یونیورسٹی آف چترال میں شجرکاری کا دن منایا گیا

چترال(چترال ایکسپریس)یونیورسٹی آف چترال میں شجرکاری کا دن منایا گیا۔جس کا موضوع تھا”آئیں فطرت کی پرورش کریں تاکہ ہم ایک بہتر مستقبل حاصل کرسکیں“ اس سلسلے میں ORICڈائریکٹریٹ کے زیر نگرانی شعبہ نباتیات کے زیر اہتمام ایک پروگرام کا انعقاد یونیورسٹی آف چترال کے مین ہال میں کیا گیا۔پروگرام کا آغاز تلاوت پاک سے ہوا اسٹیج کی نظامت شعبہ نباتیات کے لیکچرر حفظ اللہ نے کی۔ایڈیشنل ڈائریکٹر ایڈمنسٹریشن ڈاکٹر ندیم حسن نے مہمانوں کا استقبال کیا۔پروگرام کے مہمان خصوصی ڈپٹی کمشنرچترال لوئر محمدانوارالحق اور مہمان اعزازی وائس چانسلر یونیورسٹی آف چترال پروفیسر ڈاکٹر ظاہرشاہ تھے۔
تقریب میں دیگر مہمانان ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر چترال لوئر حیات شاہ،ڈسٹرکٹ فارسٹ افیسر سردار علی فرہاد،ڈسٹرکٹ افیسر سوائل اینڈ واٹر کنزرویشن امین الحق،ڈائریکٹر ایگریکلچر ریسرچ ڈاکٹر محمدنصیر،ڈسٹرکٹ ڈائریکٹر زراعت توسیع محمدنعیم،ریذیذنٹ انجینئر واپڈا گولین پاؤر ہاؤس ایم حیدر شاہ،تحصیل میونسپل آفیسر چترال مصباح الدین،ریذیذنٹ انجینئرچترال لوئر عثمان جدون،فیکلٹی ممبران وانتظامیہ عملہ یونیورسٹی آف چترال بھی موجودتھے۔
وائس چانسلر یونیورسٹی آف چترال نے مختصر تاریخ اور یونیورسٹی آف چترال کو نئے قائم ہونے کی حیثیت سے درپیش مسائل پرروشنی ڈالی اور درخت لگانے کی اہمیت اور فطرت کے تحفظ میں ان کے کردار پربھی بات کی۔
پروگرام کے مہمان خصوصی ڈی سی انوارالحق نے کہا کہ پاکستان کو گلوبل وارمنگ کے بدترین بحران کا سامنا ہے گلوبل وارمنگ کے اثرات کو کم کرنے کا واحد حل جنگلات کی کٹائی کو روکنا اور زیادہ درخت لگانا ہے۔پرووسٹ یونیورسٹی آف چترال پروفیسر تاج الدین شرر نے مہمانوں کی شرکت اور قیمتی وقت کا شکریہ ادا کیا۔پروگرام کے اختتام پر یونیورسٹی آف چترال کے طلباء اور سٹاف میں پودے تقسیم کئے گئے۔

اس خبر پر تبصرہ کریں۔ چترال ایکسپریس اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں
زر الذهاب إلى الأعلى
error: مغذرت: چترال ایکسپریس میں شائع کسی بھی مواد کو کاپی کرنا ممنوع ہے۔