fbpx

جنگلاتی ملبہ یعنی قومی سرمایہ ضائع ہو رہا ھے۔ارشاد مکرر

دروش( نمائندہ چترال ایکسپریس)معروف سیاسی و سماجی شخصیت ارشاد مکرر نے میڈیا سے سوختی لکڑیوں کی قلت کے حوالے سے بات کرتے ہوئے کہا کہ دروش چترال کے جنگلات میں بہت بھاری مقدارمیں ملبہ پڑا ہوا ہے خاص کر ارندو گول۔لنگوربٹ۔دامیل۔کنڈاؤ وغیرہ میں جو ملبہ پڑا ہے اس سے حکومت اورعوام کو بیک وقت تین طرح کا نقصان پہنچتا ھے۔ 1۔ قومی سرمایہ ضائع ہورہا ہے 2۔ اس ملبے کے نیچے دوبارہ کوئی پودا نہیں اُگتا 3۔ اتش زدگی کی صورت میں یہ ملبہ ایندھن کا کام دیتا ہےاورگھنا جنگل آن کی آن میں راکھ کا ڈھیربن جاتا ھے۔ لہذا اس ملبے کو یہان سے منتقل کرنا انتہائی ضروری ہے تاکہ جنگلات کو نقصان سے بچایا جاسکے اورمقامی لوگوں کے مسائل حل ہو۔جوکہ لکڑی کے ایندھن کے حصول میں خوارہوتے پھیررہے ہیں۔ فارسث ڈیپارمنٹ کے اعلی حکام خاص کر صوبائی وزیرجنگلات سید اشتیاق ارمڑ اوروفاقی وزیرماحولیات کو چاہیے کہ ان علاقوں کا تفصلی دورہ کرنے کے بعد اس سلسلے میں کوئی ایسی طریقہ کاروضع کریں جو حکومت اورعوام دونوں کیلئے فائدہ مند ہو

اس خبر پر تبصرہ کریں۔ چترال ایکسپریس اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں

متعلقہ خبریں/ مضامین

error: مغذرت: چترال ایکسپریس میں شائع کسی بھی مواد کو کاپی کرنا ممنوع ہے۔
إغلاق