تازہ ترین

صوبائی حکومت نے آئمہ مساجد کو ماہانہ وظائف کی ادائیگی شروع کرکے اپنا ایک اور وعدہ پورا کرلیا ہے،وزیراعلیٰ محمود خان

صوبائی حکومت نے خطیبوں کی ماہانہ تنخواہیں پانچ ہزار روپے سے بڑھا کر 21 ہزار روپے کردی ہے

پشاور(چترال ایکسپریس)وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا محمود خان نے کہا ہے کہ صوبائی حکومت نے آئمہ مساجد کو ماہانہ وظائف کی ادائیگی شروع کرکے اپنا ایک اور وعدہ پورا کرلیا ہے ، اس پروگرام کے تحت 16 ہزار آئمہ مساجد اور 500 سے زائد اقلیتی مذہبی پیشواو¿ں کو ماہانہ دس ہزار روپے وظائف دئیے جائیں گے۔ اسی طرح صوبائی حکومت نے خطیبوں کی ماہانہ تنخواہیں پانچ ہزار روپے سے بڑھا کر 21 ہزار روپے کردی ہےں اور موجودہ حکومت وزیراعظم عمران خان کی دانشمندانہ قیادت میں عوام سے کئے ہوئے اپنے تمام وعدے ایک ایک کرکے پوری کررہی ہے۔
وہ منگل کے روز احساس راشن رعایت پروگرام کی رجسٹریشن کے حوالے سے منعقدہ ایک تقریب سے خطاب کر رہے تھے جس کے مہمان خصوصی وزیراعظم پاکستان عمران خان تھے۔ گورنر خیبرپختونخوا شاہ فرمان، وفاقی وزیرچوہدری فواد حسین اور وزیراعظم کے معاون خصوصی ثانیہ نشتر کے علاوہ اراکین صوبائی کابینہ اور ممبران قومی و صوبائی اسمبلی کی کثیر تعداد نے تقریب میں شرکت کی۔
اپنے خطاب میں وزیراعلیٰ نے احساس راشن رعایت پروگرام کو اسلامی فلاحی ریاست کے قیام کی طرف ایک اور اہم سنگ میل قرار دیتے ہوئے کہا کہ اس پروگرام کے تحت 2 کروڑ خاندانوں کو بنیادی اشیائے خوردونوش کی خریداری پر رعایت دی جائے گی۔ انہوں نے منتخب عوامی نمائندوں اور پارٹی کارکنان پر زور دیا کہ وہ اپنے اپنے علاقوں میں اس پروگرام اور اس کی رجسٹریشن کے طریقہ کار سے متعلق لوگوں کو آگہی دینے میں بھر پور کردار ادا کریں تاکہ کوئی بھی مستحق خاندان اس سہولت سے محروم نہ رہ جائے۔ انہوں نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان کی قیادت میں گزشتہ دور حکومت میں خیبرپختونخوا میں لوگوں کو علاج معالجے کی مفت سہولیات کی فراہمی کے لئے محدود پیمانے پر صحت انصاف کارڈ اسکیم شروع کیا گیا تھا ۔ وہ پروگرام آج صوبے کے تمام لوگوں کو دستیاب ہے اور صوبے کاہر خاندان کسی بھی منتخب ہسپتال سے سالانہ دس لاکھ روپے تک کا مفت علاج کراسکتا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ عمران خان نے خیبرپختونخوا سے جس تبدیلی کا آغاز کیا تھا وہ تبدیلی پنجاب سمیت پورے ملک میں پھیل رہی ہے اور اب پنجاب ، بلوچستان اور دیگر علاقوں میں صحت کارڈ کا اجراءکیا جارہا ہے۔ صحت کارڈ کے علاوہ راشن کارڈ، کسان کارڈ، کم آمدن والے لوگوں کے لئے ہاو¿سنگ اسکیم، آئمہ مساجد کے لئے وظائف، رحمتہ اللعالمین سکالر شپ جیسے اقدامات غریب عوام کو زیادہ سے زیادہ ریلیف دینے کے لئے موجودہ حکومت کے بے مثال فلاحی اقدامات ہیں۔ محمود خان کا کہنا تھا کہ وزیراعظم عمران خان کی ہمیشہ سے یہ ہدایت رہتی ہے کہ ہر وقت غریب آدمی کا سوچا جائے کیونکہ انہیں ہمیشہ غریب عوام کی فکر رہتی ہے اور جو لیڈر ہر وقت غریب کا سوچتا ہو وہ ان پر کسی صورت بوجھ نہیں ڈال سکتا۔

اس خبر پر تبصرہ کریں۔ چترال ایکسپریس اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں

زر الذهاب إلى الأعلى
error: مغذرت: چترال ایکسپریس میں شائع کسی بھی مواد کو کاپی کرنا ممنوع ہے۔