تازہ ترین

سوات موٹروے، دیر موٹروے اور بونیر ایکسپریس وے کی تعمیر سے چکدرہ تجارتی سرگرمیوں کا مرکز بن جائے گا۔وزیراعلیٰ محمود خان

پشاور(چترال ایکسپریس)صوبائی حکومت کے فلیگ شپ منصوبے سوات موٹروے فیز ٹو سے متعلق پبلک پرائیوٹ پارٹنر شپ کمیٹی کا اجلاس وزیراعلیٰ خیبرپختونخوامحمود خان کی زیر صدارت پشاور میں منعقد ہو ا جس میں پبلک پرائیوٹ پارٹنرشپ کے تحت منصوبے پر کام آگے بڑھانے کی منظوری دے دی گئی۔80 کلومیٹر طویل یہ موٹروے چکدرہ سے فتح پور (مدین) تک تعمیر کی جائے گی۔ یہ منصوبہ 37 ارب روپے کی تخمینہ لاگت سے دوسال کے عرصے میں مکمل کیا جائے گا۔ موٹروے کے دونوں اطراف کی آبادی کو موٹروے تک آسان رسائی دینے کیلئے ہر 10 کلومیٹر کے فاصلے پر انٹر چینجز بھی تعمیر کئے جائیں گے۔یہ موٹروے 9 انٹر چینجز اور8 پلوں پر مشتمل ہو گی۔ اس منصوبے کو پورے ملاکنڈ ڈویژن کی تعمیر وترقی کیلئے ایک اہم سنگ میل قرا ردیتے ہوئے وزیراعلیٰ نے کہاکہ سوات موٹروے صرف سڑک کا ایک منصوبہ نہیں بلکہ یہ پورے علاقے کی سماجی و معاشی ترقی کا ایک اہم پیکیج ہے جس سے علاقے میں سیاحت، زراعت، کاروبار اور دوسری معاشی سرگرمیوں کو فروغ ملے گا اور علاقے میں ترقی کے نئے دور کا آغاز ہو گا۔ اُنہوں نے کہاکہ سوات موٹروے اور دیر موٹروے مستقبل میں وسطی ایشیاء کے ساتھ تجارت کو فروغ دینے میں بھی اہم کردار ادا کریں گے۔ وزیراعلیٰ کا مزید کہنا تھا کہ سوات موٹروے، دیر موٹروے اور بونیر ایکسپریس وے کی تعمیر سے چکدرہ تجارتی سرگرمیوں کا ایک مرکز بن جائے گا جہاں پر صوبائی حکومت ایک اکنامک زون کے قیام پر غور کر رہی ہے۔ اُنہوں نے متعلقہ حکام کو ہدایت کی کہ چکدرہ میں کسی بھی فزیبل مقام پر مجوزہ اکنامک زون کے قیام پر ابھی سے کام شروع کیا جائے۔اُنہوں نے متعلقہ حکام کو یہ بھی ہدایت کی کہ سوات موٹروے فیز ٹو منصوبے پر عملی کام کے آغاز اور اس کی تکمیل کو کم سے کم ممکنہ وقت میں یقینی بنایا جائے۔

Advertisements

اس خبر پر تبصرہ کریں۔ چترال ایکسپریس اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں

متعلقہ

زر الذهاب إلى الأعلى