تازہ ترین

چترال پریس کلب سے تعلق رکھنے والے صحافیوں کے وفدکا صدر ظہیر الدین کی قیادت میں اے کے آر ایس پی کے کور آفس اسلام آباد کا دورہ

چترال(نمائندہ چترال ایکسپریس) آغاخان رورل سپورٹ پروگرام (اے کے آر ایس پی ) کے قائمقام جنرل منیجر شیر زاد علی حیدر نے کہا ہے کہ اے کے آر ایس پی کی گزشتہ تین عشروں کی کوششوں سے چترال اور گلگت بلتستان میں فی کس دیہی آمدنی میں دوگنا اضافہ کرنے، غربت میں پچاس فیصد تک کمی لانے اور تعلیم میں بہتری لانے میں کامیابی حاصل کی ہے جبکہ اس مرحلے میں لوکل سپورٹ تنظیموں (ایل ایس اوز ) کی تنظیمی، مالی اور پروگرام سازی کی استعداد کار میں اضافہ کرنے اور دوسرے سو ل سوسائٹی تنظیموں کی سپورٹ اور اس کے ساتھ ساتھ حکومتی اداروں کی استعداد کارمیں اضافہ کرنا بھی شامل ہے۔ اسلام آباد میں اے کے آر ایس پی کے کور آٖفس میں چترال پریس کلب سے تعلق رکھنے والے صحافیوں کو ادارے کی کارکردگی اور تنظیمی امور سے متعلق بریفنگ دیتے ہوئے انہوں نے کہاکہ 1980کی عشرے کے اوائل میں چترال اور گلگت بلتسان میں اپنی قیام کے بعد سے اب تک 4700دیہی تنظیمیں تشکیل دی جوکہ اب 64ایل ایس اوز کی شکل اختیارکرچکی ہیں جبکہ 70ہزار سے زئد مردوخواتین کو مختلف النوع شعبوں میں تربیت فراہم کی اور 3978کمیونٹی انفراسٹرکچر پراجیکٹ مکمل کئے جن سے تین لاکھ گھرانے براہ راست مستفید ہورہے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ 28میلین پھلدار اور غیر پھلدار پودے لگائے گئے جن میں اکثر ورائٹی مثلاکیکر ایسے ورائٹی ہیں جوکہ پہلی مرتبہ ان علاقوں کی جعرافیائی اور زمینی ساخت کے ساتھ ساتھ آب وہوا سے مطابقت رکھنے والی پودوں کے اقسام شامل ہیں۔ انہوں نے کہاکہ دیہی تنظیموں کو موبلائز کرنے کے نتیجے میں 500.53میلین روپے کی مجموعی ہوئی جبکہ 1822میلین روپے کے چھوٹے قرضے فراہم کرکے معیار زندگی میں بہتری اور غربت میں کمی واقع آئی۔ شیر زاد علی حیدر نے مزید کہاکہ اسوقت جاری پراجیکٹ میں حکومت کینیڈا کی مالی معاونت سے ELEY پراجیکٹ کے ذریعے نوجوانوں کی تربیت اور استعداد میں اضافہ کرنا، یو ایس ایڈ کی مدد سے گلگت بلتستان میں ستپارہ ڈویویلپمنٹ پراجیکٹ، حکومت خیبر پختونخوا حکومت کی مدد سے ہائیڈروپاؤر پراجیکٹ پر کام جاری ہے جس کے تحت چترال کے طول وغرض میں 55مقاما ت پر چھوٹے پن بجلی گھر تعمیر کئے جارہے ہیں جن کی مجموعی پیدوار 6.3میگاواٹ ہوگی۔ اسی طرح پاکستان غربت مکاؤ پروگرام کی مالی معاونت سے بھی غربت میں کمی لانے کے ساتھ ساتھ حالیہ قدرتی آفات سے متاثرہ دیہی انفراسٹرکچروں کی بحالی کا کام جاری ہے۔ شیر زاد علی حیدر نے اس بات پر خوشی کا اظہارکیا کہ چترال کے صحافی ڈیویلپمنٹ کے شعبے میں آگہی اور گہری نظر رکھتے ہیں۔ صحافیوں کے وفد کی قیادت چترال پریس کلب کے صدر ظہیرالدین کررہے ہیں۔

اس خبر پر تبصرہ کریں۔ چترال ایکسپریس اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں

متعلقہ مواد

اترك تعليقاً

إغلاق