تازہ ترین

وزیراعلی محمود خان نے بنوں میں پی ڈی ایم کے جلسے کے لئے بی ایچ یو کو کچن کے لئے استعمال کرنے کی اجازت دینے پر بی ایچ یو کے سارے عملے کو معطل کردیا

پشاور(چترال ایکسپریس)وزیر اعلی خیبر پختونخوا محمود خان نے بنوں میں پی ڈی ایم کے جلسے کے لئے سرکاری بنیادی مراکز صحت کو کچن میں تبدیل کے معاملے کا نوٹس لے لیا۔ وزیر اعلی کی ہدایت پر محکمہ صحت نے علاج معالجے کی خدمات کو معطل کرکے بی ایچ یو کو کچن کے لئے استعمال کرنے کی اجازت دینے پر بی ایچ یو کے سارے عملے کو معطل کردیا ہے اور واقعے کی تحقیقات کے لئے ڈپٹی ڈی ایچ او بنوں کی سربراہی میں دو رکنی انکوائری کمیٹی تشکیل دی ہے۔ معطل ہونے والے اہلکاروں میں ویمن میڈیکل آفیسر شمع ناہید اور ٹیکنیشن افتخار کے علاوہ نائلہ نور، شمع پروین، نعیم اللہ، ہارون راشد، نور رحمت، دفتر علی او دل روجانہ شامل ہیں۔
یہاں سے جاری اپنے ایک بیان میں وزیر اعلی نے کہا ہے کہ سرکاری ہسپتال عوام کو علاج معالجے کی سہولیات فراہم کرنے کے لئے بنائے گئے ہیں نا کہ کسی کے مہمانوں کی خاطر تواضع کے لئے نہیں، کسی کو بھی سرکاری عمارتیں اپنے ذاتی یا سیاسی مقاصد کے لئے استعمال کرنے کی اجازت نہیں دی جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ بنوں میں ہونے والے اور اس غیر قانونی کام کے ذمہ داروں کے خلاف سخت کارروائی عمل میں لائی جائے گی۔

Advertisements

اس خبر پر تبصرہ کریں۔ چترال ایکسپریس اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں

متعلقہ

زر الذهاب إلى الأعلى