تازہ ترین

چترال کے اڈٹ اینڈ اکاؤنٹس ملازمین کی ہڑتال اور احتجاج چودھویں روز میں داخل

چترال (محکم الدین) چترال کے اڈٹ اینڈ اکاؤنٹس ملازمین کی ہڑتال اور احتجاج چودھویں روز میں داخل ہو گئی ہے۔ تاہم احتجاج کے حوالے سے حکومتی رد عمل سامنے نہیں آیا ہے۔ جبکہ اس ہڑتال سے ملازمین، عوام اور مختلف اداروں کو بہت زیادہ مشکلات کا سامنا ہے۔ بدھ کے روز چیرمین عبدالقادر اور جنرل سیکرٹری فضل حق کی قیادت میں اَڈٹ اینڈ اکاؤنٹس کے ملازمین نے زبر دست احتجاج کیا۔ اس موقع پر خطاب کے دوران چیرمین عبدالقادر نے اپنے مطالبات دوہراتے ہوئے کہا کہ پے اینڈ الاؤنس کے امتیازی فرق کو فوری ختم کیا جائے، ٹائم سکیل پروموشن اور تمام زیر التوا ڈی پی سی ایس پر فوری پرو موشن کئے جائیں۔ اے جی آر اور اے جی دفاتر کی ڈیپارٹمنٹلائزیشن کی روکی جائیں۔ سلیکشن گریڈ پروموشن اور کلاس فور ملازمین کے پروموشن کوٹہ میں اضافہ کیا جائے۔ انہوں نے کہا کہ اَڈٹ اینڈ اکاؤنٹس ملازمین کا کوئی پُرسان حال نہیں۔ گذشتہ چودہ دنوں سے مطالبات کے حق میں احتجاج جاری ہے۔ لیکن حکومت کی طرف سے ہمار ے جائز مطالبات کی شنوائی نہ ہونا انتہائی افسوسناک ہے انہوں نے کہا کہ بیس مارچ تک اُن کے مطالبات منظورکئے جائیں۔ تاکہ پاکستان آڈٹ اینڈ اکؤنٹس کے ملازمین احتجاج ختم کرکے دوبارہ اپنے دفتری امور شروع کر سکیں۔ بصورت دیگر وہ صوبائی قیادت کے ساتھ مل کر اسلام آباد کے ڈی چوک میں دھرنا دینے پر مجبور ہوں گے۔ اور تمام حکومتی مشینری کو بلاک کرتے ہوئے تمام سرکاری ملازمین کی تنخواہیں اور پنشن بند کریں گے۔ اور احتجاج اُس وقت تک جاری رکھیں گے جب تک مطالبات منظور نہیں کئے جاتے۔

Advertisements

اس خبر پر تبصرہ کریں۔ چترال ایکسپریس اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں

متعلقہ

زر الذهاب إلى الأعلى