لوکل کونسل ایسوسی ایشن خیبر پختونخوانے ضلع کونسل کے خاتمے کی مجوزہ تجویز کو سختی سے مستردکردیا – Chitral Express

کمرشل اشتہارات/ اعلانات

صفحہ اول | تازہ ترین | لوکل کونسل ایسوسی ایشن خیبر پختونخوانے ضلع کونسل کے خاتمے کی مجوزہ تجویز کو سختی سے مستردکردیا

لوکل کونسل ایسوسی ایشن خیبر پختونخوانے ضلع کونسل کے خاتمے کی مجوزہ تجویز کو سختی سے مستردکردیا

مردان (چترال ایکسپریس ) لوکل کونسل ایسوسی ایشن خیبر پختونخوا نے ضلع کونسل کے خاتمے کی مجوزہ تجویز کو سختی سے مسترد کرتے ہوئے کہاہے کہ اس قسم کا فیصلہ کسی صورت برداشت نہیں کیا جائے گا۔ کونسل نے بلدیاتی اداروں کو سیاسی ،مالی اور انتظامی اختیارات دینے کا بھی مطالبہ کیا ہے۔ لوکل کونسل کا ڈویژنل اجلاس ضلع کونسل مردان کے کنوینئر اسد علی کی صدارت میں ہوا جس سے لوکل کونسل ایسوسی ایشن کے صوبائی صدر حمایت اللہ مایار،سینئر نائب صدر اور ضلع پشاور کے نائب ناظم سید قاسم علی،ضلع ناظم مردان احتشام خان ایڈوکیٹ،ضلع ناظم شانگلہ نیاز احمد خان،ضلع ناظم چترال معرفت شاہ، ضلع ناظم تورغر دل روز خان،ضلع بونیر کے نائب ناظم یوسف علی، لوکل کونسل ایسوسی ایشن کے سیکرٹری اطلاعات علی حیدر،ضلع کونسل بونیر کے اپوزیشن لیڈر صدیق اللہ، تحصیل کونسل صوابی کے ناظم غلام حقانی،تحصیل ناظم تخت بھائی معاذ اللہ،ناظم کونسلر اتحاد کے صوبائی صدر ساجد اقبال مہمند،ضلع کونسل مردان کی رکن نصرت آراء نے بھی خطاب۔مقررین نے کہاکہ بلدیاتی اداروں میں آئے روز ترامیم کر کے انہیں کمزور کیا جارہا ہے۔افسرشاہی بلدیاتی اداروں کے اختیارات کو سلب کرنے کی سازشیں کررہے ہیں اور وہ ائیر کنڈیشنڈ کمروں میں بیٹھ کر بھاری تنخواہ اور مراعات لیتے ہیں اور عوام ذلیل و خوار ہو رہے ہیں۔انہوں نے کہاکہ بلدیاتی نظام کے نام پر تجربہ گاہ کسی بھی صورت قبول نہیں ہے۔مشرف دور 2001کا بلدیاتی نظام رائج کیا جائے تاکہ حقیقی معنوں میں اختیارت نچلی سطح تک منتقل ہو سکے۔انہوں نے کہاکہ چترال کے عوام صرف ایک دستخط کے لئے پشاور کا رخ کررہے ہیں جو کہ عوام کے ساتھ کھلا مذاق ہے۔انہوں نے کہاکہ قومی اور صوبائی اسمبلی کے اراکین کی طرح بلدیاتی اداروں کے نمائندوں کو بھی تنخواہیں اور مراعات دیے جائیں ۔جہاں فرائض ہوتے ہیں وہاں حقوق بھی ہوتے ہیں لیکن بدقسمتی سے بلدیاتی نمائندگان اپنی جیبوں سے عوام کے مسائل حل کررہے ہیں۔ صوبائی صدر حمایت اللہ مایار نے کہاکہ ضلع کونسل بلدیاتی اداروں کی بنیادی ایکائی ہے۔اگر اسے ختم کرنے کی کوشش کی گئی تو پورے صوبے میں احتجاج کیا جائے گا۔ بلدیاتی اداروں کا مقصد عوام کو گھر کی دہلیز پر سہولیات فراہم کرنا ہے۔ انہوں نے کہاکہ ہم لوکل گورنمنٹ ایکٹ 2013میں مثبت ترامیم کی حمایت کرتے ہیں لیکن کچھ عناصر اختیارات صرف افسروں کو دینا چاہتے ہیں جو کسی بھی صورت قبول نہیں ہے۔انہوں نے کہاکہ عوامی نمائندوں کو عوام کے مسائل کا احساس ہوتا ہے اور بلدیاتی اداروں کو مضبوط کر کے ہی عوامی مسائل میں کمی آسکتی ہے۔انہوں نے کہاکہ2015سے اب تک جتنے بھی اضلاع کو ترقیاتی بجٹ میں جو کٹوتی کی گئی ہے وہ انہیں جلد از جلد یقینی بنائی جائے تاکہ مفاد عامہ کے ادھورے منصوبے جلد از جلد پایہ تکمیل تک پہنچا یا جاسکے۔انہوں نے کہاکہ اختیارات کی نچلی سطح تک منتقلی سے صوبائی اور قومی اسمبلی کے ممبران پر80فیصد بوجھ کم ہو گیا ہے۔انہوں نے کہاکہ بعض عناصر کی جانب سے ضلع کونسل کے خاتمے کی تجاویز سامنے آ رہی ہے جو کہ افسوسناک امر ہے۔اگر ضلع کونسل نہ ہو تو تمام اختیارات ڈپٹی کمشنر کے پاس ہونگے اور عوام کو اپنے مسائل کے لئے افسر شاہی کے دفاتر کے چکر کاٹنے پڑیں گے۔انہوں نے کہا کہ لوکل کونسل ایسوسی ایشن بلدیاتی اداروں کو مضبوط بنانے اور انہیں اختیارات دلانے اور عوام کو گھر کی دہلیز پر سہولیات اور انصاف کی فراہمی کے لئے پرہر فورم پر آواز اٹھائے گی۔دریں اثناء لوکل کونسل ایسوسی کے ڈویژنل اجلاس میں نیوزی لینڈ اور ہالینڈ میں مسلمانوں پر کئے گئے مظالم کی سختی سے مذمت کی گئی اور شہداء کے ایصال ثواب کے لئے فاتحہ خوانی بھی کی گئی۔اجلاس میں ضلع ہری پور کے ناظم ناصر کیانی کی وفات پر گہرے رنج و غم کا اظہار کیا گیا اور ان کی بلند درجات کے لئے دعا کی گئی۔
اس خبر پر تبصرہ کریں۔ چترال ایکسپریس اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں
دوسروں کے ساتھ اشتراک کریں

یہ خبر بھی پڑھیں

موجودہ مہنگائی کے تناسب سے پنشن میں 100فیصداضافہ کیاجائے۔آل پاکستان پنشنرزایسوسی ایشن صوبائی صدر فدامحمددرانی

چترال(نمائندہ چترال ایکسپریس)آل پاکستان پنشنرزایسوسی ایشن کے صوبائی صدرخیبرپختونخوا فدامحمددرانی نے چترال میں منعقد ایک ...


دنیا بھر سے

error: مغذرت: چترال ایکسپریس میں شائع کسی بھی مواد کو کاپی کرنا ممنوع ہے۔