جماعت اسلامی اور انتظامیہ چترال کے زیر انتظام یوم یکجہتی کشمیر ریلی اورجلسے کا انعقاد

چترال ( محکم الدین ) جماعت اسلامی اور انتظامیہ چترال کے زیر انتظام یوم یکجہتی کشمیر ریلی نکالی گئی ۔ اور اتالیق پل پر جلسہ منعقد کیا گیا ۔ اس موقع پر جماعت اسلامی چترال کے قائدین اخونزادہ رحمت اللہ ، مولانا جمشید احمد ، وجیہ الدین ، رحمت الہی وغیرہ نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ کشمیریوں پر ظلم و استبداد کے پہاڑتوڑے جا رہے ہیں ۔ لیکن افسوس کا مقام ہے کہ پاکستان سمیت عالم اسلام خواب خر گوش میں ہے۔ انہوں نے کہا  کہ یہ صرف جماعت اسلامی کا نہیں ، پوری امت مسلمہ کا مسئلہ ہے۔ انہوں نے کہا ۔ کہ پاکستان کی حکومت اور مقتدر ادارے نہیں چاہتے ۔ کہ کشمیریوں کا مسئلہ حل ہو ۔ اوریہ تنازعہ اسی چلتا رہے ۔ تاکہ چولہا جلتا رہے ۔ انہوں نے کہا ۔ کہ پاکستان میں اسلامی قیادت ہی کشمیر کا مسئلہ حل کر سکتی ہے۔ اس لئے مسلمانوں کو ملک میں اسلامی قیادت کا ساتھ دینا چاہئے ۔ انہوں نے کہا ۔ افسوس سے کہنا پڑتا ہے ۔ کہ مسلمان کفار سے دوستی کرنےمیں پیش پیش ہے۔ ایسےمیں کشمیر کے مسلمانوں کا مسئلہ کیسے ہو سکتا ہے ۔ حالانکہ اللہ نے مسلمانوں کو کافروں کیلئے سخت اور خود مسلمانوں کیلئے نرم ومحبت کی تعلیم دی ہے ۔ انہوں نے کہا ۔ کہ یہ کیسی مدینہ کی ریاست کے حکمران ہیں ۔ کہ کشمیری شہید ہو رہے ہیں ۔ ان کے کانوں جوں تک نہیں رینگتی ۔ انہوں نے کہا ۔ کہ کشمیر کی آزادی صرف جہاد سے ہی ممکن ہے ۔ جب تک مسلمان جان کی قربانی کیلئےتیار نہیں ہوں گے ۔ کشمیر کے مظلوموں کو آزادی نہیں مل سکتی ۔ اس موقع پر کشمیریوں کے حق میں قرارداد منظورکی گئی ۔ جس میں کشمیر پر بھارت کے غاصبانہ تسلط کی شدید الفاظ میں مذمت کی گئی ۔ اور بھارت کی طرف سے آرٹیکل 370 میں ترمیم کرکے کشمیر پر قبضہ کو عالمی سطح پر ناجائز اقدام قرار دیا گیا ۔ قرار داد میں اس عزم کا اظہار کیا گیا ۔ کہ جماعت اسلامی بھارت کے اس ظلم و استبداد کے خلاف ہمیشہ کشمیریوں کی ہرممکن مدد کرتی رہے گی ۔

 

 

اس خبر پر تبصرہ کریں۔ چترال ایکسپریس اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں
زر الذهاب إلى الأعلى
error: مغذرت: چترال ایکسپریس میں شائع کسی بھی مواد کو کاپی کرنا ممنوع ہے۔