تازہ ترین

صوبہ خیبرپختونخواکے 25(18 بندوبستی اور7 قبائلی )اضلاع میں 25مارچ سے تین روزہ انسدادپولیومہم شروع ہو رہی ہے

پشاور(چترال ایکسپریس) صوبہ خیبرپختونخواکے 25 (18 بندوبستی اور7 قبائلی )اضلاع میں 25مارچ سے تین روزہ انسدادپولیومہم شروع ہو رہی ہے۔ مہم کے دوران پانچ سال سے کم عمر کے 55 ( بندوبستی اضلاع میں 47 اورقبائلی اضلاع میں 8 ) لاکھ سے زائد بچوں کوپولیو کے قطرے پلائے جائیں گے۔ اس بات کافیصلہ پولیوکی روک تھام کے لیے قائم ادارہ ایمرجنسی آپریشن سنٹرمیں اعلی سطحی اجلاس میں کیاگیا، جس کی صدارت کوارڈینیٹرکیپٹن (ر)کامران احمد آفریدی نے کی اجلاس میں ڈائریکٹرای پی آئی ڈاکٹراکرم شاہ،یونیسیف ٹیم لیڈڈاکٹرمحمدجوہرخان،ڈبلیوایچ اوٹیم لیڈڈاکٹرعبدی ناصر،ٹیکنیکل فوکل پرسن ڈاکٹرامتیازعلی شاہ،این سٹاپ آفیسرڈاکٹراعجازعلی شاہ اوردیگراعلی حکام نے شرکت کی۔ اجلاس میں خیبرپختونخواکے25اضلاع میں پولیوکی تین روزہ مہم شروع کرنے کے سلسلے میں تمام ترانتظامات کوحتمی شکل دی گئی مہم کاانعقادپشاور،چارسدہ،نوشہرہ،مردان،صوابی،سوات،ملاکنڈ،بٹگرام،چترال، کوہاٹ،کرک،ہنگو،بنوں،دیر لوئر ، دیراپر،لکی مروت ،ٹانک، ڈیرہ اسماعیل خا ن، باجوڑ، مہمند، اورکزئی ، کرم، خیبر، جنوبی وزیرستان اور شمالی وزیرستان میں کیاجائیگا مجموعی طورپر پانچ سال سے کم عمرکے 55لاکھ94ہزار194بچوں کوپولیوسے بچاوکے قطرے پلائے جائینگے انسدادپولیوکی اس مہم کادائرہ کار بندوبستی اور قبائلی اضلاع میں افغان مہاجرین اورٹی ڈی پیزکیمپوں تک بھی بڑھایاجائیگاان کیمپوں میں مقیم بچوں کو بھی پولیوسے بچاوکے قطرے پلائے جائینگے تین روزہ مہم کے لیے تربیت یافتہ پولیوہیلتھ ورکرزپر27ہزار175ٹیمیں تشکیل دی گئی ہیں جس میں 19 ہزار462موبائل ،1ہزار431فکسڈ،921ٹرانزٹ،153رومنگ ٹیمیں تشکیل دی گئی ہیں جن کی موثرنگرانی کیلئے 5ہزار208ایریاانچارجزبھی مقررکیے گئے۔ اس کے علاوہ مہم سے وابستہ سٹاف کی سیکورٹی کوبھی یقینی بنایاجائیگا جس کیلئے بندونستی اضلاع میں20 ہزارپولیس اہلکاردوران مہم اپنے فرائض سرانجام دینگے. اس سلسلے میں والدین سے یہ اپیل کی جاتی ہے کہ وہ گھر آنے والی پولیو ٹیموں کے ساتھ تعاون کرئیں اور اپنے بچوں کو پولیو جیسے موذی مرض سے بچائیں ۔


اس خبر پر تبصرہ کریں۔ چترال ایکسپریس اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں

متعلقہ مواد

إغلاق