تازہ ترین

نوجوان شاعر جعفر حیات ذوقی کی شعری مجموعی “گل یاسمین”کی رونمائی تقریب

چترال (نمائندہ چترال ایکسپریس) چترال کے نوجوان شاعر جعفر حیات ذوقی کی شعری مجموعی “گل یاسمین”کی رونمائی کی تقریب میں کھوارکے ممتاز شعراء اور ادیبوں نے اسے کھوار ادب میں ایک گرانقدر اضافہ قرار دیتے ہوئے شاعر کی بلند خیالی کو سراہتے ہوئے کہا کہ اپنی کم عمری کے باوجود انہوں نے اپنے کلام میں سنجیدہ موضوعات کو انوکھے انداز میں پیش کیا ہے اور ان کی شاعری میں کھوار کے متروک ہونے والے الفاظ ، استعارے اور تشبیہات کو نمایان خصوصیت قرار دیا۔ ٹاؤن ہال میں منعقدہ اس تقریب کے مہمان خصوصی ہاشو فاونڈیشن کے آر پی ایم سلطان محمود خان تھے جبکہ کھوار کے سینئر شاعر مولانگاہ نگاہ نے صدارت کی۔ کتاب پر صالح ولی آزاد کے علاوہ محمد جاوید حیات نے فنی تبصرے پیش کئے جبکہ انجمن ترقی کھوار کے صدر شہزادہ تنویر الملک ، محمد کوثر ایڈوکیٹ، عبدالولی خان ایڈوکیٹ، ظفر اللہ پرواز اور سعادت حسین مخفی نے بھی اپنے خیالات کا اظہار کیا۔ اس موقع پر مقررین نے کہاکہ کھوار زبان وادب کے لئے اس کتاب کو ایک اثاثہ قرار دیا اور کہاکہ شاعر کے کلام میں ندرت خیال اور منفرد اسلوب نے اسے اپنے ہم عصر نوجوان شاعروں میں ممتاز مقام عطاکرنے کا باعث بنے ہیں ۔انہوں نے کہاکہ ایسے ہی شاعر لوگوں کے دلوں میں ہمیشہ کے لئے زندہ رہتے ہیں جس طرح سولہویں صدی کے شعراء گل اعظم خان ، اتالیق محمد شکور غریب کے نام اب بھی زندہ جاوید ہیں۔ انہوں نے کتاب کی ڈیزائن اور طباعت کے معیار کی بھی تعریف کی ۔ مہمان خصوصی سلطان محمود خان نے اپنی طرف سے شاعر کو دس ہزار روپے انعام کا بھی اعلان کیا ۔ یہ بات قابل ذکر ہے کہ شاعر جعفر حیات ذوقی متحدہ عرب امارات میں چترالی کمیونٹی کی نمائندہ تنظیم اوورسیز پاکستانیز ویلفئیر فاونڈیشن کے سرپرست حاجی محمد ظفر کے چھوٹے بھائی ہیں۔ تقریب کی مالی معاونت سہارا آرگنائزیشن نے کی تھی۔



اس خبر پر تبصرہ کریں۔ چترال ایکسپریس اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں
اظهر المزيد

مقالات ذات صلة

اترك تعليقاً

إغلاق