اپر چترال میں بہانے بازیوں سے گریز کرکے بلا جواز لوڈ شیڈنگ کا سلسلہ فوراً بند کیا جائے۔بصورت دیگر عوام سڑکوں پر آنے پر مجبور ہونگے۔پرویز لال

اپرچترال(نمائندہ چترال ایکسپریس)تحریک حقوق اپر چترال کے جنرل سیکرٹری پرویزلال نے ایک اخباری بیان میں کہا ہے کہ اپر چترال میں 5 مہینے بجلی کی بدترین لوڈ شیڈنگ اور کئی احتجاجی مظاہروں کے بعد چند دن کیلئے بجلی بحال ہوگئی تھی۔ سازگار موسم اور وافر مقدار میں پانی کی موجودگی کی وجہ سے محکمہ واپڈا اور پیڈو کے پاس مزید لوڈ شیڈنگ کا کوئی جواز نہیں رہا تھا لیکن رمضان المبارک کی آمد کے چند دن کے بعد ایک مرتبہ پھر سے غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ کا سلسلہ شروع کردیا گیا ہے۔ محکمہ والوں کے پاس کوئی ٹھوس جواز نہ ہونے کی وجہ سے کبھی شاخ تراشی کا بہانہ بنایا جارہا ہے تو کبھی خراب موسم اور تیز ہواؤں کا حالانکہ ایسا کوئی مسئلہ ہے ہی نہیں۔اُنہوں نے کہا کہ محکموں کے کچھ افراد خصوصاً جوٹی لشٹ گرڈ اسٹیشن کے جند ملازمین اس سازش کے پیچھے ہیں جو عوام کو اس وبائی اور مشکل وقت میں ایک مرتبہ پھر سڑکوں پر لانا چاہتے ہیں۔ اگر ٹرانسمشن لائنوں میں کسی قسم کی خرابی تھی تو بجلی کی بندش کے 5 ماہ کے دورانئے میں ان کو ٹھیک کرنا چاہئے تھا اور اس دوران شاخ تراشی بھی کی جا سکتی تھی۔ اور ٹرانسمشن لائنوں کی مرمت کیلئے ایم۔پی۔اے مولانا ہدایت الرحمان نے ساڑھے تین کروڑ کا اضافی فنڈ بھی مہیا کیا تھا۔اُنہوں نے تمام متعلقہ اداروں سے مطالبہ کیا ہے کہ بہانے بازیوں سے گریز کرکے بلا جواز لوڈ شیڈنگ کا سلسلہ فوراً بند کیا جائے۔ کورونا وبا کی وجہ سے ایک طرف تو عوام قرنطینہ سینٹرز میں بجلی کی بندش کی وجہ سے پریشان ہیں تو دوسری طرف رمضان المبارک کے مہینے میں بجلی کی لوڈ شیڈنگ سے بھی عوام شدید مشکل میں ہیں۔ اُنہوں نے محکمہ بالا سے بھی پرزور مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ بلاجواز لوڈ شیڈنگ کا سلسلہ بند کرکے بجلی کی بلا تعطل فراہمی کو جلد از جلد یقینی بنائیں بصورت دیگر تحریک حقوق عوام اپر چترال کسی بھی رکاوٹ کو خاطر میں نہ لاتے ہوئے اپنے جائز حق کے حصول کیلئے سڑکوں پر آنے پر مجبور ہوگی اور کسی بھی ناخوشگوار واقعے کی تمام تر ذمہ داری متعلقہ اداروں پر ہوگی۔

اس خبر پر تبصرہ کریں۔ چترال ایکسپریس اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں
زر الذهاب إلى الأعلى
error: مغذرت: چترال ایکسپریس میں شائع کسی بھی مواد کو کاپی کرنا ممنوع ہے۔