fbpx

ایم این اے مولانا عبدالاکبرچترالی کا چیف سیکرٹری کی جانب سے لینگ لینڈ سکول اینڈ کالج کے پرنسپل کے بارے میں لائے گئے یکطرفہ فیصلے پر شدید رد عمل کا اظہار

چترال(نمائندہ چترال ایکسپریس)ایم این اے چترالی نے لینگ لینڈسکول کے بارے میں حکومت کے یکطرفہ فیصلے کو مسترد کردیا، انہوں نے کہا کہ اسکول میں تنازعہ کے بارے میں چیف سکریٹری کا فیصلہ یکطرفہ تھا کیونکہ دوسرے اسٹیک ہولڈرز کو اعتماد میں نہیں لیا گیا تھا۔
اُنہوں نے کہا کہ ہم نام نہاد بورڈ آف گورنر اور چیف سکریٹری کے فیصلے کو مکمل طور پر مسترد کرتے ہیں اور چیف سیکرٹری کون ہوتے ہیں ایسا فیصلہ کرنے والا۔اُنہوں نے کہا کہ میں اسٹیک ہولڈر ہوں؟چیف سیکرٹری ایسا نہیں کرسکتے انہوں نے واضح طور پر کہا کہ سکول اساتذہ کی عملی طور پر عدم موجودگی میں انتظامیہ نے جو فیصلہ لیا ہے وہ قابل قبول نہیں ہے۔
اُنہوں نے متنبہ کرتے ہوئے کہا کہ میں اس کی قطعاًاجازت نہیں دوں گا کیوں کہ اصل اسٹیک ہولڈرزعلاقے کے منتخب نمائندے  والدین اور عمائدین ہیں ان سے ضرور مشورہ کیا جانا چاہئے تھا۔”
اُنہوں نے سوال کیا کہ ایک بورڈ آف گورنر جس نے سکول کی بہتری کے لئے کچھ نہیں کیا تھا سوائے اس کے کہ برطانوی پرنسپل کو دیئے گئے چندہ سے بھاری رقم کی منظوری دی جائے تو وہ ایسا یکطرفہ فیصلہ کس طرح لے سکتا ہے۔

اس خبر پر تبصرہ کریں۔ چترال ایکسپریس اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں

0 Reviews

Write a Review

متعلقہ خبریں/ مضامین

إغلاق