تازہ ترین

ملاکنڈ ڈویڑن میں سنٹرل جیل کا قیام نہایت ناگزیر ہے جس میں مزید تاخیر کی گنجائش موجود نہیں۔وزیراعلیٰ محمود خان

پشاور(چترال ایکسپریس)وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا محمود خان نے ملاکنڈ ڈویژن میں سنٹرل جیل کے قیام کے لئے اراضی کا مسئلہ جلدحل کرنے اور اس سلسلے میں دو ہفتوں کے اندر حتمی تجویز پیش کرنے کی ہدایت کی ہے اورعندیہ دیا ہے کہ آئندہ مالی سال کے آغاز سے منصوبے کی تعمیر پر کام شروع کیا جائیگا۔ انہوں نے واضح کیا کہ ملاکنڈ ڈویڑن میں سنٹرل جیل کا قیام نہایت ناگزیر ہے جس میں مزید تاخیر کی گنجائش موجود نہیں۔ وہ وزیراعلیٰ ہاؤس پشاور میں مجوزہ منصوبے کے حوالے سے ایک اجلاس کی صدارت کر رہے تھے۔ وزیراعلیٰ کے معاون خصوصی برائے جیل خانہ تاج محمد خان ترند کے علاوہ سیکرٹری داخلہ، سیکرٹری خزانہ، انسپکٹر جنرل جیل خانہ جات اور دیگر متعلقہ حکام نے اجلاس میں شرکت کی۔ اجلاس کو ملاکنڈ ڈویژن میں سنٹرل جیل کے قیام کی ضرورت و اہمیت اور اس سلسلے میں پیش رفت پر تفصیلی بریفنگ دی گئی۔ اجلاس کو آگاہ یا گیا کہ منصوبے کا ماسٹر پلان تیار ہے تاہم منصوبے کے لئے درکار اراضی کا مسئلہ حل طلب ہے۔ وزیراعلیٰ نے منصوبے کی تعمیر کے لئے ایسی جگہ کا انتخاب کرنے کی ہدایت کی جس تک ڈویژن کے تمام اضلاع کی آسان رسائی ممکن ہو۔ انہوں نے متعلقہ حکام کو ہدایت کی کہ منصوبے کے لئے درکار اراضی کیلئے دستیاب آپشنز کا جائزہ لیکر دو ہفتوں کے اندر حتمی تجویز پیش کی جائے اور اس مقصد کے لئے سرکاری اراضی کے انتخاب کو ترجیح دی جائے۔ وزیراعلیٰ نے اس موقع پر صوبے کی تمام بڑی جیلوں کو ریسکیو 1122 کی ایمبولینس فراہم کرنے کا فیصلہ کر تے ہوئے متعلقہ حکام کو ہدایت کی کہ ایمبولینس کیلئے جیلوں میں مناسب جگہ فراہم کی جائے۔ انہوں نے جیلوں میں صفائی کا انتظام کرنے خصوصی طورپر واش رومز کی حالت کو بہتر کرنے کی بھی ہدایت کی ہے۔ مزید برآں اُنہوں نے جیلوں میں لنگر خانوں کا اہتمام کرنے کی ضرورت پر بھی زور دیا ہے اور کہا ہے کہ جیلوں میں قید افراد کو بنیادی سہولیات کی فراہمی ضروری ہے۔

Advertisements

اس خبر پر تبصرہ کریں۔ چترال ایکسپریس اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں

متعلقہ

زر الذهاب إلى الأعلى