fbpx

چترال میں ہفتۂ صفائی مہم کا افتتاح

چترال ( نمائندہ چترال ایکسپریس) ضلع ناظم چترال حاجی مغفرت شاہ نے کہا ہے ۔ کہ چترال شہر ماحولیاتی آلودگی کی تشویشناک صورت حال سے دوچار ہے ۔ اگر اس کی صفائی کیلئے مربوط حکمت عملی کے تحت منصوبہ بندی نہیں کی گئی ۔ تو مستقبل میں شہر کو سنگین صورت حال سے دوچار ہونا پڑے گا ۔ تاہم ڈپٹی کمشنر چترال اُسامہ احمد وڑائچ ، کمانڈنٹ چترال سکاؤٹس کرنل نظام الدین اور تحصیل ناظم چترال مولانا محمد الیاس کی کو ششیں اس حوالے سے قابل تعریف ہیں ۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے ہفتے کے روز گورنمنٹ سنٹینیل ماڈل ہائی سکول چترال میں ہفتۂ صفائی کے افتتاح کے موقع پر خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ انہوں نے کہا ۔کہ ویلج کونسلوں کے پاس مالی وسائل موجود ہیں ۔ اس لئے وی سی سیز کی ذمہ داری بنتی ہے ۔ کہ وہ اپنی حدود میں صفائی پر مکمل توجہ دیں ۔ انہوں کہا کہ صفائی کے حوالے سے چترال شہر کو فوکس کرکے اس پر مستقل بنیادوں پر کام کیا جائے ۔ وقتی طور پر اقدامات وقت ضائع کرنے کے مترادف ہے ۔ انہوں نے کہا ۔ کہ ہماری قوم کی بد قسمتی یہ ہے ۔ کہ ہر فرد دوسرے کو تو قصور وار ٹھہراتا ہے۔ لیکن خود کو ذمہ داریوں سے مستشنیٰ قرار دیتا ہے ۔ اسی وجہ سے ماحولیاتی آلودگی اور ٹھوس کچرے میں مسلسل اضافہ ہورہا ہے ۔ ڈپٹی کمشنر چترال نے کہا ۔ کہ چترال شہر کی صفائی کیلئے انہوں نے مصمم ارادہ کر لیا ہے ۔ اور اس میں کمانڈنٹ چترال سکاؤٹس کا بھر پور تعاون انہیں حاصل ہے ۔ انہوں نے کہا ۔ کہ جی او سی ملاکنڈ ڈویژن جنرل نادر خان رضا کار نوجوانوں پر مشتمل ٹاسک فورس کے قیام کا جو آئیڈیا دیا تھا ۔ اُس فورس نے اپنا کام شروع کر دیا ہے ۔ اس سے چترال شہر کے اندر آلودگی کے مسائل پر قابو پانے میں مدد ملے گی ۔ انہوں نے کہا ۔ کہ انہوں نے بازاروں میں غیر معیاری اشیاء کی فروخت پر پابندی ، ہوٹلوں میں صفائی ، میڈیکل سٹورز کے معائنے ، تجاوزات ہٹانے کے حوالے سے اقدامات کا آغاز کیا ہے ۔ اور ان امور کا بنیادی تعلق ماحولیاتی آلودگی پر کنٹرول حاصل کرنے اور شہریوں کو پاک و صاف ماحول مہیا کرنے کی کو شش ہے ۔ انہوں نے تمام حاضرین اور شہریوں سے اپیل کی ۔ کہ اس سلسلے میں اُن کی مدد کریں ۔ کمانڈنٹ چترال سکاؤٹس کرنل نظام الدین نے خطاب کرتے ہوئے کہا ۔ کہ جب تک ہم ذہنی طور پر صفائی کیلئے تیار نہیں ہوں گے ۔ اُس وقت تک ہم مستقل بنیادوں پر صاف ماحول قائم نہیں کر سکتے ۔ اس لئے ماحول ، گاؤں ،شہر کی صفائی کیلئے ضروری ہے ۔ کہ پہلے ہمارا ذہن صاف ہو ۔ ہم آلودگی اور گندگی کو ذہنی طور پر بُرا سمجھیں ۔ اُس کے بعد شہر سے کچرے کی صفائی ، منشیات کی صفائی ، تجاوزات کی صفائی اور سب سے ضروری دل کی صفائی ہے ۔ انہوں نے کہا ۔ کہ چترال سکاؤٹس شہر کو صاف کرنے میں بھر پور مدد کرے گا ۔ اور اس سلسلے میں اُن کے اقدامات پہلے سے ہی جاری ہیں ۔ تحصیل ناظم چترال مولانا محمد الیاس نے کہا ۔ کہ اسلام ہمیں احساس ذمہ داری کا درس دیتا ہے ۔ اور ہمارے مذہب نے جتنا زور پاکیزگی اور صفائی پر دیا ہے ۔ اس کی مثال کسی اور مذہب میں نہیں ملتی ۔ لیکن بد قسمتی یہ ہے ۔ کہ آج دوسرے مذاہب کے لوگ ہمیں اپنا بھولا ہوا سبق یاد دلاتے ہیں ۔ انہوں نے کہا ۔ کہ چترال شہر تقریبا ایک لاکھ کی آبادی اور چھ ہزار دکانوں کے علاوہ سرکاری و غیر سرکار ی دفاتر اورمکانات پر مشتمل ہے ۔ اور کئی علاقے نہایت گنجان آباد ہو چکے ہیں ۔ اس وجہ سے ٹھوس کچرے کی بڑی مقدار روزانہ جمع ہوتی ہے ۔ جس کیلئے صحیح معنوں میں فنڈ کی ضرورت ہے ۔ تاہم ٹی ایم اے اپنی بساط کے مطابق اس سلسلے میں خدمات انجام دے رہا ہے ۔ تقریب سے پرنسپل گورنمنٹ سینٹنیل ماڈل ہائی سکول چترال کمال الدین ، ڈسٹرکٹ ایجوکیشن آفیسر چترال حنیف اللہ نے بھی خطاب کیا ۔ اور صفائی کے حوالے سے ہر قسم کے تعاون کی یقین دھانی کرائی ۔ قبل ازین ڈپٹی کمشنر آفس چترال سے ڈپٹی کمشنر اُسامہ احمد وڑائچ ، کمانڈنٹ چترال سکاؤٹس کرنل نظام الدین شاہ کی قیادت میں سکول اور ڈی ایچ کیو ہسپتال تک واک کیا گیا ۔ جس میں سرکاری و غیر سرکاری محکمہ جات کے آفیسران ، سول سوسائٹی کے نمایندوں ، اساتذہ اور سکول و کالج کے طلباء نے بڑی تعداد میں شرکت کی ۔ اس موقع پر ڈی ایچ کیو ہسپتال چترال اور سینٹنیل ماڈل ہائی سکول میں کچرے جمع کرکے صفائی کا افتتاح کیا گیا ۔

اس خبر پر تبصرہ کریں۔ چترال ایکسپریس اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں

متعلقہ خبریں/ مضامین

اترك تعليقاً

error: مغذرت: چترال ایکسپریس میں شائع کسی بھی مواد کو کاپی کرنا ممنوع ہے۔
إغلاق