تازہ ترین

وزیراعلی محمود خان کے زیر صدارت مردان ریجن کے ترقیاتی منصوبوں پر پیشرفت اورعوامی مسائل کے ازالے سے متعلق جائزہ اجلاس

پشاور(چترال ایکسپریس)وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا محمود خان نے صوبے میں محکمہ آبنوشی کے تحت ٹیوب ویلز کو مزید منظم انداز میں چلانے کے لئے ہر ٹیوب ویل پر ایک کی بجائے دو آپریٹرز تعینات کرنے کا فیصلہ کرتے ہوئے متعلقہ حکام کو اس سلسلے میں عملی اقدامات اٹھانے کی ہدایت کی ہے، تاکہ عوام کو پینے کے پانی کی بلا تعطل فراہمی یقینی ہو سکے۔ انہوں نے مردان ڈویژن میں بنیادی مراکز صحت اور رورل ہیلتھ سنٹرز کی جاری سکیموں کو ترجیحی بنیادوں پر مکمل کرکے اُنہیں فعال بنانے کیلئے متعلقہ حکام کو ضروری اقدامات یقینی بنانے کی ہدایت کی ہے تاکہ عوام بلا تاخیر ان سہولیات سے استفادہ کرسکیں ۔ وزیراعلیٰ نے نہروں پر واقع محکمہ زراعت کی زمینوں پر تجاوزات کے خاتمے اور زمینیں واگزار کرانے کیلئے فوری کاروائی کرنے کی ہدایت کی ہے اور مساجد کی سولرائزیشن کے منصوبے کے حوالے سے دو دن کے اندر تفصیلی رپورٹ طلب کی ہے ۔ وزیراعلیٰ نے متعلقہ حکام کو ہدایت کی کہ سولرائزیشن کے مکمل سسٹم کی تنصیب یقینی ہونی چاہیئے اور ساتھ خراب شدہ آلات کی مرمت کا بھی طریقہ کار موجود ہونا چاہیئے، جب حکومت وسائل خرچ کرتی ہے تو اُس کے نتائج بھی برآمد ہونے چاہئیں ۔
وہ وزیراعلیٰ ہاﺅس پشاور میں مردان ریجن کے ترقیاتی منصوبوں پر پیشرفت اور عوامی مسائل کے ازالے سے متعلق ایک جائزہ اجلاس کی صدارت کر رہے تھے ۔ وزیر مملکت علی محمد خان، صوبائی کابینہ کے اراکین عاطف خان، شہرام ترکئی ، عبد الکریم ،ایم این اے مجاہد خان، مردان ڈویژن سے تعلق رکھنے والے اراکین صوبائی اسمبلی اور تمام متعلقہ محکموں کے اعلیٰ حکام نے اجلاس میں شرکت کی ۔
وزیراعلیٰ نے اس موقع پر ریجنل پولیس آفیسر مردان کو پورے ڈویژن میں امن و امان کی مجموعی صورتحال کومزید بہتر بنانے ، جرائم پیشہ اور منشیات کی خرید و فروخت میں ملوث عناصر اور اسلحہ کی نمائش سمیت دیگر جرائم کے خلاف موثر کاروائی عمل میں لانے کی ہدایت کی ہے۔ وزیراعلیٰ نے متعلقہ حکام کو ہدایت کی کہ مردان اور صوابی سمیت صوبے کے دیگر اضلاع میں محکمہ اوقاف کی اراضی پر تجاوزات کے خاتمے کیلئے موثر کاروائی کی جائے اور اراضی کی واگزاری کے حوالے سے ہفتہ وار رپورٹ پیش کی جائے ۔ اُنہوںنے مردان میں محکمہ صحت کی جاری میگا سکیموں اور پبلک پارک کے قیام کے منصوبے کی تکمیل میں تاخیر پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے متعلقہ حکام کوہدایت کی کہ سکیمیں بروقت مکمل ہونی چاہئیں، بصورت دیگر ذمہ داران کے خلاف کاروائی کی جائے گی ۔ وزیراعلیٰ نے زمینوں کے انتقالات کے سلسلے میں عوام کو درپیش مسائل کو حل کرنے کیلئے ایک علیحدہ اجلاس منعقد کرنے کی بھی ہدایت کی ۔ وزیراعلیٰ نے گرڈ سٹیشن چھوٹا لاہور کے قیام کا کام مکمل کرنے ، مردان میں ٹرانسفارمرز کی مرمت کیلئے ورکشاپ کا مسئلہ جلد حل کرنے اور کنڈ پارک کی فزبیلٹی سٹڈی تیز رفتاری سے مکمل کرنے کی ہدایت کی ہے ۔ اُنہوںنے سپورٹس کمپلیکس تخت بھائی اور تخت بھائی بائی پاس کیلئے زمین کا مسئلہ ترجیحی بنیادوں پر حل کرنے کی ہدایت کی ہے ۔ قبل ازیں شرکاءکو گزشتہ اجلاس میں کئے گئے فیصلوں پر عمل درآمد سے متعلق بریفنگ دیتے ہوئے بتایا گیا کہ سابقہ اجلاس میں کل 45 فیصلے کئے گئے تھے جن میں سے 15 فیصلوں پر عمل درآمد کیا جا چکا ہے ، 27 فیصلوں پر عمل درآمد کی رفتار ٹائم لائنز کے مطابق ہے جبکہ صرف تین فیصلے تکنیکی مسائل کی وجہ سے سست روی کا شکار ہیں۔ اجلاس کو آگاہ کیا گیا کہ چارسدہ ، مردان اور صوابی کی صحت سہولیات اور کالجوں میں مطلوبہ عملے کی فراہمی کیلئے بھرتیاں عمل میں لائی جا چکی ہیںجبکہ پی کے۔53 اور54 کے باقی ماندہ علاقوں تک گیس پائپ لائن کی توسیع کیلئے ایس این جی پی ایل کو این او سی جاری کر دیا گیا ہے ۔ اسی طرح بیزئی ایریگشن سکیم کیلئے واٹر کورسز کی ڈویلپمنٹ کیلئے پی ڈی ڈبلیو پی کی طرف سے پی سی ٹو منظور کرلیا گیا ہے منصوبے کیلئے 9 کمپنیوں نے بڈنگ ڈاکو مینٹس جمع کرائے ہیں جن کی شارٹ لسٹنگ جلد مکمل کرلی جائے گی ۔ اجلاس کو آگاہ کیا گیا کہ نہروں پر تجاوزات کے حوالے سے تفصیلی رپورٹ ضلعی انتظامیہ کے ساتھ شیئر کی جا چکی ہے جبکہ20 کلومیٹر طویل غنی خان روڈ سے تخت بھائی تک سڑک کی تعمیر پر کام شروع ہے جوآئندہ سال جون تک مکمل کرلیا جائے گا۔ اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ تخت بھائی اور مردان کے درمیان مجوزہ مقام پر ریسکیو1122 کا ایک نیا سٹیشن قائم کیاجا ئے گا۔ علاوہ ازیں مردان ، صوابی اور چارسدہ میں پرائمری تعلیمی اداروں اور بنیادی مراکز صحت کو مطلوبہ سٹاف کی فراہمی اور دیگر مسائل حل کرنے کیلئے بھی اقدامات جاری ہیں۔ سابقہ اجلاس کے فیصلے کے مطابق مردان ڈویژن میں غیر قانونی ہاﺅسنگ سکیموں کے خلاف کاروائی عمل میں لائی گئی ہے اور ضلعی انتظامیہ مردان کی طرف سے آٹھ غیر قانونی ہاﺅسنگ سوسائٹیز کو سیل کر دیا گیا ہے ۔ دیہی مرکز صحت جھنڈا میں گائنی یونٹ فعال کر دیا گیا ہے ۔ دارلاامانوں اور بحالی کے مراکز کو بہتر سہولیات کی فراہمی کیلئے ایکشن پلان تیار کرلیا گیا ہے ۔

اس خبر پر تبصرہ کریں۔ چترال ایکسپریس اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں

زر الذهاب إلى الأعلى
error: مغذرت: چترال ایکسپریس میں شائع کسی بھی مواد کو کاپی کرنا ممنوع ہے۔