تازہ ترین

صوبائی دارلحکومت پشاورسمیت صوبے کے تمام اضلاع میں 17ستمبرسے انسدادپولیو مہم کا آغاز کیا جارہا ہے

پشاور(چترال ایکسپریس)صوبائی دارلحکومت پشاور سمیت صوبے کے تمام اضلاع میں 17ستمبر بروزہ جمعہ سے انسدادپولیو مہم کا آغاز کیا جارہا ہے جس میں 5سال سے کم عمر کے 62لاکھ سے زائد بچوں کو پولیو سے بچاؤ کے قطرے پلائے جائیں گے اس بات کا فیصلہ انسدادپولیو کے لئے ایمرجنسی آپریشن سنٹر(ای او سی) صوبہ خیبرپختونخوا کے کوآرڈینیٹر عبدالباسط نے ای او سی میں منعقدہ ایک اہم اجلاس سے خطاب کے دوران کیا جس میں صوبائی محکمہ صحت،ای پی آئی کے اعلیٰ حکام، عالمی ادارہ اطفال (یونیسیف)،ڈبلیو ایچ او، بی ایم جی ایف اور دیگر معاو؎؎؎؎؎ن اداروں کے نمائندوں نے شرکت کی انسدادپولیو مہم کورونا وباء کے باعث تمام تر ایس او پیز کے ساتھ چلائی جائے گی تاکہ کورونا کیسز میں اضافہ نہ ہو۔کوآرڈینیٹر عبدالباسط کا کہنا تھا کہ موثر مہمات کی وجہ سے پچھلے ایک سال سے صوبہ بھر سے کوئی بھی پولیو کیس رپورٹ نہیں ہوا جوکہ پولیو ورکرز کی انتھک محنت کا منہ بولتا ثبوت ہے اوراسی تسلسل کو برقرار رکھنے کے لئے پولیو مہمات کو مزید موثر انداز میں چلانا ہوگا ای او سی کوآرڈینیٹر عبدالباسط اپنی ٹیم کے ہمراہ فیلڈ میں موجود رہیں گئے انسدا پولیو مہم کے دوران 5سال سے کم عمر کے 62لاکھ سے زائد بچوں کو پولیو سے بچاؤ کے قطرے پلائے جائیں گیااس مقصد کے لئے تربیت یافتہ پولیو ورکرز پر مشتمل 30ہزار 340ٹیمیں تشکیل دی گئی ہیں ان پولیو ٹیموں میں 27ہزار 253موبائل ٹیمیں،1ہزار857فکسڈٹیمیں،1ہزار78ٹرانزٹ اور 152رومنگ ٹیمیں شامل ہیں جبکہ مہم کی موثر نگرانی کے لئے7ہزار361ایریا انچارجزکی تعیناتی عمل میں لائی گئی ہے جبکہ مہم کے دوران پولیس اور دیگر قانون نافذ کرنے والے اداروں کے تعاون سے سیکورٹی کے خاطر خواہ انتظامات کئے گئے ہیں۔ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے ای او سی کوآرڈینیٹر عبدالباسط نے کہاکہ اس پولیو مہم کے دوران سماجی فاصلہ سمیت کوروناء سے تحفظ کی تمام ایس او پیز پر سختی سے عملدرآمد کو یقینی بنایا جائے گااورسٹاف کو سرجیکل ماسکس، ہینڈ سینیٹائزرز اور انفراریڈ تھرمامیٹرز سمیت ذاتی تحفظ کا سامان (پی پی ایز)فراہم کے گئے ہیں انہوں نے پولیو مہم کی کامیابی کے لئے میڈیا کے بھرپورتعاون کو سراہااور کہا کہ مشکل حالات کے باوجود پولیو مہمات کا انعقاد بچوں کی صحت اور تحفظ کے لئے حکومت، ایمرجنسی آپریشن سنٹر، معاون اداروں اور پولیو ورکرز کے عزم کی عکاسی ہے اس لئے معاشرے کے تمام طبقات بالخصوص والدین بچوں کوپولیو کے ہاتھوں معذوری سے بچانے اور صحت مند معاشرے کی تشکیل کے لئے آگے آکر ان مہمات میں بڑھ چڑھ کر حصہ لیں۔

اس خبر پر تبصرہ کریں۔ چترال ایکسپریس اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں

زر الذهاب إلى الأعلى
error: مغذرت: چترال ایکسپریس میں شائع کسی بھی مواد کو کاپی کرنا ممنوع ہے۔