تازہ ترین

خیبرپختونخوا کا صوبائی بجٹ 2017-18 عوام دوست بجٹ ہوگا۔ کوئی نیا ٹیکس نہیں لگایا گیا۔وزیر اعلیٰ خیبرپختونخوا پرویز خٹک

پشاور(چترال ایکسپریس)وزیر اعلیٰ خیبرپختونخوا پرویز خٹک نے کہا کہ خیبرپختونخوا کا صوبائی بجٹ 2017-18 عوام دوست بجٹ ہوگا۔ کوئی نیا ٹیکس نہیں لگایا گیا بلکہ ٹیکس نیٹ بڑھا دیا گیا ہے۔ Image may contain: 11 people, people standing and crowdگزشتہ چار سالوں میں پاکستان تحریک انصاف کی صوبائی حکومت نے ترقیاتی بجٹ ستر ارب سے بڑھا کر 126 ارب کردیا تاکہ ترقی کے ثمرات صوبے کے طول وعرض تک پہنچ سکیں اوریہی وجہ ہے کہ عوام تحریک انصاف اور صوبائی حکومت پر بھر پور اعتماد کے نتیجے میں جوق درجوق تحریک انصاف میں شامل ہورہے ہیں تحریک انصاف کی صوبائی حکومت صوبے کے بیشتر وسائل غریب اور پسماندہ عوام کی ترقی اور خوشحالی پر خرچ کررہی ہے۔ تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان اور تحریک انصاف کے منشور پر من وعن عمل کرتے ہوئے غریب عوام کی حالت زندگی بہتر بنانے اور ان کو تعلیم، صحت، زراعت کی ترقی، پینے کے صاف پانی ، روزگاراور بنیادی سہولیات کی فراہمی اور نوجوانوں اور خواتین کی ترقی پر توجہ مرکوز کی گئی ہے۔غریب عوام اور پی ٹی آئی کے غیور کارکن، نوجوان خواتین پی ٹی آئی کا سرمایہ ہیں اوریہی وجہ ہے کہ پی ٹی آئی کی مقبولیت میں روز بروز اضافہ ہورہا ہے۔ پی ٹی آئی 2018کے انتخابات میں صوبے کی تاریخ بدلے گی اور دوبارہ براسر اقتدار آئے گی اور ملک کے چاروں صوبوں اور وفاق میں بھی پی ٹی آئی حکومت بنائے گی اور عمران خان ہی اس ملک کے وزیر اعظم ہوں گے۔ صوبے کے طول و عرض میں مختلف دینی اور سیاسی جماعتوں کی قد آورشخصیات پی ٹی آئی میں شامل ہورہی ہیں۔ وہ زیارت کاکاصاحب کے علاقے گل ڈھیری میں فضل رحمن کے حجرے میں شمولیتی جلسے سے بطور مہمان خصوصی خطاب اورذرائع ابلاغ کے نمائندوں سے بات چیت کررہے تھے۔ اس موقع پر پی پی پی گل ڈھیری کے صدرشاہ رسول اپنے خاندان اور ساتھیوں امراز خان، خان نواز، ناصر خان، منور حسین،جمیل خان، نور حسین، جمروز خان اورجے یوآئی (ف) کے صدر افسرخان نے اپنے ساتھیوں اور خاندان سمیت اپنی پارٹیوں سے مستعفی ہوکر پی ٹی آئی میں شمولیت کا اعلان کیاImage may contain: 9 people, people standing۔و زیر اعلی پرویز خٹک نے ان کوپی ٹی آئی کی ٹوپیاں پہنائی۔ اس موقع پر صوبائی وزیر ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن میاں جمشید الدین کاکاخیل، ضلع ناظم نوشہرہ لیاقت خان ، ایم پی اے ادریس خٹک، وزیر اعلیٰ کے صاحبزادے اسحق خٹک، عاطف خٹک پی ٹی آئی کے صوبائی رہنما سید فرید اللہ شاہ، ریاض علی خان نے بھی خطاب کیا۔پرویز خٹک نے کہا کہ اللہ تعالی کے فضل وکرم سے پی ٹی آئی کی صوبائی حکومت اپنا پانچواں بجٹ پیش کرنے جارہی ہے۔ تحریک انصاف نے چار سالوں میں صوبے کے بیشتر وسائل غریب عوام کی حالت زندگی بہتر بنانے اور غریب عوام کو بہتر سے بہتر سہولیات کی فراہمی پر صرف کیے۔ انہوں نے کہا کہ خیبرپختونخو االلہ کے فضل وکرم سے ایک ماڈل صوبہ بننے جارہا ہے ابتک چار سالوں میں صوبے کے غریب کے لیے تعلیم صحت اور بنیادی سہولیات فراہم کرنے پر توجہ دی ۔ غریب کے بچوں کو سرکاری سکولوں اور کالجز میں بہتر تعلیم فراہم کرنے کے لیے اہم اقداما ت اٹھائے۔ جس میں پرائمری سکولوں میں اضافی کمروں چاردیواری، ٹائلٹس کی تعمیر، سکولوں کو شمسی توانائی سے منسلک کرنے ، اسی طرح اساتذہ کی کمی فرنیچر سائنس لیبارٹری اور دیگر سہولیات کی فراہمی پر صرف کیے۔