تازہ ترین

سماجی کارکن نصرت آزاد کا ڈی پی او لوئر چترال سے عید کے موقع پر اوباش نوجوان اور کمسن موٹرسائیکل چلانے والوں کے خلاف کاروائی کی اپیل

چترال(چترال ایکسپریس)نصرت آزاد سماجی کارکن بروز چترال نے ڈی پی اوچترال لوئر محترمہ ثونیہ شمروز سے سے گذارش کرتے ہوئے ایک بیان میں کہا ہے عید کے موقع پر اکثر اوباش نوجوان چترال سے دروش روڈ موٹر سائیکل پر اور لووڈ اپنے ہم عمر ساتھیوں کو بیٹھا کر این ایچ اے کی غفلت سے ٹوٹے پھوٹے سڑک پہ بغیر ہیلمٹ نہ اپنی جان اور نہ سڑک پہ چلتے ہوئے دوسروں کی پرواہ کئے بغیر موٹر سائیکل چلاتے ہوئے نظر آتے ہیں۔ ان کے ایسے حرکتوں کو دیکھ کر افسوس کے سوا کچھ کہہ نہیں سکتے۔جسکی وجہ اکثر حادثات کے واقعات رونما ہوتے ہوئے نظر آتے ہیں۔جس سے قیمتی جانوں کا نقصان یا فریکچر کی صورت میں اس خوشی کے موقع پر ہسپتال میں داخل ہوکر اپنا بھی نقصان کرتے ہیں اور اپنے عزیزوں کو بھی پریشان کرتے ہیں۔
اُنہوں نے کہا کہ چترال پولیس اپنے پیشہ ورانہ صلاحیتوں کے علاوہ اپنے کام میں دیانت دار ہے۔ٹریفک پولیس کے جوان ہمہ وقت چیو پل سے چھاونی پل تک اپنی ڈیوٹی احسن طریقے سے انجام دیتے ہوئے بغیر کسی لالچ کے نظر آتے ہیں۔جس پر ہمیں فخر ہے۔
اُنہوں نے ڈی پی او چترال سے درد مندانہ اپیل کی ہے کہ انکی ڈیوٹی چترال شہر کے ساتھ ساتھ چترال ٹو دروش روڈ پر اس عید کے موقع پر لگانے کا ہنگامی بنیاد پر بندوبست کیا جائے تاکہ اس عید کے موقع پہ حادثات کے واقعات کم ہو۔اُنہوں نے کہا کہ دو دن پہلے علاقہ بروز میں اس طرح کا ایک واقعہ رونما ہو کر دو جوانوں جنید اور فیضان الملک کے ٹانگیں فریکچر ہونے کی وجہ سے دونوں بچوں کو تیمرگرہ ہسپتال علاج کی غرض سے لیجانا پڑا۔۔یہ بچے اپنے کسی کام کے لئت سڑک پر جارہے تھے کہ انکو موٹر سائیکل سوار نے بے قابو ہوکر روند ڈالا۔۔لہذ اگر پولیس کے جوان ان علاقوں میں تعینات ہوں تو ان بے لگام نوجوانوں کا قبر یا ہسپتال میں رات گزرنے سے بہتر ہو گا کہ حوالات میں گزرے۔

اس خبر پر تبصرہ کریں۔ چترال ایکسپریس اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں

زر الذهاب إلى الأعلى
error: مغذرت: چترال ایکسپریس میں شائع کسی بھی مواد کو کاپی کرنا ممنوع ہے۔