تازہ ترین

ہم محض سڑک کی تعمیرکوتسلیم نہیں کریں گے ہمیں اپنا حق لینا آتا ہے

پشاور(نمائندہ چترال ایکسپریس)وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا پرویز خٹک نے کہا ہے کہ پاک چائنا اقتصادی راہداری شاہراہ کے منصوبہ پر خیبرپختونخوا کے تحفظات کے سلسلے میں وفاقی وزیر منصوبہ بندی احسن اقبال نے صوبائی حکومت سے رابطہ کیاہے۔ چھ جنوری کو وہ پشاور آرہے ہیں۔ تاہم ہم اپنے اس موقف پر ڈٹے ہیں کہ سنٹرل اکنامک کاریڈور میں جو مراعات اور سہولیات پنجاب اور دیگر صوبوں کودی جارہی ہیں وہی مراعات خیبرپختونخوا کو دینی ہوں گی۔ ہم محض سڑک کی تعمیرکوتسلیم نہیں کریں گے ہمیں اپنا حق لینا آتا ہے وفاق چھوٹے صوبوں کوان کا حق دے پاکستان تحریک انصاف کی موجودہ صوبائی حکومت نے ایزی لوڈ ، کمیشن خوری اور ایس ایم ایس کلچر کا خاتمہ کردیا ہے اسلئے ہمارے ترقیاتی منصوبے دیرپا اور معیاری ہوں گے گزشتہ دور میں ترقیاتی کاموں میں کرپشن ، ایزی لوڈ اور کمیشن کی وجہ سے تعمیراتی کاموں کے معیار کا بیڑہ غرق کردیا گیا تھا اور چند سال پہلے بننے والی سڑکیں اب کھنڈر بن چکی ہیں ان خیالات کا اظہار انہوں نے نوشہرہ میں تین الگ الگ مقامات نوشہرہ کینٹ ، نواں کلے نوشہرہ کلاں اور خویشگی پایاں میں منعقدہ جلسوں میں بطور مہمان خصوصی اپنے خطاب اور دو ٹی وی چینلز کواپنے خصوصی انٹرویوز میں کیا اس دوران نوشہرہ کینٹ کے جلسے میں پاکستان مسلم لیگ(ن) کے رہنما حاجی اسلم شاہ اور ان کے ساتھیوں جبکہ خویشگی پایاں کے جلسے میں اے این پی کے بلدیاتی کونسلرز تپہ خویشگی کے صدر پیر خادم حسین ، پیر تلاوت شاہ ، پیر ریاض علی ، محمد علی، حاجی تقسیم ، حاجی داد محمد خان، شیر عالم، کونسلر مرجان علی، حاجی جاوید،حاجی صالح محمد، شفیق، شاہ فہد،سریر احمد،ادریس خان، اور عبدالظہور، محمد عثمان، سمیع اﷲ، بلال، لعل زمین خان، خاتون کونسلرز ممتاز بی بی ، شیر زمان اور دیگر افراد نے ساتھیوں اور خاندانوں سمیت اے این پی اور دیگر پارٹیوں سے مستعفی ہو کر پاکستان تحریک انصاف میں باضابطہ شمولیت کا اعلان کیا جلسوں کے دوران وزیراعلیٰ کے ہمراہ صوبائی وزیر ایکسائز و ٹیکسیشن میاں جمشید الدین کاکا خیل، ضلع ناظم نوشہرہ لیاقت خان خٹک، نائب ضلع ناظم اشفاق خٹک ، زر عالم خان ضلع کونسلر حاجی نوشیر خان اعجاز خان،تحصیل کونسلر اور فواد خان غفر علی اور اسلم شاہ نے خطاب کیا۔ نواں کلے میں وزیر اعلی کا شاندار استقبال کیاگیا اور خویشگی چونگی سے جلوس کی شکل میں ان کونواں کلے لے جایاگیا۔ پرویز خٹک نے کہا کہ پاک چائنا اقتصادی راہداری کے حوالے سے وفاقی وزیر احسن اقبال کودوٹوک الفاظ میں کہا ہے کہ ہمیں صرف سڑک نہیں چاہیے ہمیں مکمل کاریڈور اور سہولیات اور مراعات چاہئیں۔ میں پرامید ہوں کے بات چیت کے ذریعے مسئلے حل ہوجائیں گے۔انہوں نے کہا کہ بجلی کے خالص منافع کی ادائیگی کے حوالے سے مرکز کے ساتھ بات چیت جاری ہے منافع چھ ارب سے اٹھارہ ارب ستر کروڑ روپے ہوچکاہے اوراس کے علاوہ بقایاجات کی مد میں بھی ایک سو ایک ارب روپے وفاق نے ہمیں دینے ہیں۔ یہ حتمی فیصلہ نہیں اس میں مزید اضافہ ہوگا انہوں نے کہا کہ اضافی گیس کے حوالے سے مرکز سے بات چیت جاری ہے انہوں نے کہا کہ امن وامان کی صورت حال پر صوبائی حکومت کڑی نظر رکھے ہوئے ہے ہمارا صوبہ حالت جنگ میں ہے جو ایک بین الاقومی جنگ ہے تاہم صوبائی حکومت امن کے قیام کے لیے بھر پور کوششیں کررہی ہے۔جلسوں سے وزیراعلیٰ نے اپنے خطاب میں کہا کہ سابقہ دور حکومت میں اقتدار میں شامل جن لوگوں کے پاس دس روپے اور دوکمرے کے مکان نہیں تھے وہ اب محلات کے مالک ہیں اور بعض نے بیرون ملک قوم کا پیسہ لے جا کر اپنے کاروبار شروع کئے ہیں ان لوگوں کے پاس یہ پیسہ کہاں سے آیا اس اندھیرنگر ی اور چوپٹ راج اور ایزی لوڈ کلچر نے صوبے کو بتاہ کیا ہے اور غریب عوام کا حق مارا ہے اب صاف ستھراکام ہو گا اور اس سلسلے میں صوبائی حکومت نے حکومتی نظام بالکل صاف و شفاف بنانے اور لوگوں کو مکمل انصاف دینے کی غرض سے مثبت اصلاحاتی ایجنڈے پر کام شروع کیا ہے اور عوام کے سامنے اپنے آپ کو جوابدہ بنا دیا ہے جبکہ ساری چیز یں عوام کے سامنے شیشے کی طرح واضح رکھی ہیں یہاں تک کے میر ے گھر کا خرچہ بھی معلوم کر سکتے ہیں اپنی بے مثال کارکردگی کی بناء پر آئند ہ بھی حکومت پاکستان تحریک انصاف کی ہوگی اور چور و لیٹرے دوبارہ اقتدار میں نہیں آئیں گے نوشہرہ میں بڑے بڑے ترقیاتی منصوبے شروع کئے گئے ہیں جس میں ملک کی سب سے پہلی فنی تعلیم کی یونیورسٹی یہاں پر قائم ہوئی ہے جس کے فارغ التحصیل طلبا روزگار کی تلاش میں کسی کے پیچھے نہیں دوڑیں گے بلکہ ان کی ضرورت ہر جگہ ہو گی انہوں نے کہاکہ نوشہرہ میں آٹھ کالجوں پر کام شروع ہے جبکہ نوشہرہ میڈیکل کالج فرنٹیر ورکس آرگنائزیشن کو دے دیا گیا ہے اور دو ارب روپے کی لاگت سے اس کی جلد تکمیل ہو جائے گی انہوں نے کہاکہ نوشہرہ بند پر ایک ارب روپے لاگت آئی ہے جبکہ پیر سباق اکوڑہ اور دیگر مقامات کی بھی منظوری ہو چکی ہے اس سے پہلے دریاؤں میں محض دیوار بنائی جاتی تھی جبکہ اب سیلاب سے بچاؤ کیلئے تقریباً50فٹ چوڑے بند تعمیر کئے جارہے ہیں وزیراعلیٰ نے کہا کہ کشتی پل کی منظور دے کر اس منصوبے کو بھی تعمیر کیلئے فرنیٹر ورکس آرگنائزیشن کے حوالے کردیا گیا ہے اور چھ مہینے میں تیار ہو جائے گا انہوں نے کہا کہ موجودہ حکومت نے سکولوں اور ہسپتالوں میں اساتذہ اور ڈاکٹروں کی حاضریاں یقینی بنائی ہیں اور اب ان کی حاضری لی جاتی ہے ڈاکٹروں کی تنخواہیں تین گنا بڑھائی گئی ہیں اور ہسپتالوں کو ہر لحاظ سے مکمل کررہے ہیں تاکہ ان میں صحیح طریقے سے مریضوں کا علاج ہو سکے نرسز اور دیگر سٹاف کی کمی کو پورا کررہے ہیں جبکہ ضلعی ہسپتالوں کو خود مختاری دے رہیں اور ان میں آزاد بورڈ ہوں گے سکولوں میں 13 ہزار کمروں کی کمی ہے جس کیلئے 12 ارب روپے فراہم کئے گئے ہیں تاکہ اس کمی کو پورا کیا جائے اور ہر پرائمری سکول میں چھ استاد اور چھ کمرے ہوں گے سرکاری ملازمتوں پر صرف قابل اور اہل لوگوں کو میرٹ بھرتی کرنے کی غرض سے این ٹی ایس سسٹم متعارف کرایا گیا ہے جبکہ پہلے سفارش پر بھرتیاں کی جاتی تھیں اور نتیجتاًمحکموں میں نااہل لوگ آتے تھے جو صرف نوٹ ڈھونڈتے ہیں اور کام نہیں جانتے