لٹکوہ روڈ انتہائی خستہ حالی کا شکا ر ہے، اور عوامی نمائندے خوابِ خرگوش کی نیند سو رہے ہیں۔ – Chitral Express

کمرشل اشتہارات/ اعلانات

صفحہ اول | تازہ ترین | لٹکوہ روڈ انتہائی خستہ حالی کا شکا ر ہے، اور عوامی نمائندے خوابِ خرگوش کی نیند سو رہے ہیں۔

لٹکوہ روڈ انتہائی خستہ حالی کا شکا ر ہے، اور عوامی نمائندے خوابِ خرگوش کی نیند سو رہے ہیں۔

چترال(نمائندہ چترال ایکسپریس ) صدر انصاف یوتھ ونگ چترال، محمد شریف خان نے چترال ایکسپریس سے خصوصی بات چیت کرتے ہوئے بتایا کہ چترال سے کریم آباد اورگرم چشمہ جانے والی سڑک انتہائی خستہ حالی کا شکار ہے اور کسی بھی وقت دریا برُد ہوسکتا ہے۔ یہ واحد سڑک ہے جو گرم چشمہ اور کریم آباد کو چترال سے ملاتی ہے۔ گزشتہ سالوں میں کئی بار اس سڑک کے دریا بُرد ہونے سے علاقے کے لوگ انتہائی مشکلات سے دوچار ہوتے رہے ہیں۔ علاقے میں جہاں اس روڈ کے خراب ہونے سے اشیاء خورد و نوش کی قلت پڑنے کا خدشہ ہے وہیں کسی بھی بیماری یا Emergency کی صورت میں ہسپتال تک رسائی ناممکن ہو جاتا ہے۔جولائی کے مہینے سے گرم چشمہ اور کریم آباد کے کسان کروڑوں مالیت کے زر عی پیداوار مثلاً مٹر، ٹماٹر اور آلو منڈیوں تک پہنچاتے ہیں جوان کا واحد زریعہ معاش ہے اور جس کی آمدن سے سال بھر تک ان کے گھر کے چولہے جلتے ہیں۔ ان دنوں شہ شہ سے شغور روڈ مکمل طور پر دریا بُرد ہونے کی صورت میں علاقے کے لوگ ناقابل تلافی نقصان سے دوچار ہو سکتے ہیں۔ ہزاروں زندگیوں کو خطرہ درپیش ہو سکتا ہے۔ اُن کا کہنا تھا کہ میں بحیثیت اس علاقے کا باشندہ حُکام بالا کی توجہ اس مسئلے کی طرف دلانے کی کوشش کر رہا ہوں۔ایم پی اے سلیم خان اسی علاقے سے تعلق رکھتے ہیں اور تقریباََ 8 سال سے زیادہ عرصے سے مسلسل اقتدار میں ہیں۔موصوف پاکستان پیپلز پارٹی کے دور حکومت میں چار سال منسٹر بھی رہے ۔لیکن افسوس صد افسوس کہ اس ایک روڈ کے مسلے کو حل نہ کر سکے جو کہ کریم آباد اور گرم چشمہ کے عوام کا سب سے بڑا مسئلہ ہے۔ ان دِنوں ایم پی اے لٹکوہ کے ایک چھوٹے سے گاؤں نارکوئیت کے مقام سے اپنے آبائی گاؤں تک چند کلومیٹر کا روڈ بنارہے ہیں۔ بقول ضلعی ناظم مغفرت شاہ وہ اس غیر اہم اور غیر ضروری منصوبے پر32 کروڑ کا قومی پیسہ اُڑانے والے ہیں جس میں سے آدھے سے زیادہ فنڈ یقیناََ من پسند ٹھیکیداروں کی جیب میں جائے گی۔ اور سب سے حیرت کی بات یہ ہے کہ جب چترال کوگرم چشمہ ویلی سے ملانے والی واحد روڈ ہی نہیں رہے گی تو سلیم خان جو اپنے گھر سے چھ یا آٹھ کلومیٹر تک ہائے وے بنا رہے ہیں وہ کس کام آئے گی۔ شاید موصوف ہیلی کاپٹر سے گرم چشمہ گراونڈ میں اُتر نے اور اسی روڈ سے اپنے گھر تک جانے کے خواب دیکھ رہے ہیں۔ سلیم خان سے ہم پرُ زور اپیل کرتے ہیں کہ خُدارا سب سے پہلے گرم چشمہ اور کریم آباد کے لوگوں کے اس اانتہائی سنگین اور بُنیادی مسئلے کو حل کرنے کے لئے اقدامات کریں ۔ اس کے بعد جہاں مرضی حکومتی فنڈ خرچ کریں لیکن یہ روڈ ہمارے لئے زندگی اور موت کا مسئلہ ہے۔

اس خبر پر تبصرہ کریں۔ چترال ایکسپریس اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں
دوسروں کے ساتھ اشتراک کریں

یہ خبر بھی پڑھیں

صوبے میں جاری عوامی فلاح کے اہم منصوبوں کو مکمل کرنا حکومت کی ترجیح ہے.وزیراعلیٰ محمود خان

پشاور(چترال ایکسپریس)وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا محمود خان نے کہا ہے کہ صوبے میں جاری عوامی فلاح کے ...

اترك تعليقاً


دنیا بھر سے

error: مغذرت: چترال ایکسپریس میں شائع کسی بھی مواد کو کاپی کرنا ممنوع ہے۔