چترال میں للسائل والمحروم فاؤنڈیشن کی طرف سے یتیم ونادرطلباء وطالبات میں وظائف تقسیم کرنے کی تقریب  – Chitral Express

کمرشل اشتہارات/ اعلانات

صفحہ اول | تازہ ترین | چترال میں للسائل والمحروم فاؤنڈیشن کی طرف سے یتیم ونادرطلباء وطالبات میں وظائف تقسیم کرنے کی تقریب 

چترال میں للسائل والمحروم فاؤنڈیشن کی طرف سے یتیم ونادرطلباء وطالبات میں وظائف تقسیم کرنے کی تقریب 

چترال(نمائندہ چترال ایکسپریس)گذشتہ روزاپردیر اورچترال میں للسائل والمحروم فاؤنڈیشن کی طرف سے یتیم ونادرطلباء وطالبات میں تقسیم وظائف کی ایک تقریب منعقدہوئی جس میں ڈی ڈی اوچترال احمدالدین ،علاقے کے معززین اورطلباء وطالبات کے سرپرستوں نے کثیرتعدادمیں شرکت کی۔تقریب سے خطاب کرتے ہوئے للسائل والمحروم فاؤنڈیشن کے چیئرمین حاجی محمدجاوید نے ادارے کی خدمات پرتفصیل سے روشنی ڈالتے ہوئے کہا کہ سال 2017-18 پرائمری لیول کے 2486اورپوسٹ میٹرک لیول کے 251یتیم ونادرطلباء طالبات کوللسائل والمحروم فاؤنڈیشن کی طرف تعلیمی وظائف دئیے گئے ۔انہوں نے کہاکہ صرف اپردیراورچترال میں 35لاکھ روپے کے وظائف تقسیم کئے جاررہے ہیں۔تعلیمی وظائف کے علاوہ للسائل والمحروم فاؤنڈیشن نے صحت کے سیکٹرمیں 2318نادرافرادکی کئیریکٹ سرجری کی۔ 295مریضوں کاعلاج اور96مستحق افرادکوسپوٹیوآلات فراہم کئے۔ اس کے علاوہ سوشل سیکٹرکی مدمیں 405یتیم اورنادربچوں اوربچیوں کومختلف شعبوں میں فنی تربیت فراہم کی۔ اوراُن کوتربیت کے ساتھ سیونگ مشین اورٹولزکٹ فراہم کی گئی۔تاکہ وہ باعزیت طورپراپنے اوراپنے خاندان کے لئے حلال رزق کماسکیں۔ملک وہ قوم کی ترقی میں اپناکرداراداکریں۔انہوں نے مزید کہاکہ موجودہ حکومت مستحق اورنادرافراد کی مشکلات کوکم کرنے کے لئے کوشاں ہیں۔انہوں نے مخیرحضرات سے بھی درخواست کی کہ وہ کم ازکم ایک ،یادویتیم بچوں یابچیوں کوتعلیم دینے میں اُنکی مددکریں۔ اس موقع پرڈی ڈی او محکمہ ایجوکیشن چترال احمدالدین نے للسائل والمحروم فاؤنڈیشن کے چیئرمین اورداہلکاروں خراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہاکہ للسائل والمحروم فاؤنڈیشن یتیم اورنادرمسحتق طلباء وطالبات میں وظائف تقسیم کرکے دکھی انسانیت کاخدمت کررہے ہیں جوعظیم عبادت ہے۔اورآئندہ بھی چترال جیسے پسماندہ اوردورافتادہ ضلعے للسائلوالمحروم فاؤنڈیشن کی طرف سے وظائف میں دینے میں ترجیحی بنیادوں پررکھنے کی درخواست کی۔

اس خبر پر تبصرہ کریں۔ چترال ایکسپریس اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں
دوسروں کے ساتھ اشتراک کریں

یہ خبر بھی پڑھیں

,(مشاہداتِ بلقیس )میراجسم میری مرضی

  (ساقیہ کوثر بلقیس شعبہ اردو پشاور یونیورسٹی ) کہنے کو تو ہم 1947 میں ...


دنیا بھر سے

error: مغذرت: چترال ایکسپریس میں شائع کسی بھی مواد کو کاپی کرنا ممنوع ہے۔