تازہ ترین

ہرچین کے عمائیدین کا ہنگامی اجلاس،پولیس سٹیشن کو گاوٗں سے الگ مین روڈ پر کسی سرکاری زمین میں منتقل کر نے کا مطالبہ

اپرچترال لاسپور۔۔چترال ایکسپریس) گذشتہ روزہرچین کے عمائیدین کا ایک ہنگامی اجلاس زیرصدارت سابق یونین کونسلر ومشہورسیاسی و سماجی شخصیت نگاہ بن شاہ منعقد ہوا، vمیٹنگ میں سماجی شخصیت سہروردی خان یفتالی، مشہور سماجی شخصیت محمد شریف خان اور سابق ممبر یونین کونسل لاسپور عدیراحمد خان کے علاوہ بڑی تعداد میں علاقے کے عمائدین نے شرکت کی۔ میٹنگ میں متفقہ قرار داد کے ذریعے ضلعی انتظامیہ و ضلعی پولیس افیسر اپرچترال کو ایک متفقہ قرار داد ارسال کردیا گیا۔ قرداد میں عمائیدئن نے مطالبات کیے ہیں کہ
سابق ممبر صوبائی اسمبلی حاجی غلام محمد کی جانب سے ہرچین میں ایک ارام گاہ کے لئے فنڈزسے پبلک کے لئے مین رودڈ پر ارام گاہ تعمیر کیا گیا ہے۔ یہ ارام گاہ عوام کی سہولت کے لئے مین شندور روڈ میں محکمہ ہیلتھ کی زمین پر تعمیر کیا گیا ہے۔ پچھلے کچھ مہینوں سے پولیس تھانہ ہرچین لاسپور اس عوامی ارام گاہ کے اوپر غیرقانونی قبضہ کرنے کی کوشش کررہاہے، جس کی وجہ سے عوامی سطح بھرپور مزمت کی جارہی ہے اور حکام سے نوٹس لینے کا مطالبہ کیا گیا ہے۔
قرارداد میں یہ بھی پرزور مطالبہ کیا گیا ہے کہ جو چیک پوسٹ ہرچین میں لگایا گیا ہے وہ انتہائی نامناسب جگہ ہے، جہاں پولیس چیک پوسٹ لگایا گیا ہے وہاں پیدل چلنے والوں کے لئے کوئی دوسرا پیدل چلنے کے لئے متبادل راستہ نہیں ہے۔ پیدل والے خواتین و حضرات کو بھی اسی پولیس چیک پوسٹ سے ہی گزر کر جانا پڑ رہا ہے جوکہ خواتین کے لیے پرائیوسی کے لئے انتہائی نا مناسب ہے۔ حکام سے چیک پوسٹ کو متبادل جگہ میں منتقل کرنے کا مطالبہ کیا گیا ہے۔

میٹنگ کے شراکاء کا تیسرا مطالبہ یہ تھا کہ ہرچین لاسپور کا موجودہ تھانہ بھی غیر قانونی قبضہ کرکے پولیس سٹیشن میں تبدیل کیا گیا ہے۔ موجودہ غیرقانون تھانہ سٹیٹ کے دور میں ریسٹ ہاوس تھا، سیاحوں کا ادھر آنا جانا رہتا تھا، وہ زمین ضلعی انتظامیہ اور سی اینڈ ڈبلیو کا تھا جس کواب غیرقانونی طور پر پولیس سٹیشن کے طورپر استعمال کیا جارہا ہے۔
عمائیدین نے ڈپٹی کمشنر و ضلعی پولیس افیسر اپرچترال سے پرزور اپیل کی ہے، کہ ان تمام نکات کی مکمل انکوائری کے بعد قانونی کاروائی عمل میں لایا جائے۔ اور پولیس سٹیشن کو گاوٗں سے الگ مین روڈ پر کسی سرکاری زمین میں منتقل کیاجائے۔ مطالبات پرعمل نہیں ہونے کی صورت میں عوام بھرپور احتجاج کرے گی۔

اس خبر پر تبصرہ کریں۔ چترال ایکسپریس اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں
مزید دیکھائیں
زر الذهاب إلى الأعلى
error: مغذرت: چترال ایکسپریس میں شائع کسی بھی مواد کو کاپی کرنا ممنوع ہے۔