انھوں نے کہا کہ اساتذہ کی کمی پوری کرنے کے لیے رواں بجٹ میں چودہ ہزار اساتذہ کی نئی آسامیاں پید ا کی گئی ہیں جبکہ محکمہ تعلیم سمیت تمام محکموں کوخالی آسامیوں کی تفصیلات فوری طو رپر صوبائی حکومت کوارسال کرنے اور ان اسامیوں کو پر کرنے کی ہدایت کی گئی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ طبقاتی نظام تعلیم کاخاتمہ کردیا۔ اور یہی غریب عوام کی جیت ہے اب غریب کا بچہ بھی مقابلے کی دوڑ میں شامل ہوگا۔انھوں نے کہا کہ اس ملک کا المیہ ہے کہ مٹھی بھر اشرافیہ اس ملک کے وسائل پر قابض ہے یہی وجہ ہے کہ ترقی کے ثمرات غریب عوام تک نہیں پہنچ رہے۔ انھوں نے کہا کہ پی ٹی آئی کی صوبائی حکومت نے ہسپتالوں کی حالت بہتر کرنے کے لیے اور مشینری فراہم کرنے کے لیے چودہ ارب روپے رکھے ہیں اسی طرح ادویات کے لیے بھی خطیر رقم رکھی انھوں نے انکشاف کیا کہ صحت کارڈ کا دائرہ بڑھایا جارہا ہے اوراٹھارہ لاکھ سے چوبیس لاکھ تک بڑھا دیا گیا۔ موجودہ بجٹ میں اس کے لیے خطیر رقم رکھی گئی ہے۔ تاکہ غریب عوام کو صحت کی بہتر سہولیات ان کی دہلیز پر مل سکیں۔ بی ایچ یوز اور بڑے ہسپتالوں کو بھی سولرسسٹم سے منسلک کیا جارہا ہے۔ اور دور دراز کے ہسپتالوں کی حالت بہتر کرنے کے لیے اربوں روپے کی مشینری خریدی جارہی ہے۔انھوں نے کہا کہ اسی طرح زراعت پر بھی خصوصی توجہ دی رہی ہے او رصوبے کوشمسی توانائی میں مزید ترقی دے جاری ہے تاکہ زمینداروں کوآسانی ہو اور سولر ٹیوب ویل کے زریعے زراعت کو مذید ترقی دی جاسکے انھوں نے کہا کہ آ ئندہ مالی سال میں چار ہزار مساجد اور پانچ ہزار سکولوں کو سولر سسٹم فراہم کرنے کے بجٹ میں خطیر رقم رکھی گئی ۔ تھانوں اور پٹوار خانوں کو کیمپوٹر سسٹم سے منسلک کیا جاے تاکہ محکمہ پولیس اور محکمہ مال میں مذید شفافیت پیدا ہو۔ انھوں نے کہا کہ ہم زبانی کلامی باتوں کی بجائے عمل سے ثابت کرتے ہیں۔ اوریہی وجہ ہے کہ باشعور عوام دیگر سیاسی جماعتوں سے اکتا چکے ہیں کیونکہ حکومتوں کا کردار عوام کے سامنے بالکل واضح ہے یہی وجہ ہے کہ پی پی پی، اے این پی، مسلم لیگ ن ، جے یوآئی سمیت کئی دینی اور سیاسی جماعتوں کے اہم لیڈرز اور بڑے بڑے عہدیدار ہمارے ساتھ رابطے میں ہیں۔ اور کئی شخصیات پہلے ہی پی ٹی آئی میں شامل ہوچکے ہیں اور ہمارے ساتھ نئے شامل ہونے والوں کی اتنی بڑی فہرست ہے کہ عمران خان اورمیرے پاس اتنا وقت نہیں ۔ انشاء اللہ عید الفطر کے بعد شمولیتوں کاسلسلہ زور وشور سے شروع ہوگا۔ انھوں نے کہا کہ میں نے 2018 کے انتخابات کے لیے جو نقشہ کھینچا ہے اس سے مخالفین کی نیندیں حرام ہوجائیں گی۔ ہم اتنے مضبوط امیدوار میدان میں اتاریں گے کہ ہمارے خلاف بننے والے اتحادوں کواپنی حثیت کااندازہ لگ جائے گا۔ انھوں نے نئے شامل ہونے والوں کاخیر مقدم کیا۔ اس سے قبل وزیر اعلیٰ پرویز خٹک اکبرپورہ کیمپ کورونہ گئے جہاں پر انھوں نے نور الھدی ٰ مرحوم اور سراج کے لیے فاتحہ خوانی کی اور غمزدہ خاندانوں سے اظہار تعزیت کیا۔ اور بعدازاں مانکی شریف گئے جہاں پر انھوں نے صاحبزادہ تاج محمد مرحوم کی وفات اور گل زار امیر کی والدہ کی وفات پر دونوں خاندانوں کے سوگواروں سے فاتحہ خوانی کی۔ وزیر اعلیٰ کچھ دیر تک وہاں موجود رہے ۔ اس موقع پر صوبائی وزیر میاں جمشید الدین کاکاخیل اور ضلع ناظم نوشہر ہ لیاقت خان خٹک بھی انکے ہمراہ تھے۔



اس خبر پر تبصرہ کریں۔ چترال ایکسپریس اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں
اظهر المزيد

مقالات ذات صلة

إغلاق