تازہ ترین

چترال کے مختلف ادارے اپنے اسٹاف کی گاڑیاں کھڑی کرنے کیلئے باہر پارکنگ کا انتظام کریں،عام لوگوں کو تکالیف پہنچانے کا سلسلہ بند کیا جائے

چترال ( محکم الدین) چترال کے عوامی حلقوں نے مختلف اداروں کی طرف سے پارکنگ کے نام پر مختلف سڑکوں پر قبضہ جمانے پر انتہائی حیرت کا اظہار کر تے ہوئے مطالبہ کیا ہے ۔ کہ عام لوگوں کی آمدورفت کا راستہ اُنہیں دیکھایا جائے ۔ مختلف لوگوں نے میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کہا ۔ کہ شاہی قلعہ روڈ سڑک وکلاء کی گاڑیاں پارک کرنے کیلئے مخصوص کردیا گیا ہے ، اور اسی روڈ کے بقیہ حصے پر چترال پولیس کا قبضہ ہے ۔ڈی ایچ کیو ہسپتال روڈ سی اینڈڈبلیو ، Image may contain: mountain, car, sky, outdoor and natureاور ملحقہ اداروں کے سپرد کی گئی ہے ، اور ایجوکیشن آفس کو جانے والی سڑک گورنمنٹ سنٹنیل ماڈل ہائی سکول چترال کی میراث ہے ۔ جس پر کوئی آمدو رفت کا حق نہیں جتا سکتا ۔ گویا چترال شہر کی یہ سڑکیں نو گو ایریاز بن چکی ہیں ۔ جس میں گاڑی کھڑی کرنا تو محال ، گزرنا بھی مشکل ہو گیا ہے ۔ سڑک کے بقیہ حصوں میں درختوں کے سایوں کو محکمہ ہیلتھ کے پرورش کردہ آوارہ کُتوں نے اپنے نام کر لی ہے ۔ یوں ان سڑکوں کو پارکنگ ایریا بنانے کی وجہ سے راہ چلتے لوگوں اور خصوصاً خواتین کوجو تکالیف درپیش ہیں ، وہ بیان کے قابل نہیں ہیں ۔ اسی طرح ڈی ایچ کیو ہسپتال آنے اور جانے والی ایمبولینس پارکنگ کیلئے مختص کردہ سڑکوں پر کئی منٹوں تک پھنس جاتے ہیں ۔ Image may contain: tree, car, sky, outdoor and natureحالانکہ ایک ایمرجنسی مریض کی جان بچانے کیلئے ایک سیکنڈ بھی انتہائی قیمتی ہے ۔ عوامی حلقوں نے مطالبہ کیا ہے۔ کہ چترال میں جو ادارے موجود ہیں ۔ وہ اپنے اسٹاف کی گاڑیاں کھڑی کرنے کیلئے باہر پارکنگ کی جگہوں کا انتظام کریں ۔ اور سڑکوں کو پارکنگ بنا کر عام لوگوں کو تکالیف پہنچانے کا سلسلہ بند کیا جائے ۔ انہوں نے یہ بھی مطالبہ کیا ۔ کہ شاہی قلعہ روڈ جو مخصوص حالات کی وجہ سے تھانہ چترال کے احاطے میں بند کی گئی تھی۔ کھول دی جائے ۔ کیونکہ اب حالات معمول پر آچکے ہیں ۔
اس خبر پر تبصرہ کریں۔ چترال ایکسپریس اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں
اظهر المزيد

مقالات ذات صلة

إغلاق