fbpx

گرمیاں شروع ہوتے ہی چترال میں بھکاریوں کی آمد شروع,ضلعی انتظامیہ سے نوٹس لینے کا مطالبہ

چترال(نمائندہ چترال ایکسپریس)جوں جوں موسم گرما اپنی شدت میں اضافہ کررہی ہے اور عید کے قریب آتے ہی چترال میں باہر سے آنے والے بھکاریوں کی آمد کا سلسلہ بھی جاری ہے۔ ان میں سے زیادہ ترخواتین اور کم سن لڑکیاں شامل ہے۔ چترال میں گداگری کو انتہائی معیوب سمجھا جاتا ہے اس لئے یہاں مقامی بھکاریوں اورگداگروں کی تعداد نہ ہونے کے برابر ہے،جبکہ گزشتہ دوتین برسوں کے دوران باہر کے اضلاع سے بھکاریوں کی بڑی تعداد چترال کا رخ کر رہی ہے ۔ پچھلے سال جب بڑی تعداد میں باہر کے علاقوں سے بھکاری چترال وارد ہوئے تو میڈیا پر اس بات کو ہائی لائیٹ کرنے پر ضلع انتظامیہ نے انہیں گاڑیوں میں بھر کر دوبارہ چترال سے باہر بھیجا تھا مگر اب پھر سے اس تعداد میں اضافہ ہورہا ہے۔ چونکہ ان بھکاریوں کی وجہ سے یہاں پر مختلف قسم کی سماجی برائیاں جنم لے رہی ہے اس لئے سماجی حلقے ضلعی انتظامیہ سے مطالبہ کررہے ہیں کہ ڈاؤن ڈسٹرکٹ سے آنے والی مسافر گاڑیوں پر نظررکھی جائے اوران بھکاریوں کوراستے ہی میں واپس کیا جائے جبکہ جو چترال میں وادر ہوئے ہیں ان کو فورا ڈی پورٹ کیا جائے۔ یاد رہے پچھلے سال یہ بھکاری صرف چترال ٹاؤن تک محدود تھی اب آتے ہی اپر چترال سے ہیڈ کوارٹر بونی اور مستوج تک پھیل گئے ہیں۔

اس خبر پر تبصرہ کریں۔ چترال ایکسپریس اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں

متعلقہ خبریں/ مضامین

إغلاق