پندرہ اپریل تک مطالبات منظور نہیں ہوئے ، تو صوبائی قائدین کی طرف سے فیصلہ آنے پر تمام ہسپتالوں میں مکمل ہڑتال ہوگی۔صدر پیرا میڈیکس ایسو سی ایشن چترال سردار ولی – Chitral Express

کمرشل اشتہارات/ اعلانات

صفحہ اول | تازہ ترین | پندرہ اپریل تک مطالبات منظور نہیں ہوئے ، تو صوبائی قائدین کی طرف سے فیصلہ آنے پر تمام ہسپتالوں میں مکمل ہڑتال ہوگی۔صدر پیرا میڈیکس ایسو سی ایشن چترال سردار ولی

پندرہ اپریل تک مطالبات منظور نہیں ہوئے ، تو صوبائی قائدین کی طرف سے فیصلہ آنے پر تمام ہسپتالوں میں مکمل ہڑتال ہوگی۔صدر پیرا میڈیکس ایسو سی ایشن چترال سردار ولی

چترال ( محکم الدین ) صدر پیرا میڈیکس ایسو سی ایشن چترال سردار ولی نے کہا ہے ۔ کہ حکومت کی طرف سے اُن کے جائز مطالبات منظور نہ ہونے کی صورت میں وہ بھر پور احتجاج پر مجبور ہو ں گے ۔ جس کی تمام تر حالات کی ذمہ داری محکمہ صحت پر ہو گی ۔ اپنے ایک پریس ریلیز میں انہوں نے صوبائی حکومت سے مطالبہ کیا ۔ کہ ون ٹائم پروموشن پر عملدر آمد کیا جائے ۔ صوبائی پیرا میڈیکس آفس کھولا جائے ۔ ہسپتالوں کی نجکاری واپس لی جائے ۔ پیرامیڈیکس کونسل قائم کیا جائے ۔ پی جی پی آئی میں بی ایس کلاسز کا اجرا ء اور ڈپلومہ کو ایف ایس سی کے مساوی دلایا جائے ، پیرا میڈیکس کے فرسٹ ایڈ سنٹرز پر چھاپے بند کئے جائیں ۔ قبائلی علاقہ جات کے ضم شدہ اضلاع میں پیرا میڈیکس پوسٹ بڑھائے جائیں ، ان سروس ڈگری ہولڈر پیرا میڈیکس کو گریڈ 17میں ون ٹائم پروموشن دی جائے ۔ کیٹگری بی کے حامل پیرا میڈیکس کیلئے این او سی کی شرط ختم کی جائے ۔ انہوں نے کہا ۔ کہ میڈیکل فیکلٹی کے تمام امتحانات میں پیرا میڈیکس کی ڈیوٹیاں لگائی جائیں ۔ ضلع باجوڑ میں نوکری سے فارغ کردہ پیرا میڈیکس کو فوری بحال کیا جائے ۔ انہوں نے کہا ۔ کہ پندرہ اپریل تک اگر یہ مطالبات منظور نہیں کئے گئے ۔ تو صوبائی قائدین کی طرف سے فیصلہ آنے پر تمام ہسپتالوں میں مکمل ہڑتال ہوگی ۔ اور زبردست احتجاج کیا جائے گا ۔

اس خبر پر تبصرہ کریں۔ چترال ایکسپریس اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں
دوسروں کے ساتھ اشتراک کریں

یہ خبر بھی پڑھیں

موجودہ مہنگائی کے تناسب سے پنشن میں 100فیصداضافہ کیاجائے۔آل پاکستان پنشنرزایسوسی ایشن صوبائی صدر فدامحمددرانی

چترال(نمائندہ چترال ایکسپریس)آل پاکستان پنشنرزایسوسی ایشن کے صوبائی صدرخیبرپختونخوا فدامحمددرانی نے چترال میں منعقد ایک ...


دنیا بھر سے

error: مغذرت: چترال ایکسپریس میں شائع کسی بھی مواد کو کاپی کرنا ممنوع ہے۔