تازہ ترین

یو نیورسٹی انتظامیہ کی لاعلمی اور نااہلی سے ان کا ایک قیمتی سال اورلاکھوں روپے ضائع ہوگئے ۔سید شبیر علی شاہ جان

چترال (نمائندہ چترال ایکسپریس) سویر دروش سے تعلق رکھنے والے عبدالولی خان یونیورسٹی کے طالب علم سید شبیر علی شاہ جان نے کہا ہے کہ یونیورسٹی انتظامیہ کی لاعلمی اور نااہلی سے ان کا ایک قیمتی سال اورلاکھوں روپے ضائع ہوگئے ہیں جبکہ یہ صورتحال یونیورسٹی کے چترال کیمپس میں دوسرے کئی طالب علموں کو بھی درپیش ہے۔ ایک پریس ریلیز میں انہوں نے کہا ہے کہ ایک سال قبل انہوں نے چترال کیمپس میں ایم۔ایس سی اکنامکس میں داخلہ لیا مگر ایک سال بعد انہیں بتایاگیا کہ یونیورسٹی نے رولز تبدیل کی ہے جس کے مطابق ان کا داخلہ منسوخ کیا گیا ہے ۔ انہوں نے کہاکہ رولز میں تبدیلی پر عملدرامد اسی تاریخ سے شروع ہوتی ہے جبکہ یونیورسٹی انتظامیہ کے مطابق رولز میں تبدیلی فروری 2015ء میں لائی گئی تھی مگر ان کا داخلہ ایک سال پہلے ہوا تھا۔ انہوں نے کہاکہ نئے رول کے مطابق اس طالب علم کوماسٹر کلاس میں داخلہ نہیں مل سکتا جس نے اپنے تعلیمی کیرئیر میں تھرڈ ڈیژن لیا ہو۔ انہوں نے یونیورسٹی انتظامیہ کی اس مشور ے کو مضحکہ خیز قرار دیتے ہوئے کہاکہ اب وہ ہمیں شہید بے نظیر یونیورسٹی میں پرائیویٹ داخلہ لے کر ایم ایس سی پاس کرنے کو کہتے ہیں۔ سید شبیر علی شاہ جان نے چیئر مین ہائیر ایجوکیشن کمیشن اور گورنر خیبر پختونخوا سے اپیل کی ہے کہ چترال کے طلباء طالبات کی قیمتی وقت اور ان کے والدین کی محنت مشقت سے کمائی ہوئی روپے پیسے کی ضیاع پر عبدالولی خان یونیورسٹی انتظامیہ کے خلاف کاروائی کی جائے اور ان کو اپنے اپنے پروگرام اسی یونیورسٹی میں مکمل کرنے کی اجازت دی جائے جہاں وہ ایک سال پہلے ہی لگا چکے ہیں۔


اس خبر پر تبصرہ کریں۔ چترال ایکسپریس اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں

متعلقہ مواد

اترك تعليقاً

إغلاق