تازہ ترین

سی اینڈ ڈبلیو ڈیپارٹمنٹ کے ذریعے ضلعے کے مختلف سڑکوں کو موٹر گاڑیوں کی ٹریفک کے لئے کھولنے کا کام جاری ہے۔ڈی سی چترال

چترال(نمائندہ چترال ایکسپریس)ڈپٹی کمشنر چترال کے دفتر سے جاری شدہ پریس ریلیز میں کہا گیا ہے کہ ضلعے کے دورافتادہ علاقوں میں رسائی نہ ہونے کی وجہ سے ابھی تک انفرسٹرکچر کے علاومتاثرہ گھروں کو پہنچنے والی نقصان اور مال مویشیوں کی ہلاکت کی معلومات اکھٹا کرنے میں دشواری پیش آرہی ہیں۔ پریس ریلیز کے مطابق شیشی کوہ کے گاؤں گاؤچ میں زوجہ افضل خان کی برفانی طوفان سے جان بحق ہونے اور حفیظ الرحمن ساکن کھشنڈر شیشی کوہ کا برفانی تودے کی زد میں آکر جان بحق ہونے کے بعد انسانی جانوں کی نقصان کی تعداد 12ہوگئی ہے ۔Image may contain: sky, snow, outdoor and nature ڈی سی چترال نے مزید کہا ہے کہ سی اینڈ ڈبلیو ڈیپارٹمنٹ کے ذریعے ضلعے کے مختلف سڑکوں کو موٹر گاڑیوں کی ٹریفک کے لئے کھولنے کا کام جاری ہے جن میں چترال دروش روڈ اور چترال بونی روڈ کو مکمل طور پر ٹریفک کے لئے کھول دئیے گئے ہیں جبکہ گرم چشمہ روڈ کو شوغور گاؤں تک صاف کی گئی ہے اور بونی موڑکھو، بونی تورکھو ، بونی مستوج،مستوج لاسپور، مستوج یارخون روڈوں کی صفائی کاکام جاری ہے ۔Image may contain: one or more people, outdoor and nature انہوں نے کہاکہ بونی مستوج روڈ کو پرواک کے مقام پر صاف کیا گیا ہے اور بڑے بڑے برفانی تودے او ر پہاڑوں سے پتھر گرنے سے کام میں دشوار ی پیش آرہی ہے۔ اسی طرح کالاش ویلی بمبوریت کو کھول دیا گیا ہے۔ پریس ریلیز میں بجلی کی بحالی کے بارے میں کہا گیا ہے کہ نیشنل گرڈ سے ضلعے کی بجلی کی بحالی اور مقامی بجلی گھر سے بجلی فراہم ابھی تک ممکن نہ ہوسکا ہے جس پر کام میں سڑکوں کی بحالی کے بعد تیز ی لائی جائے گی۔ ڈی۔ سی نے کہا ہے کہ چترال کے دورافتادہ وادیوں میں رہنے والے لوگ تنگ پہاڑوں کے اندر گاؤں واقع ہونے کی وجہ سے سخت خطرے سے دوچار ہیں اور مزید برفباری ہونے سے ان کے مشکلات میں اضافہ ہوسکتا ہے۔ دریں اثناء چترال میں اشیائے خوردنی اور ادویات سمیت روزمرہ ضرورت کی اشیاء ناپید ہونے کی اطلاعات موصول ہورہے ہیں جن میں دال، چاؤل، آٹا، سبزی، انڈے اور قدرتی گیس شامل ہیں جبکہ زندگی بچانے والی ادویات سمیت دوسرے ادویات کی شدید کمی کی شکایات بھی سامنے آرہے ہیں۔ لواری ٹنل کے اپروچ روڈ سے برف اور برفانی تودہ صاف نہ ہونے کی بنا پر ٹنل کو پبلک ٹرانسپورٹ کے لئے نہ کھولا جاسکا ہے ۔ جمعرا ت کے روز چترال آنے والی پی آئی اے کی شیڈول کے مطابق فلائٹ کو منسوخ کیا گیا ہے کیونکہ ائر پورٹ کے رن وے سے برف نہیں ہٹا دی گئی ہے۔ ایر پورٹ منیجر عبیداللہ نے کہا کہ جمعرات کے دن رن وے کی صفائی مکمل ہوگی اور جمعہ کے دن فلائٹ ممکن ہوسکتی ہے۔ دریں اثنا سی اینڈ ڈبلیو ڈویژن چترال کے ایگزیکٹیو انجینئر مقبول اعظم نے سڑکوں کی صفائی سے متعلق میڈیا کو بتایاکہ ضلعے کے تمام وادیوں میں سڑکوں سے برف ہٹا نے کا کام جاری ہے اور موسم سازگار رہنے کی صورت میں ایک ہفتے کے اندر اندر چترال کے بڑے شاہراہوں اور کئی مقامی سڑکوں کو موٹر گاڑیوں کی ٹریفک کے قابل بنایا جائے گا۔

Advertisements

اس خبر پر تبصرہ کریں۔ چترال ایکسپریس اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں

متعلقہ

اترك تعليقاً

زر الذهاب إلى الأعلى