fbpx

جامعہ  چترال سے اردو تحقیقی مجلہ ’’جرنل آف لینگوئج اینڈ لیٹریچر‘‘ کی  اشاعت

چترال(نمائندہ چترال ایکسپریس)جامعہ چترال کا تحقیقی مجلہ جرنل آف اردو لینگوئج  اینڈ  لیٹریچر منظرعام پر آگیا ہے۔ جس میں قومی سطح  پر  بیسیوں ممتازپروفیسروں اور محققیین نےاپنی مقالات شائع کی ہیں۔ اس حوالے سے جامعہ چترال کے پبلک  ریلیشن آفس سے جاری ہونے والے ایک  پریس ریلیز کے مطابق ایڈیٹر پروفیسر ڈاکٹر بادشاہ منیر بخاری کا کہنا تھا  کہ اردو زبان میں جوخوبصورتی اورکشش ہے وہ بہت کم زبانوںمیں ہے۔اس زبان کی حفاظت اورفروغ کی کوشش ہم سب کو کرنی چاہیے۔ انہوں نےمزید کہا کہ کسی بھی تعلیمی ادارے کی پہچان اس کی تحقیقی سرگرمیوں سے ہوتی ہے اورریسرچ جرنل اس کے اظہار کا بہترین ذریعہ  ہوتا ہے اور جامعہ چترال یہ کام بخوبی کررہاہے۔انہوں نے اردوکوسائنس،قانون ،کامرس اور ٹیکنالوجی کی زبان بنانے پر بھی زوردیا۔اورطلبہ کواردو زبان  لکھنے اوربولنے میں مہارت پیداکرنے کے لئے ادبی رسائل اورمجلات  کے مطالعے کی ترغیب دی۔

مجلہ  کے  مندرجات  کا ذکر کرتے  ہوئے انہوں  نے کہا  کہ جامعہ چترال کے بینر تلے شائع ہونے والے اس رسالے کے مندرجات قاری کی توقع کے عین مطابق شعر و شاعری، فکشن، فلسفے اور تنقید کے مضامین کا احاطہ کرتے ہیں۔ مقالات کے انتخاب  میں صحت،جدت و تنوع  اور استحقاقی  پہلوں کو مدنظررکھا گیا  ہے ،جس کا اندازہ شائع  شدہ  مقالات  پر نظر ڈالنے سے ہوتا ہے۔ چنانچہ  پہلے شمارے میں ’’ منشا یاد کے افسانوں میں نسوانی کردار‘‘ ، پریم چند کا افسانہ ’’بھوت‘‘ کا نفسیاتی جائزہ‘‘  ، اور ’’شہر دانش‘‘ اور بے چہرگی کا المیہ وغیرہ جیسے دلچسپ  مقالات  شامل  کئے گئے  ہیں۔

پریس  ریلیز  کے  مطابق  مجلہ  کی  اشاعت  کو  ملکی علمی  وادبی  حلقوں  میں  پزیرائی  مل رہی  ہے اور مختلف  شعبہ  ہائے زندگی  سے  تعلق  رکھنے والے لوگوں نے مجلہ  کی اشاعت  پر اطمینان  کا اظہار کیا  ہے ۔جامعہ  پشاور  کے سابق  پروفیسر اوراردو زبان  کے ممتاز شاعر وادیب  پروفیسر نذیر تبسم نے جامعہ  چترال  کے  شعبہ  اردو کوفعال اورمتحرک شعبہ قراردیتے ہوئے اس کی سرگرمیوں پرخوشی کااظہار کیا ہے  اوراردوجرنل کو شعبہ اردو کے سفرمیں ایک سنگ میل قراردیا  ہے ۔ان کا مزید کہنا تھا کہ اتنی مختصر مدت میں اردو زبان کےحوالے سے اس  قسم  کا  تحقیقی کام    جامعہ چترال کے انتظامیہ کی حسن ادارت اورذوق ادب کی عمدہ مثال ہے۔

واضح ہوکہ اردوجرنل پہلے دوشماروں میں اٹھائیس مقالات کوشامل کیا گیا  ہے. جنہیں پیرریویو کے بعد خالص میرٹ کی بنیاد پراشاعت کے لیےچنا گیا ہے ۔بین الاقوامی علمی حلقوں تک مجلہ کی رسائی اور  تحقیق کے فروغ  کے لیے  مجلہ کو  crossref.org, goggle scholar اور  crosssmark  سمیت  مختلف بین الاقوامی  ڈیجیٹل نیٹ ورکس کے ساتھ  منسلک کردیا گیا ہے اور افادہ عام کی غرض سے  مجلہ کو ویپ سائٹ   www.jull.uoch.edu.pk  پراپ لوڈ کر دیا گیا ہے۔ جہاں سے مطلوبہ  تحقیقی  مقالات کو مفت ڈاون لوڈ کیا جاسکتا  ہے۔

جرنل آف ریلیجئیس سٹڈیز ، جرنل آف لینگوئسٹک اینڈ لیٹریچراور جرنل آف اردو لینگوئج اینڈ لیٹریچر   کی کامیاب اشاعت کے بعد جامعہ چترال آئندہ چند دنوں میں مزید شعبوں میں کے تحقیقی مجلات جو    اشاعت کے لیے تیار ہیں ان کو شایع کرے گی  ۔

اس خبر پر تبصرہ کریں۔ چترال ایکسپریس اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں

متعلقہ خبریں/ مضامین

إغلاق