fbpx

پولیو کے حوالے سے بنوں ڈویژن حساس ترین قرار، بنوں ڈویژن سے رواں سال میں 25پولیو کیس رپورٹ ہوئے

پشاور(چترال ایکسپریس)بنوں ڈویژن میں 25 پولیو کیسز سامنے آنے کے بعد خیبر پختونخوا کے بنوں ڈویژن میں 22جولائی سے خصوصی انسداد پولیو مہم شروع کرنے کا فیصلہ کیا گیاہے مہم کے دوران 4لاکھ 58ہزار466بچوں کو پولیو سے بچاؤ کے قطرے پلائے جائیں گے اس بات کا فیصلہ ایمر جنسی آپریشن سنٹر(ای او سی) خیبر پختو نخوا میں منعقدہ اعلیٰ سطح اجلاس میں کیا گیا جس کی صدارت ای او سی کوآرڈینیٹر کیپٹن(ر) کامران احمد آفریدی نے کی اس اہم اجلاس میں ڈائریکٹر ای پی آئی ڈاکٹر اکرم شا ہ اور دیگر معاون اداروں کے اعلیٰ حکام اورنمائندوں نے شرکت کی اجلاس میں حال ہی میں سامنے آنے والے پولیو کیسوں کا تفصیلی جائزہ لیا گیااور والدین کا اپنے بچوں کو پولیو قطرے نہ پلانا سب سے بڑی وجہ قرار دی گئی پولیو وائرس کی منتقلی کو روکنے کے لئے پے درپے مہمات کرائے جائیں گے اس لئے بنوں، لکی مروت اور شمالی وزیرستان میں انسدادپولیو مہم چلائی جائے گی جس کے لئے تمام تر انتظامات مکمل کر لے گئے ہیں مہم کو موثر بنانے کے لئے تربیت یافتہ ہیلتھ ورکرز پر مشتمل 2ہزار147ٹیمیں تشکیل دی گئی ہیں جن میں 1ہزار932موبائل ٹیمیں،110فکسڈ ٹیمیں، 93ٹرانزٹ اور12رومنگ ٹیمیں شامل ہیں ان ٹیموں کی موثر نگرانی کے لئے 505ایریا انچارجز کی تعیناتی عمل میں لائی گئی ہے انسدادپولیو مہم کو کامیابی سے ہمکنار کرنے کے لئے پولیس اور دیگر قانون نافذ کرنے والے اداروں کی خدمات بھی حاصل کی جائیں گی اس ضمن میں ڈپٹی کمشنر اورڈی ایچ او کی سرابراہی میں خصوصی عوامی آگہٰی مہم بھرپور طریقے سے چلائی گئی ہیں والدین سے التماس ہے کہ وہ اپنے پانچ سال تک کہ بچوں کوہر پولیو مہم کے دوران پولیو سے بچاؤ کے دو قطرے ضرور پلوائے تاکہ وہ ان موذی مرض سے ہمیشہ کے لئے محفوظ رہ سکے۔

اس خبر پر تبصرہ کریں۔ چترال ایکسپریس اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں

متعلقہ خبریں/ مضامین

إغلاق