چترال،بلدیاتی الیکشن فیز ٹو پر حکومتی وزرا ء کی اثر انداز ہونے کی کوشش کے سنگین نتائج نکلیں گے۔پی پی پی قائدین کی پریس کانفرنس

چترال (نمائندہ آئین ) پاکستان پیپلز پارٹی چترال کے قائدین نے حکومت کو خبردار کیا ہے ۔ کہ بلدیاتی الیکشن فیز ٹو پر اگر حکومتی وزرا ء نے اثر انداز ہونے کی کوشش کی تو اس کے سنگین نتائج نکلیں گےاور حالات کےخراب ہونے کی تمام تر ذمہ داری پاکستان تحریک انصاف کی حکومت ، وزرا ء الیکشن کمیشن اور ضلعی انتظامیہ پر ہوگی ۔چترال پریس کلب میں جمعہ کے روز ایک پر ہجوم پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے پاکستان پیلپز پارٹی کے رہنماوں سابق صوبائی وزیر سلیم خان ، سابق ایم پی اے سردار حسین ، ، صدر لوئر چترال فضل ربی جان ، صدر اپر چترال امیراللہ ، امیدوار تحصیل نظامت لوئر چترال قاضی فیصل سعید ، ایڈوکیٹ عالم زیب خان اور نظار ولی شاہ نے کہا کہ بلدیاتی الیکشن فیز ٹو کو حکومت ہائی جیک کر رہاہے۔تمام حکومتی مشینری وزرا ایم این اے اور ایم پی اے الیکشن پر اثر انداز ہو رہے ہیں اب بھی حکومتی پارٹی کے منسٹر ، ایم این اے اور ایم پی اے مختلف مقامات پر جاکر لوگوں کیلئے ترقیاتی منصوبوں کا اعلان کر رہے ہیں ۔ اور انہیں بلیک میل کرنے کی کوشش کر رہے ہیں جو کہ سراسر الیکشن رولز کی خلاف ورزی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کی طرف سے وزراء کو انتخابی مہم میں حصہ لینے کی اجازت دینے کے حوالے سے صدارتی آرڈیننس انتہائی طور پر قابل مذمت ہے جسے ہم مسترد کرتے ہیں یہ آرڈیننس حکومتی طاقت سے نتائج اپنے حق میں کرنے کی مذموم کوشش ہے ۔ سلیم خان نےکہا کہ گذشتہ چار سالوں میں بار بار مطالبات کے باوجود حکومت کی طرف سے کوئی قابل ذکر کام نہیں ہوئے ۔ اب الیکشن کے موقع پر مختلف ترقیاتی منصوبوں کے اعلانات عوام کو بیوقوف بنانے کی کوشش ہے لیکن عوام اتنے ناسمجھ نہیں ہیں کہ پاکستان کو تباہی کے دھانے تک پہنچانے اور غریبوں کے منہ سے نوالہ چھیننے والی حکومت کے بلدیاتی امیدواروں کے حق میں اپناووٹ استعمال کرکے ملک کو مزید تباہ کرنے کا راستہ ہموار کریں ۔ سابق ایم پی اے سردار حسین نے اس بات پر انتہائی افسوس کا اظہار کیا کہ احساس پروگرام کی جھوٹی لالچ دی جارہی ہے بعض ترقیاتی منصوبوں کے ٹینڈر اب طلب کئے جارہے ہیں اور انتخابی ماحول کو دانستہ طور پر خراب کیا جارہا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ضلعی انتظامیہ اورپولیس غیر جانبدار الیکشن کو ممکن بنائیں ۔ اگر ایسا نہ ہوا تو حالات خراب ہو سکتے ہیں ۔ صدر پاکستان پیپلز پارٹی چترال فضل ربی جان نے کہا کہ بار بار عوامی مطالبات کے باوجود گذشتہ سات سالوں سےپاکستان تحریک انصاف کی حکومت کو ریشن بجلی گھر کی بحالی کی توفیق نہیں ہوئی اب الیکشن سر پر آنے پر ریشن بجلی گھر پرکام کیا جارہا ہے ۔ اسی طرح شندور روڈ پر زمین مالکان کو دینے کیلئے فنڈ موجود نہیں ۔ سٹیٹ پراپرٹی پر کام شروع کرنا بھی سیاسی پوائنٹ سکورنگ کے سوا کچھ نہیں ۔ امیدوار تحصیل کونسل چترال قاضی فیصل احمد سعید نے کہا کہ معاون خصوصی وزیر اعلی وزیرزادہ ڈیڈیک کی گاڑی انتخابی مہم کیلئے استعمال کر رہے ہیں اور مختلف مقامات پر تازہ اعلانات کرکے پی ٹی آئی امیدواروں کے لئے ووٹ مانگ رہے ہیں جو کہ خلاف قانون ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ہم نے تمام حالات پر نظر رکھا ہوا ہے ۔ آئیندہ اس قسم کی انتخابی مہم میں حکومتی مشینری دیکھی گئی۔ تو الیکشن کمیشن کو شواہد فراہم کرکے کاروائی کا مطالبہ کریں گے ۔

اس خبر پر تبصرہ کریں۔ چترال ایکسپریس اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں
زر الذهاب إلى الأعلى
error: مغذرت: چترال ایکسپریس میں شائع کسی بھی مواد کو کاپی کرنا ممنوع ہے۔