وزیراعلیٰ نے کہاکہ پی ٹی آئی نے الیکشن سے پہلے عوام سے نظام کی تبدیلی کا وعدہ کیا تھا اور اسی پر عمل پیرا ہو کر ہم اس صوبے میں حقیقی نظام لانا چاہتے ہیں انہوں نے کہاکہ ان کے صوابدیدی اختیارات ختم ہوئے ہیں محکموں میں مداخلت نہیں ہورہی اور عوام کے مسائل ان کی دہلیز پر حل کرنے کیلئے بہترین بلدیاتی نظام صوبے میں نافذ کیا گیا ہے جس کے ذریعے ویلج، تحصیل اور ضلعی سطح پر اکثر عوامی مسائل حل ہوں گے ۔ تحریک انصاف کا مستقبل شاندار اورلوگ تحریک انصاف کی کارکردگی کو دیکھتے ہوئے تحریک انصاف میں شامل ہورہے ہیں۔ اور آئندہ انتخابات میں تحریک انصاف خدمت کے بل بوتے پر انشاء اللہ ایک بار پھر کلین سویپ کرے گی۔ اورمفاد پرستوں کے ٹولے کو چلتاکریں گے۔وزیراعلیٰ نے کہا کہ پی ٹی آئی نے صوبے میں ایک ارب پودے لگانے کا منصوبہ شروع کیا ہے جبکہ گزشتہ 68 سالوں میں محض کا غذات میں 60 کروڑ پودے لگے ہیں اور ہم اپنا ٹارگٹ اپنی حکومت میں ختم کریں گے انہوں نے کہاکہ صرف سرکاری محکموں میں بھرتیوں سے بے روزگاری ختم نہیں ہو سکتی ہم نے معاشی ترقی اور بے روزگاری کے خاتمے کیلئے صنعتیں لگانے کا پروگرام شروع کیا ہے اس سلسلے میں صرف موٹروے پر 10 ہزار کنال اراضی پر صنعتیں لگائی جائیں گی جبکہ اس طرح جلوزئی ، رسالپور، ڈیرہ اسماعیل خان اور صوبے کے دیگراضلاع میں کارخانے لگیں گے اور نئی صنعتیں لگانے والوں کو کافی مراعات دی جارہی ہیں اور اُمید ہے کہ اس اقدام سے اگلے سال تقریباً20 سے 25 ہزار لوگوں کو روزگار ملے گا انہوں نے کہا کہ بے روزگاری کے خاتمے کا یہی بہترین حل ہے کہ یہاں پر کارخانے لگیں مگر پہلے کسی نے اس طرف کوئی توجہ ہی نہیں دی وزیراعلیٰ نے کہاکہ صوبے میں احتساب کا شفاف نظام لایا گیا ہے اور اب کوئی چور سزا سے نہیں بچ سکے گا تاہم انہوں نے عوام سے کہا کہ وہ چوروں کی سفارش نہ کریں اور ان کو آزاد کرانے کی کوشش بھی نہ کریں انہوں نے کہاکہ تھانوں کا نظام عوام دوست بنایا گیا ہے اور وہاں پرکسی غریب کو مارا پیٹا نہیں جائے گا اور نہ کوئی جھوٹی ایف آئی آر کٹوائی جائے گی اور اگر کسی کو شکایت ہوئی تو وہ انہیں مطلع کرے اسی طرح پٹواریوں کو ایک سرٹیفکیٹ فراہم کیا گیا ہے جس میں ان سے انتقالات کرتے وقت رشوت نہ لینے کا حلف لیا جا تا ہے کیونکہ یہ وہ حکومت نہیں جس میں کسی سے پیسے لینے کا سوچا جائے ۔انہوں نے کہاکہ پشاور میں عمران خان نے کینسر کا بہترین ہسپتال قائم کیا جس میں 75 فیصد مفت علاج ہو گا دریں اثناء وزیراعلیٰ نے نوشہرہ میڈیکل کمپلیکس کا اچانک دورہ بھی کیا اور ہسپتال کے مختلف حصے دیکھے اور موقع پر متعلقہ حکام کو احکامات بھی جاری کئے۔وزیراعلیٰ نے نوشہرہ کلاں میں گورنمنٹ گرلز ڈگری کالج اور پرائمری سکول کے قیام اور گرلز ہائی سکول کی اپ گریڈیشن کا اعلان بھی کیا جبکہ سولر فلٹر یشن پلانٹس ، مواصلاتی منصوبوں، سولر سسٹم کی فراہمی ، سپورٹس گراؤنڈکی تعمیر کی بھی یقین دہانی کرائی۔


اس خبر پر تبصرہ کریں۔ چترال ایکسپریس اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں
مزید دیکھائیں

متعلقہ مواد

اترك تعليقاً

إغلاق