fbpx

گہیریت گول سے پانچ دن قبل اغواہونے والی شادی شدہ خاتون کو چترال پولیس نے چترال شہر سے برآمدکرلی

چترال (نمائندہ چترال ایکسپریس) ایون تھانہ کے حدود میں واقع گہیریت گول کے مٹھور بانڈہ میں پانچ دن قبل اغواہونے والی شادی شدہ خاتون کو چترال پولیس نے چترال شہر کے علاقہ مستجپاندہ سے برامد کرلی گئی جسے عدالت کے روبرو ریکارڈ بیان کرانے کے بعد ان کے بھائی کے حوالے کردیا گیا۔انہوں نے شوہر سمندر خان ساکن گہیریت گول کے خلاف خلع کا کیس عدالت میں دائر کرکے کئی مہینوں سے اپنے بھائی کے ساتھ رہائش پذیر تھی کہ 8نومبر کی شب ان کے شوہر نے آٹھ افراد کے ہمراہ ان کے گھرمیں گھس کر تمام افراد کو رسیوں سے باندھ کر انہیں اغوا کرکے چترال شہر لے گئے۔ ایس ایچ او ایون صاحب الرحمن نے جانفشانی سے مغویہ کو برامد کرنے اور ملزمان کی گرفتاری کے لئے کوششیں شروع کردی اور گزشتہ شب انہوں نے چترال شہر کے نواحی گاؤں مستجپاندہ سے راہبہ بی بی کو ایک گھر سے اپنی تحویل میں لے لیا مگران کا شوہر سمندر خان بھاگ نکلنے میں کامیاب ہوگئے جوکہ اب بھی روپوش ہیں۔ ایس ایچ او نے ملزم سمندر خان کے ساتھ شریک جرم ملزمان سید عالم زمان خان اور بہادرخان ساکنان گہیریت گول اور اصل دین ساکن ارندو گول کو سین لشٹ کے قریب سے گرفتارکرلیا جبکہ باقی چار ملزمان روپوش ہیں۔

اس خبر پر تبصرہ کریں۔ چترال ایکسپریس اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں

متعلقہ خبریں/ مضامین

إغلاق