تازہ ترین

ممکنہ برفافی تودوں کی پیش گوئی پر ضلعی انتظامیہ چترال کے تمام علاقوں میں پیشگی آگاہی مہم

ڈپٹی کمشنر چترال کے دفتر سے جاری ایک پریس ریلیز کے مطابق ضلع چترال میں بارشوں اور ممکنہ برفافی تودوں کی پیش گوئی پر ضلعی انتظامیہ چترال کے تمام علاقوں میںپیشگی آگاہی مہم بزریعہ مساجد، ایف ایم ریڈیو اور بصورت اشتھارات شروع کی جس کے نتجے میں 57 خاندان نقل مکانی کرکے محفوظ مقامات پر منتقل ہوگئے۔ اور ہنگامی صورت حال سے نمٹنے کے لئے ضلعے میں موجود تمام سکولوں اور دوسرے سرکاری بلڈنگز کی دستیابی کو یقینی بنایا گیا تاکہ ہنگامی صورت حال میں مقامی آبادی کو اس میں منتقل کیا جاسکے۔  یہاں یہ بات بھی قابل ذکر ہے کہ ریلیف کے ساماں یعنی ٹینٹ، کمبل، رضائی اور چٹائی وغیرہ پہلے ہی ضلعے کے طول و عرض میں مختلف جگہوں پر سٹور کئے جا چکے ہیں تاکہ ہنگامی صورت حال کی صورت میں بروقت امداد کو یقینی بنا یا جاسکے۔

Advertisements

اس سے قبل ضلع چترال کے طول و عرض میں موجود تمام سرکاری گوداموں میں اناج کا ذخیرہ حسب ضرورت کیا گیا تاکہ سڑکوں کی بندش وغیرہ کی صورت میں مقامی ابادی کو تکلیف نہ ہو، اس کے علاوہ یوٹیلٹی سٹور کارپوریشن کے ضلعے میں موجود تمام سٹورز میں ضروری اشیا کی دستیابی کو یقینی بنایا گیا۔

سڑکوں کی صفائی کا کام ضلعی انتظامیہ کے ٹریکٹرز، سی اینڈ ڈبلیو ڈیپارٹنمنٹ کی مشنری اور دوسرے محکمہ جات کی مشنری سے کل سے شروع ہے۔ ٹائوں ایریا میں تمام روڈز بشمول ہسپتال روڈز، بازار روڈز کی صفائی کا کام کل سے شروع ہے۔  ائیرپورٹ روڈ کی صفائی کے بعد ہنگامی صورت حال کے پیش نظر دو ہیلی پیڈ چترال ائیر پورٹ میں تیار کئے گئے  ہیں تاکہ امدادی کارروائی کے لئے آنے والے ہیلی کاپٹر اسانی سے اتر سکیں۔

چترال تادروش روڈ بند ہونے پر کل ٹریفک کے لئے کھول دی گئی تھی لیکن رات کو پھر تودہ گرنے سے سید آباد کے مقام پر بند ہے، جس پر این ایچ اے کے ذریعے کام کا آغاز کیا گیا ہے ۔

آج ڈسٹرکٹ ہیڈکوارٹر ہسپتال چترال کے وارڈز کی معائنے کے لئے دورہ کیا گیا اور ہنگامی صورت سے نمٹنے کے لئے کئے گئے انتظامات کا جائزہ لیا گیا۔

کل رات کو شیرشال لٹکوہ میں برفانی تودہ گرنے کے واقعے کے فورا بعد چترال لیویز کے بندے اور پولیس سٹیشن شعور کے اہل کار سب سے پہلے جائے حادثہ پر پہنچ کر مقامی آبادی کے ساتھ ملکرامدادی کاموں کا ۤآغاز کیا۔

چترال لیوی کے دو سو جوان اور چترال پولیس کے چار سو جوان ہنگامی صورت حال سے نمٹنے لئے امدادی کاموں میں حصہ لینے کے لئے تیار ہیں۔

 

اس خبر پر تبصرہ کریں۔ چترال ایکسپریس اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں

متعلقہ

اترك تعليقاً

زر الذهاب إلى الأعلى