تازہ ترینوقاص احمد ایڈوکیٹ

بھارتی پاٸلٹ ابھینندن کی رہائی کا معاملہ اورقانونی پہلو

……….تحریر:وقاص احمد ایڈوکیٹ


 جب آج وزیراعظم پاکستان نے بھارتی پاٸلٹ ابھینندن کی رہاٸی کااغلان کیا تو مجھے بہت غصہ آیا تھوڑی دیر کے بعد بحیثیت قانون کےایک طالب علم مجھے اس کی قانونی پہلوں کو دیکھنے کا شوق پیداہواجب کوٸی ملک اقوام متحدہ کا ممبر بن جاتا ہے تو اس پر بین القوامی قانون اورکنونشن لاگو ہوتا ہے اس طرح جیینوا کنونشن کے تحت اگر جنگ کے دوران کوٸی فوجی گرفتار ہوتا ہے انکی قانونی حق ہوتی ہیں ان کے ساتھ اچھا سلوک ،انکی صحت اورخوراک کا انتظام اس ملک کی زمداری ہوتی ہےایسے قیدی کو پریزنرآف وار’’ جنگی قیدی‘‘ کہا جاتاہے جوعام قیدی سے مختلف ہوتا ہے یہ قانون صرف اور صرف جنگی قیدی پرلاگو ہوتا ہے اگرجنگی حالات نارمل پوزیشن پر آجاتے ہیں تو فوجی قیدیوں کواس کے ملک کو حوالہ کیا جاتا ہے ۔چونکہ بھارتی پاٸلٹ مسلمہ طور پرجنگی قیدی ہے اس کو گرفتار کرکے میڈیا کے سامنے لایا گیا تھا اس وجہ سے اس کی رہاٸی قانونی ہے تاہم کچھ دنوں بعد اس کو رہا کیا جا سکتا تھا انکی رہاٸی کوٸی بڑی بات نہیں۔ہمارے پاک فوج نے انڈیا کی جہازوں کو مارگرایا، پاٸللٹ کو گرفتار کیا اس کے لیے پاک فوج خراج تحسین کے مستحق ہیں، ساتھ ہی اپنے سایسی قاٸدین کا بھی ہم مشکور ہیں جوتمام سیاسی اختلافات بھول کریک جان ہوگئے۔ پاکستان کے لیے سیاسی قاٸدین کی خدمات بھی قابل ستاٸش ہیں۔ جنرل ایوب خان نے 1965 کی جنگ جیتی، ذولفقارعلی بھٹو نے ایٹم بم بنایا، ضیاالحٕق نے روس کو بھگایا، نواز شریف نے پاکستان کوایٹمی قوت بنایا، جنرل مشرف نے کار گل میں دشمن کو شکست دی عرض یہ کہ مولانا فصل الرحمن، سراج الحق اوراسفندیارولی سب نے یکجاہوکر دشمن کو للکارا اورموجودہ وزیراعظم عمران خان نے ہندوستان سے بدلہ لینے کے لئےپاک فوج کواجازت دی اور پاک فوج نے 24 گھنٹوں میں بدلہ لےکردیکھایا۔مجھے اس بات پر خوشی ہے کہ ہوسکتاہے ہم آٸندہ بھی اس طرح متحد ہونگے لیکن افسوس اس بات پرہوتی ہے کہ ہم سیاسی اختلاف میں ایک دوسرے پر غداری کا لیبل لگاتے ہیں ۔آج ہی عمران خان نےخود اعتراف کیا کہ اس نے تین بار مودی سے بات کرنے کی کوشش کی، کیا یہ غداری ہے؟ کبھی نہیں مودی نواز شریف کے گھرآیا تھا تو کیانواز شریف غدار ہوا ہرگز نہیں یہ بات حقیقت ہے کہ ہمارے قاٸدین نے کرپشن کیے ہیں یہ ہمارا اندرونی معاملہ ہے کرپشن سے کوٸی غدار نہیں ہوتا۔ آٸین کی خلاف ورزی سے کوٸی غدار نہیں ہوتا۔ مودی سے بات کرنے سے کوٸی غدار نہیں ہوتا اور نہ کوٸی خلاٸی مخلوق ہوتا ہے خدرا آج کے بعد عہد کریں ، کسی پاکستانی پرغداری کا لیبل مت لگائیں کوٸی پاکستانی غداری کا سوجھ بھی نہیں سکتا۔

اس خبر پر تبصرہ کریں۔ چترال ایکسپریس اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں

متعلقہ مواد

إغلاق