تازہ ترین

کچھ نرسز کا ڈائریکٹریٹ اورسیکرٹریٹ جانا اوررولز پرتحفظات کااظہارکرناافسوس ناک اورشرمناک ہے،ترجمان خیبر پختونخواہ نرسز الائنس ناصر علی شاہ

پشاور(چترال ایکسپریس)آترجمان خیبر پختونخواہ نرسز الائنس ناصر علی شاہ نے ایک اخباری بیان میں کہا ہے کہ کچھ نرسز کا ڈائریکٹریٹ اور سیکرٹریٹ جانا اور رولز پر تحفظات کا اظہار کرنا افسوس ناک اور شرمناک ہے۔اور یہ مطالبہ کرنا کہ ایم ایس این کو سپیشل کوٹہ یا وژن دی جاۓ ۔جو کہ اس وقت ناممکن بات ہے, اگر چہ رولز کمیٹی نے اپنی کوشش کی ہے ۔دوسری بات یہ ہے کہ ایجوکیشن کیڈر میں صرف تمام ایم ایس این جاسکیں گے۔
اُنہوں نے کہا کہ اس وقت پورے صوبے میں تقریباً 70 کے قریب ایم۔ایس۔این موجود ہیں۔۔جن میں اکثریت 2سال کی چھٹی لیکر پرائویٹ کالجوں میں پرنسپل کی حیثیت سے کام کر رہے ہیں۔۔اور آج وہی چھٹی والے لوگ آگے آگے ہیں۔جوکہ غیر اخلاقی اور غیر قانونی ہے۔
اب ایک طرف ہزاروں نرسز جنہوں نے زندگیاں اس پروفیشن کے نام کی ہیں۔اور دوسری طرف 40 یا 50 لوگ ہیں۔جن کی وجہ سے پروفیشن اور پروموشن پراسز تباہ ہونے جارہاہے۔اُنہوں نے کہا کہ نرسنگ کمیونٹی بالکل خاموش نہیں رہےگی اور اس کے خلاف آواز اٹھائی گی۔اپنی ذات سے نکل کر پوری کمیونٹی کا سوچنا ہوگا۔اور ذاتی مفادات کےلیے پوری کمیونٹی کو ہم کسی صورت قربان نہیں ہونے دیں گے۔
اُنہوں نے مزید کہا کہ تمام کمیونٹی ان شرپسندؤں کے خلاف تیار رہیں ۔یہ رولز سال بعد دوبارہ تبدیل ہوسکتے ہیں۔مگر اس نازک موڑپرایسی حرکتيں کرنا کمیونٹی کی تباہی کا باعث بنے گا۔خیبرپختونخواہ نرسز الائنس کل سے اپنی لائحہ عمل کا اعلان کرے گی۔

اس خبر پر تبصرہ کریں۔ چترال ایکسپریس اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں

زر الذهاب إلى الأعلى
error: مغذرت: چترال ایکسپریس میں شائع کسی بھی مواد کو کاپی کرنا ممنوع ہے۔