تازہ ترین

انجمن ترقی کھوار چترال کے زیراہتمام چترال پریس کلب میں گل مرادحسرت کی یادمیں تعزیتی ریفرنس کاانعقاد

چترال(چترال ایکسپریس)مرکزی انجمن ترقی کھوار چترال کے زیراہتمام چترال پریس کلب میں کھوارزبان کے صاحب طرز شاعر،ادیب،افسانہ نگاراورممتازماہرتعلیم سابق ڈسٹرکٹ ایجوکیشن افیسرگل مرادحسرت کی یادمیں تعزیتی ریفرنس کاانعقادکیاگیا۔اس پروگرام کے مہمان خصوصی معروف ماہرتعلیم سابق پرنسپل شیرولی خان اسیر،صدرمحفل سابق ای ڈی او مکرم شاہ ،سابق پروفیسرڈاکٹرعنایت اللہ فیضی ،محمدعرفان عرفان،سابق ڈائریکٹرانفارمیشن یوسف شہزاد،لیاقت علی خان،ظفراللہ پرواز،سابق پروفیسرممتازحسین ،انجمن ترقی کھوارکے مرکزی صدرشہزادہ تنویرالملک ،جنرل سیکرٹری پروفیسرظہورالحق دانش،پرنسپل سلیم کامل،جان بہادرجانی اوردوسروں نےگل مراد حسرت مرحوم کی حالات زندگی پرروشنی ڈالتے ہوئے کہاکہ تعلیمی میدان میں گل مراد حسرت کی خدمات ہمیشہ یادرکھی جائے گی اورکھوار ادب کے لئےبے مثال خدمات پر انہیں خراج عقیدت پیش کی ۔مقررین نے کہاکہ مرحوم گل مرادحسرت کا تعلق تحصیل مستوج کے نواحی گاوں پرکوسپ سے تھا۔ اپنے زندگی کاآغازدرس تدریس سے کیاوہ خاندان کاچشم چراغ تھا اُن کے والدمحترم بھی اُسی زمانے میں سکول استاد تھےاورگل مراد حسر ت محکمہ تعلیم سے بطور ڈی ای او ملازمت سے سبکدوش ہوئے۔ وہ محکمہِ تعلیم چترال اور دیر میں خدمات سرانجام دے چکے تھے۔ مرحوم کو کھو تہذیب و ثقافت، ادب اور تاریخ پر دسترس حاصل تھا ۔اورکئی موضوعات پراُن کے تحریری نسخے موجودہے جن کی کتابی شکل دینے کی ضرورت ہے۔ اس موقع پرشیرولی خان اسیرنے ایک مسوادے کی چھپائی کے اخراجات برداشت کرنے کااعلان کیا ۔انہوں نے کہا کہ وہ ایک علم دوست شخصیت تھے جنہیں چترال کی تاریخ اور ثقافت پر عبور حاصل تھا۔انہوں نے کہاکہ ان دنوں داغستانی ادیب حمزہ رسول توف کی مشہورِ زمانہ کتاب “میرا داغستان” کے ترجمہ کررہے تھے مگرشایدتکمیل کے مرحلے میں ہوں گے۔اس تعزیتی پروگرام میں مرحوم گل مراد حسرت کے بھائی ،بھتیجےکے علاوہ کثیرتعداد میں علمی و ادبی شخصیات نے شرکت کی اجلاس میں مرحوم کے درجات کی بلندی کے لئے فاتحہ خوانی کی گئی

اس خبر پر تبصرہ کریں۔ چترال ایکسپریس اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں

زر الذهاب إلى الأعلى
error: مغذرت: چترال ایکسپریس میں شائع کسی بھی مواد کو کاپی کرنا ممنوع ہے۔