وزیرزادہ اور کیلاش کمیونیٹی سے متعلق مولانا عبدالاکبر اور مولانا ھدایت الرحمن کی پریس کانفرس مایوس کن اور افسوس ناک ہے۔ارشاد مکرر – Chitral Express

کمرشل اشتہارات/ اعلانات

صفحہ اول | تازہ ترین | وزیرزادہ اور کیلاش کمیونیٹی سے متعلق مولانا عبدالاکبر اور مولانا ھدایت الرحمن کی پریس کانفرس مایوس کن اور افسوس ناک ہے۔ارشاد مکرر

وزیرزادہ اور کیلاش کمیونیٹی سے متعلق مولانا عبدالاکبر اور مولانا ھدایت الرحمن کی پریس کانفرس مایوس کن اور افسوس ناک ہے۔ارشاد مکرر

دروش (نمائندہ چترال ایکسپریس) ممتاز سیاسی وسماجی شخصیت پاکستان تحریک انصاف کے رہمنا ارشاد مکرنے مولانا عبدالاکبر چترالی اور مولانا ہدایت الرحمن کی نئے بھرتی ہونے والے کلاس فور ملازمین۔چترال سے اقلیتی رکن اسمبلی اور کیلاش کمیونیٹی کے خلاف بیان پر ردعمل دیتے ہوئے کہا ہےآخر بھرتی ہونے والے بھی چترال کےغریب باشندے ہی ہیں ۔پریس کانفرس سے لگتا ہے کہ مولانا صاحبان عوام دشنمی کو قوم کی خدمت سمجھتے ہیں اور یہ پریس کانفرنس نئے بھرتی ہونے والے غریب کلاس فور ملازمین کے منہ سے نوالہ چھیننے کی کوشش کے سوا کچھ نہیں۔اُنہوں نے دن رات خواب میں مولانا صاحبان کو وزیر ذادہ ہی نظرآرہا ہے بس کیلاش قوم کو دھمکی دینے سے پہلے مولانا حضرات کو یہ سوچنا چاہیے کہ کیلاش ہی چترال کے قدیم شہزادے ۔حکمران اور اسی علاقے کے اصل باشندے ہیں۔چترال کے اکثر دیہات اور گاؤں کے نام آج بھی کیلاش زبان یا کیلاش لوگوں کے نام پرہیں۔دین اسلام بھی ہرگز کسی اقلیت کی توہین اور ڈارنے کی اجازت نہیں دیتا۔مذہب کے علم برداروں کو چاہیے کہ وہ اسلام کو صحی معنوں میں سمجھنے کی کوشیش کرے اور مذہبی بلیک ملینگ بند کرے اوراقلیت سے حسن سلوک کے حوالے نبی صل اللہ علیہ کے تعلیمات پر عمل کرے ۔فی الحال وزیر زادہ ہی چترال کا اصل حکومتی نمائیدہ ہے ان کوکام کرنے دے یہ بھی قوم کی خدمت ہوگی اپوزیشن میں بیٹھ کر مولانا صاحبان کا صرف ڈیسک بجانا اورکاموں پر رخنہ ڈالنا قوم کی کوئی خدمت نہیں

اس خبر پر تبصرہ کریں۔ چترال ایکسپریس اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں
دوسروں کے ساتھ اشتراک کریں

یہ خبر بھی پڑھیں

موجودہ مہنگائی کے تناسب سے پنشن میں 100فیصداضافہ کیاجائے۔آل پاکستان پنشنرزایسوسی ایشن صوبائی صدر فدامحمددرانی

چترال(نمائندہ چترال ایکسپریس)آل پاکستان پنشنرزایسوسی ایشن کے صوبائی صدرخیبرپختونخوا فدامحمددرانی نے چترال میں منعقد ایک ...


دنیا بھر سے

error: مغذرت: چترال ایکسپریس میں شائع کسی بھی مواد کو کاپی کرنا ممنوع ہے۔