fbpx

عالمی ادارہ صحت کا ماحولیاتی نمونوں کے لیبارٹری ٹیسٹ کی رپورٹ کے بعد شاہین مسلم ٹاؤن پشاورکی سیوریج لائن میں پولیو وائرس کی عدم موجودگی کا اعلان

پشاور)چترال ایکسپریس) عالمی ادارہ صحت نے ماحولیاتی نمونوں کے لیبارٹری ٹیسٹ کی رپورٹ کے بعد شاہین مسلم ٹاؤن پشاورکی سیوریج لائن میں پولیو وائرس کی عدم موجودگی کا اعلان کیا ہے جوگزشتہ ڈیڑھ سال کے دوران یہ انسدادپولیو کی کاوشوں میں سب سے بڑی کامیابی ہے ایمر جنسی آپریشن سنٹر خیبر پختونخوا سے جاری ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ گزشتہ ڈیڑھ سال کے دوران پشاور کی یونین کونسل شاہین مسلم ٹاؤن کی سیوریج لائن سے حاصل موحولیاتی نمونوں کے لیبارٹری تجزیہ میں یہاں مسلسل پولیو وائرس کی موجودگی کی تصدیق ہوتی رہی جس کی وجہ سے شاہین مسلم ٹاؤن اور اس کے گرد و نواح پر مشتمل یہ علاقہ پولیو وائرس کی منتقلی (ٹرانسمشن)کے حوالے سے نہ صرف خطہ بلکہ بین الاقوامی طور پر خطرناک قرار دیا جاتارہا انسداد پولیو کے لئے وزیر اعظم کے فوکل پرسن بابر بن عطاء کی ہدایت پر ایمر جنسی آپریشن سنٹر خیبر پختونخوا کے کو آرڈینیٹرکیپٹن (ر)کامران احمد آفریدی کی سرکردگی میں محکمہ صحت، ای پی آئی، معاون اداروں اور خصوصا ًضلعی انتظامیہ کے فعال تعاون سے شاہین مسلم ٹاؤن کی سیوریج لائن سے پولیو وائرس کے خاتمے کے لئے ایک جامع پالیسی مرتب کی گئی جس کے تحت پولیو کے لحاظ سے پشاور کی 18ہائی رسک یو نین کونسلوں پر مشتمل ایک علیحدہ انتظامی یونٹ شاہین مسلم ٹاؤن سرکل کے قیام سمیت متعدد اقدامات اٹھاکر دن رات کاوشیں کی گئیں عالمی اداروہ صحت (ڈبلیو ایچ او) کے زیراہتمام شاہین مسلم ٹاؤن کی سیوریج لائن میں پولیو وائرس کی موجودگی کا سراغ لگانے کے لئے یہاں سے حاصل ماحولیاتی نمونوں کے لیبارٹری تجزیہ کے سلسلے میں رواں ماہ کی 10تاریخ کوحاصل کئے گئے نمونے ٹسٹ کیلئے لیبارٹری بھجوائے گئے تھے جس کی رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ شاہین مسلم ٹاؤن کی سیوریج لائن میں پولیو وائرس موجود نہیں جو ڈیڑھ سال میں انسداد پولیو کے خلاف سب سے بڑی کامیابی قرار دی جارہی ہے انسداد پولیو کے لئے وزیراعظم کے فوکل پرسن بابر بن عطاء نے اپنے ایک ٹویٹ پیغام میں اس کامیابی پر انسداد پولیو ٹیم کی کارکردگی کو سراہتے ہوئے شاہین مسلم ٹاؤن کی سیوریج لائن میں پولیو وائرس کے خاتمہ سے متعلق عالمی ادارہ صحت کی رپورٹ کو ایک بڑی کامیابی قراردیا ہے جس پر انہوں انسداد پولیو ٹیم پر مبارکباد دی ہے دریں اثناء کوآرڈینٹر ای او سی کامران احمد آفریدی نے اس کامیابی کو بہترین ٹیم ورک کا نتیجہ قرار دیا ہے انہوں نے اس عزم کا اظہار کیا کہ پولیو کا مکمل خاتمہ کرکے اپنے بچوں کو معذوری سے محفوظ کرنا حکومت کا اصل ہدف ہے جس کے لئے تمام تر وسائل اور توانائیاں بروئے کار لائی جارہی ہیں۔

اس خبر پر تبصرہ کریں۔ چترال ایکسپریس اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں

متعلقہ خبریں/ مضامین

إغلاق