تازہ ترین

وزیراعلیٰ محمود خان نے  نوشہرہ اکنامک زون کے توسیعی منصوبے کا سنگ بنیادرکھ دیا,آنے والے دنوں میں چترال ، غازی اور بنوں اکنامک زونز کا بھی سنگ بنیاد رکھ دیا جائیگا

پشاور(چترال ایکسپریس)وزیراعلیٰ خیبر پختونخوا محمود خان نے بدھ کے روز صوبے میں صنعتوں کی ترقی کے لئے ایک اور اہم پیشرفت کے طور پر نوشہرہ اکنامک زون کے توسیعی منصوبے کا سنگ بنیاد رکھ دیا اور اس اکنامک زون میں صنعتےں لگانے کے خواہشمند سرمایہ کاروں میں پلاٹ کے الاٹمنٹ لیٹر تقسیم کئے۔ نوشہرہ اکنامک زون کا توسیعی منصوبہ 76 ایکڑ اراضی پر محیط ہے جس میں 60 سے زائد صنعتی یونٹس لگائے جائیں گے جبکہ اس منصوبے سے بلواسطہ اور بلاواسطہ ملازمتوں کے 12 ہزار سے زائدمواقع پیدا ہونگے۔ اس توسیعی زون میں ابتدائی طور پر 1.6 ارب روپے کی سرمایہ کاری متوقع ہے۔ وزیر اعلیٰ کے معاون خصوصی برائے اطلاعات کامران بنگش، پرنسپل سیکرٹری شہاب علی شاہ، خیبر پختونخوا اکنامک زونز ڈویلپمنٹ اینڈ منیجمنٹ کمپنی کے چیف ایگزیکٹیو آفیسر جاوید خٹک اور دیگر حکام بھی اس موقع پر موجود تھے۔
اس موقع پر اپنی گفتگو میں وزیراعلیٰ نے نوشہرہ اکنامک زون کے توسیعی منصوبے کو صوبے میں صنعتی سرگرمیوںکے فروغ اور لوگوں کو روزگار کے نئے مواقع فراہم کرنے کے لئے ایک اہم سنگ میل قرار دیتے ہوئے کہا کہ صوبائی حکومت صوبے میں صنعتوں کو فروغ دے کر لوگوں کے لئے روزگار کے مواقع پیدا کرنے اور صوبے کی معیشت کو مستحکم کرنے کے لئے نتیجہ خیز اقدامات اٹھا رہی ہے اور نوشہرہ اکنامک زون کی توسیع اسی سلسلے کی ایک اہم کڑی ہے جس سے صوبے میں صنعتی ترقی کے ایک نئے دور کا آغاز ہوگا۔ اس موقع پر وزیراعلیٰ کو نوشہرہ اکنامک زون کے توسیعی منصوبے کے مختلف پہلوو¿ں کے بارے میں بریفنگ دیتے ہوئے بتایا گیا کہ اضاخیل کے ڈرائی پوٹ اور پشاور اسلام آباد موٹر وے کے نزدیک واقع ہونے کی وجہ سے یہ اکنامک زون انتہائی اہمیت کا حامل ہے ، یہ اکنامک زون ادویہ سازی، فوڈ پروسسنگ، تعمیرات، ماربل، گرینائٹ اور فوڈ پیکنگ کی صنعتوں کے لئے انہتائی سازگار ماحول فراہم کرتاہے جبکہ اس اکنامک زون میں تیار ہونے والی مصنوعات کو افغانستان ، وسطی ایشیاءریاستوں اور چین کی مارکیٹوں تک آسانی سے پہنچایا جاسکتا ہے۔ مزید بتایا گیا کہ اس توسیعی منصوبے کے لئے رابطہ سڑک کی تعمیر اورصنعتی یونٹس کی حد بندی کا کام مکمل کر لیا گیا ہے جبکہ اندرونی انفراسٹرکچر پر کام جاری ہے۔ نوشہرہ اکنامک زون میں اب تک صنعتیں لگانے کے لئے مجموعی طور پر 1365 درخواستیں موصول ہو چکی ہیں۔ یاد رہے کہ صوبائی حکومت نے جلوزئی اکنامک زون کا پہلے ہی سے افتتاح کر چکی ہے جس میں سرمایہ کاروں کی دلچسپی حوصلہ افزا ہے۔ صوبے میں دیگر اکنامک زونز کے بارے میں بریفنگ دیتے ہوئے وزیراعلیٰ کو بتایا گیا کہ سی پیک کے تحت رشکئی اسپیشل اکنامک زون کا منصوبہ بھی افتتاح کے لئے تیار ہے ۔ یہ اکنامک زون سٹیٹ آف دی آرٹ انفراسٹرکچر اور سہولیات پر مشتمل ہوگا جو اندازتاً روزگار کے پچاس ہزار بالواسطہ اور بلاواسطہ مواقعے پیدا کریں گا۔ مزید بتایا گیا کہ189 رقبے پر محیط ڈی آئی خان اکنامک زون کا بھی عنقریب سنگ بنیاد رکھا جائیگا جس میں سو صنعتی یونٹس لگائے جائیں گے اور اس اکنامک زون میں ڈیڑھ ارب روپے کی سرمایہ کاری اورتیس ہزار سے زائد ملازمتوں کے مواقع متوقع ہے ۔ اسی طرح آنے والے دنوں میں چترال ، غازی اور بنوں اکنامک زونز کا بھی سنگ بنیاد رکھ دیا جائیگا۔ ان اکنامک زونز کے قیام سے صوبے کے پسماندہ علاقوں کی پسماندگی کو دور کرنے ، صوبے کی معیشت کو مستحکم کرنے اور لوگوں کو روزگار کے مواقع فراہم کرنے میں مدد ملے گی۔ وزیراعلیٰ نے متعلقہ حکا م کو ہدایت کی کہ بونیر ماربل سٹی اور مہمند ماربل سٹی کے مجوزہ منصوبوں پر عملدرآمد کے لئے کام کی رفتار کو تیز کیا جائے۔

Advertisements

اس خبر پر تبصرہ کریں۔ چترال ایکسپریس اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں

متعلقہ

زر الذهاب إلى الأعلى