تازہ ترین

وزیراعلیٰ محمود خان کا دوران ڈیوٹی کورونا سے شہید ہونے والے مزید چار فرنٹ لائن ہیلتھ ورکرز کے ورثاءمیں امدادی چیکس تقسیم 

پشاور(چترال ایکسپریس)وزیراعلیٰ خیبر پختونخوا محمود خان نے جمعرات کے روز شہداءپیکج کے تحت دوران ڈیوٹی کورونا سے شہید ہونے والے مزید چار فرنٹ لائن ہیلتھ ورکرز کے ورثاءمیں امدادی چیکس تقسیم کئے ہیں۔ان چار شہداءمیں مسرت جبین نرس، اشرف گل ڈسپنسر، جاوید احمد میڈیکل ٹیکنیشن اور محمد عارف کلاس فور شامل ہیں۔ اب تک صوبے کے 14 شہید ہیلتھ ورکرز کے ورثاءکو امدادی چیکس دیئے جا چکے ہیں۔ شہداءپیکج کے تحت ،شہید ہونے والے چار فرنٹ لائن ہیلتھ ورکرز کے ورثاءکو 70 لاکھ روپے فی کس کے حساب سے امدادی چیکس دیئے گئے۔ان شہداءکے ورثاءمیں چیکس تقسیم کرنے کی تقریب وزیراعلیٰ ہاﺅس میں منعقد ہوئی جس میں وزیراعلیٰ نے ان تمام شہداءکے ورثاءکو چیک دیئے۔ صوبائی وزیر صحت تیمور سلیم جھگڑا، سیکرٹری صحت امتیاز حسین شاہ بھی اس موقع پر موجود تھے۔اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے وزیراعلیٰ نے کہاکہ اب تک صوبے کے 14 شہید طبی عملے کے ورثا کو امدادی چیکس دیئے گئے ہیں۔ وزیر اعلیٰ نے کورونا وباءکے دوران ڈاکٹرز ودیگر طبی عملے کی خدمات اور قربانیوں کو خراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہا کہ کورونا صورتحال میں فرنٹ لائن ہیلتھ ورکرز نے دوسروں کی جانیں بچانے کے لئے اپنی جانیں قربان کیں جو انسانیت کی خدمت کی ایک عمدہ مثال ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس وباءکے دوران فرنٹ لائن ہیلتھ ورکرز کی خدمات اور قربانیوں کو ہمیشہ یاد رکھا جائے گا۔ وزیر اعلیٰ کا کہنا تھا کہ صوبائی حکومت طبی عملے کی خدمات اور قربانیوں کو قدر کی نگاہ سے دیکھتی ہے اور انہیں تمام سہولیات فراہم کر نے کے لیے ترجیحی بنیادوں پر اقدامات اٹھا رہی ہے۔ وزیراعلیٰ نے کہا کہ ان شہداءکے بچے قوم کے بچے ہیں اورصوبائی حکومت ان شہداءکے بچوں اور ورثاءکو کبھی تنہا نہیں چھوڑے گی اور ہر ممکن مدد فراہم کرے گی۔

اس خبر پر تبصرہ کریں۔ چترال ایکسپریس اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں
مزید دیکھائیں
زر الذهاب إلى الأعلى
error: مغذرت: چترال ایکسپریس میں شائع کسی بھی مواد کو کاپی کرنا ممنوع ہے۔