ضلعی انتظامیہ اور ایم پی اے کی طرف سے جغور موچیان کے راستے کو فرد واحد کو فائدہ پہنچانے کی کوشش ناکام بنادینگے۔عمائیدین علاقہ کی پریس کانفرنس

چترال ( محکم الدین ) چترال شہر کے مقام جغور سے تعلق رکھنے والے کسان کونسلر اختر حسین ، وسیع الدین ، بادشاہ ، حکیم اللہ ، ظہور احمد ، ذکریا وغیرہ نے چترال پریس کلب میں ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے ایم پی اے چترال مولانا ہدایت الرحمن، ڈپٹی کمشنر چترال انوار الحق ، سابق ضلع ناظم مغفرت شاہ اور ٹی ایم او چترال کو خبر دار کیا ہے ۔ کہ ان کی ذاتی زمینات کو طاقت کے زور پر سڑک بنانے کی کوشش کی گئی ۔ تو سنگین اور کشیدہ حالات کی تمام تر ذمہ داری ان پر عائد ہوگی ۔  انہوں نے کہا کہ اس سڑک سے متعلق پہلے ہی ایک مقدمہ چترال کی عدالت میں زیر سماعت ہے  اور عدالت نے مقدمہ ان کے حق میں فیصلہ دیا ہے۔ جس پر مذکورہ فریقوں نے فیصلے کے خلاف اگلے کورٹ میں اپیل کی ہے ۔ ایسے حالات میں ایم پی اے ، ٹی ایم اے اور سابق ضلع ناظم مغفرت شاہ کی طرف سے بزور طاقت سڑک کی تعمیر ہم پر ظلم و ز یادتی اور واضح طور پر توہین عدالت کے مترادف ہے ۔انہوں نے کہا ٹی ایم اے اگر اس سڑک کی تعمیر میں اتنی دلچسپی لے رہی ہے ۔ تو سڑک کی زد میں آنے والےہماری زمینات کا صحیح معاوضہ ادا کرے ۔ صرف ڈرا دھمکا کر زمین پر قبضہ کرنے کی کوشش کسی صورت قبول نہیں کیا جائے گا ۔ انہوں نے کہا کہ ایک فرد کیلئے ایم پی اے ، ٹی ایم اے اور ضلعی انتظامہ ہمیں ہراسان کر رہاہے ا ور ہماری عرضداشت سننے کیلئے تیار نہیں ۔مگر وہ اپنے مقصد میں کامیاب نہیں ہو ں گے ۔ انہوں نے کہا کہ جغور کے لوگوں کے لئے وادی کے اندر آباد گجر برادری ، گھوڑے ، گدھوں اور مال مویشیوں کی آمدورفت کیلئے راستہ پہلے سے موجود ہے ۔ان کی راہ میں کوئی رکوٹ نہیں ہے۔ اب اگرکوئی ذاتی مقاصد کیلئے روڈ چاہتا ہے تو یہ ممکن نہیں ہے ۔ اگر سرکار کو راستہ کی ضرورت ہے  تو مالکان اراضی کو مارکیٹ ریٹ کے مطابق آدائیگی کرکے سڑک تعمیر کی جائے ۔ بصورت دیگر ہم اپنی چادر اور چاردیواری کے تقدس کیلئے قدم اٹھانے پر مجبور ہوں گے۔ اور خدا نخواستہ ناخوشگوار حالات پیدا ہوئے ۔ تو اس کی تمام تر ذمہ داری مذکورہ اداروں کے آفیسران اور افراد پر ہوگی ۔

اس خبر پر تبصرہ کریں۔ چترال ایکسپریس اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں
زر الذهاب إلى الأعلى
error: مغذرت: چترال ایکسپریس میں شائع کسی بھی مواد کو کاپی کرنا ممنوع ہے۔