تازہ ترین

اُ سامہ احمد وڑائچ کیریر اکیڈمی کی طرف سے اکیڈمی سے فارغ ہونے والے طلباء و طالبات میں سرٹیفیکیٹس کی تقسیم کی ایک پُر وقار تقریب

چترال (محکم الدین) اُ سامہ احمد وڑائچ کیریر اکیڈمی کی طرف سے اکیڈمی سے فارغ ہونے والے طلباء و طالبات میں سرٹیفیکیٹس کی تقسیم کی ایک پُر وقار تقریب ضلعی انتظامیہ چترال کے زیر انتظام گورنمنٹ سنٹینیل ماڈل ہائی سکول چترال کے ہال میں منعقد ہوئی ۔ جس میں ممتاز سکالر ڈاکٹرعنایت اللہ فیضی مہمان خصوصی اور ڈسٹرکٹ ایجوکیشن اافیسر چترال ممتاز وردک نے صدر محفل کے فرائض انجام دی ۔ اعزازی مہمانوں میں پرنسپل سنٹنیل ہائی سکول کمال الدین اور سابق تحصیل ناظم سرتاج شامل تھے ۔اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے مقررین نے کہا ۔ کہ شہید ڈپٹی کمشنر ایک ہمہ جہت شخصیت کے مالک تھے ۔ اور حقیقی معنوں میں خدمت کے جذبے سے سرشار تھے ۔ اس لئے انہوں نے چترال میں بہت کم عرصے میں وہ کام کئے ۔ جو ہمیشہ یاد رکھی جائیں گی ۔ جن میں سے ایک اہم کام چترال کے طلباء کو گھر کی دہلیز پر کریر کونسلنگ ، انٹری ٹسٹ ، آئی ایس ایس بی ، آئی ٹی سکلز سمیت کیڈٹ کالج کی ٹریننگ کی فراہمی کیلئے کیریر اکیڈمی کا قیام ہے ۔ انہوں نے کہا ۔ کہ شہید اُسامہ ایک وسیع وژن رکھتے تھے ۔ اور اُن کو اس بات کی فکر لاحق تھی کہ چترال کے پہاڑوں میں رہنے والے ان نوجوان طلبہ کو کس طرح شہری طلبہ کے ہم پلہ لایا جا ئے ۔ اور یہ وہ جذبہ تھا ۔ جس نے اُسے بہت کم وقت میں ایسا ادارہ قائم کرنے پر مجبور کیا ۔
مقررین نے کہا ۔ کہ انہوں نے آغا خان ایجوکیشن ، ڈگری کالج چترال ، کوئٹہ کالج کے تعاون سے اکیڈمی کا آغاز کیا ۔ اور یہ انتہائی خوشی کی بات ہے ۔ کہ ان اساتذہ کی کوششوں سے طلبہ اپنے اہداف حاصل کرنے میں کامیاب ہو رہے ہیں ۔ اس موقع پر اس بات کی بھی نشاندہی کی گئی ۔ کہ اکیڈمی کے افتتاح کے موقع پر بہت سارے سیاسی افراد نے اس کو آگے بڑھانے کیلئے کوشش کرنے کی یقین دھانی کی تھی ۔ لیکن آج وہ اپنے وعدے بالکل بھول چکے ہیں ۔ مہمان مقررین ممتاز وردک ، ڈاکٹر عنایت اللہ فیضی اور سرتاج احمد خان نے اس امر کا اظہار کیا ۔ کہ اُسامہ احمد وڑائچ نے جس کاوش سے ادارہ قائم کیا ہے ۔ انشااللہ یہ چترال کے طلباء کی تربیت اور رہنمائی کیلئے ہمیشہ قائم و دائم رہے گا ۔ اور اس کیلئے چترال سے باہر تعلیمی اداروں سے تعاون حاصل کرنے کی بھر پور کو شش کی جائے گی ۔ انہوں نے کہا ۔ اس حوالے سے ایڈورڈ کالج ، برٹش کونسل ، نمل یونیورسٹی ، جی آئی کے ، لمس اور آغاخان یونیورسٹی کے آوٹ ریچ پروگرام سے استفادہ کیا جائے گا ۔ اور اس شمع کو بجھنے نہیں دیا جائے گا ۔ انہوں نے کہا ۔ کہ قومیں تعلیم سے تبدیل ہوتی ہیں اور پہچانی جاتی ہیں ۔ اور اگر کردار سازی اور آدم گری پر کام ہوگا ۔ تو دنیا میں عزت اور امن دونوں ہو ں گے ۔ اور دنیا میں تعلیم ترقی اور تبدیلی کی بنیاد ہے ۔
انہوں نے کہا ۔ کہ آج دنیا میں نظریے کی جنگ جاری ہے ۔ اور اس جنگ کو جیتنے کیلئے تعلیم سب سے اہم ہتھیار ہے ۔ اس موقع پر اکیڈمی کے طلبہ نے اپنے تاثرات کا اظہار کیا ۔ اور اسے اپنے کریر کیلئے انتہائی اہم رہنمائی قرار دیا ۔ ڈسٹرکٹ فنانس آفیسر نے کہا ۔ کہ ہم سب کو شہید اُسامہ احمد وڑائچ کی طرح ملک میں ظلم ، نا انصافی کے خلاف لڑنے اور صحیح معنوں میں قوم کی ترقی کیلئے کوشش کرنی چاہیے ۔ جبکہ ایڈیشنل اسسٹنٹ کمشنر رخسانہ جبین نے شرکاء کا شکریہ دا کیا ۔ تقریب سے اکیڈمی کے لیکچرر ز تنزیل الڑحمن ، فداء الرحمن و دیگر نے خطاب کیا ۔ بعد آزان تربیت مکمل کرنے والے طلبہ میں سرٹفیکیٹس تقسیم کئے گئے ۔

Advertisements

اس خبر پر تبصرہ کریں۔ چترال ایکسپریس اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں

متعلقہ

اترك تعليقاً

زر الذهاب إلى الأعلى