۔اور جس کے پاس اخلاق ،کردار اور درست رویہ ہوتا ...

مزید پڑھئے

دھڑکنوں کی زبان …..شمع ہر رنگ میں جلتی ہے سحر ہونے تک

شمع اپنے والدین کی اُکلوتی بچی تھی ۔۔پرورش نازو نعم سے ہو رہی تھی ۔۔گھر کی شہزادی تھی ۔۔اس کی آنکھوں میں اُتری معصومیت ماں باپ کو پگھلا کے رکھ دیتی ۔۔والدین اس پہ جان نچھاور کر دیتے ۔۔گھر کے سارے افراد کی آنکھوں کا تارہ تھی ۔۔گھرانہ اسودہ تھا ...

مزید پڑھئے

دھڑکنوں کی زبان ۔۔۔۔کرپشن گالی ہے 

سنٹینیل ماڈل ہائی سکول چترال برائے طلباء کے ٹینس گراونڈ میں ڈسکیں لگی ہوئی تھیں ۔۔مختلف سرکاری اور غیر سرکاری تعلیمی اداروں کے بچے پنسل دانتوں میں دبا کے اس بات کا انتظار کر رہے تھے کہ کب ان کو مقابلہ شروع کرنے کا حکم دیا جائے گا ۔۔ٹنس گراؤنڈ ...

مزید پڑھئے

دھڑکنوں کی زبان …… عام انتخابات اور عام پاکستانی

قوم کے ہر فرد کو اپنے کام سے کام ہو تو قوم کامیاب ہوتی ہے ۔۔ہر مشکل مرحلہ طے کرتی ہے ۔۔ہم بحیثیت قوم غیر زمہ دار ہیں۔۔دوسروں پہ اُنگلی اُٹھانے سے پہلے اپنا سب کچھ بھو ل جاتے ہیں ۔۔اگر ہر ایک اپنی زمہ داری کاا حساس کرے تو ...

مزید پڑھئے

دھڑکنوں کی زبان….وقت وقت کی بات

بدر کا میدان سجا تھا ایک طرف دولت ، برتری اور بدنی طاقت کے نشے میں مست کفار مکہ کے زال تھے ۔۔ان کے ذھنوں میں مٹھی بھر مسلمانوں کو آج کے دن صفحہ ہستی سے مٹانا تھا ۔ان بے چاروں کو اپنے پنجوں تلے روندنا تھا ۔۔ان کو اپنی ...

مزید پڑھئے

دھڑکنوں کی زبان… جی جی ایچ ایس بمبوریت میں تعلیمی عمل کا آغاز

تعلیم ترقی کا پہلا زینہ ہے ۔۔زندہ قوموں کی ابتدا ء تعلیم سے شروع ہوتی ہے اور انتہا تعلیم ہے ۔۔مسلم اُمت کی ابتداء لفظ’’ اقراء‘‘ سے ہوئی اور علم کو اس کی کھوئی ہوئی میراث قرار دیا گیا ۔۔فلاحی ریاست کا فرض ہے کہ وہ قوم کو ممکنہ بہتر ...

مزید پڑھئے

دھڑکنوں کی زبان…. چترال کی بیٹی کے نام پ

پاکیزہ کو یکدم کیا ہو گیاتھا کہ سر ڈھانپنے لگی تھی ۔۔یونیورسٹی جاتی بچی ابھی اپنے دوپٹے کا خیال رکھنے لگی تھی ۔۔اپنے چہرے کا غازہ ۔۔ہونٹوں کی لالی ۔ناخنوں کی پالش کی کوئی پرواہ نہیں تھی ۔۔جوتوں کی رنگت اور کپڑوں کی فیشن کی بھی پرواہ نہیں تھی ۔۔پتہ ...

مزید پڑھئے

دھڑکنوں کی زبان …. شاکرین استاد

’’شاکرین استاد پنشن پہ گیا ‘‘یہ ایک ایسا جملہ ہے جس پہ کوئی اعتبار نہیں کرے گا کیونکہ سمندر خشک نہیں ہوتا ۔ہو اکا چلنا بند نہیں ہوتا ۔۔پہاڑ اپنی جگہ سے غائب نہیں ہوتا ۔۔پھول بغیر خوشبو کے نہیں ہوتا ۔دنیا سے محبت کا وجود ختم نہیں ہوتا ۔۔وفا ...

مزید پڑھئے

دھڑکنوں کی زبان …پنپتی جمہوریت

وطن عزیز کی عمر تقریباً اکہتر سال ہے ۔۔نظریہ اسلامی تھا۔۔۔ مقصد آزادی تھا ۔۔ایک ایسا خطہ زمین جہان پر مسلمان آزادی سے اپنے مذہبی اقدار کے مطابق زندگی گذار سکیں گے ۔۔اقلیتوں کو مکمل آزادی ہوگی ۔۔۔ہم اس خطہ زمین کو ’’اپنا ملک ‘‘ کہہ سکیں گے۔۔ اس کی ...

مزید پڑھئے